پوچھ گچھ ہوئی تو دوں گا سی بی آئی کو جواب: اکھلیش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 6th January 2019, 6:53 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ،06 جنوری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) سماج وادی پارٹی (ایس پی) صدر اور اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو نے اپنے دوراقتدار میں ہوئے مبینہ غیر قانونی کانکنی معاملے پر سی بی آئی کی کارروائی کے بعد خود سے پوچھ گچھ کا خدشہ کے بارے میں اتوار کو کہا کہ وہ سی بی آئی کو جواب دینے کے لیے تیار ہیں، مگر بی جے پی یہ یاد رکھے کہ وہ جس ثقافت کو چھوڑ کر جا رہی ہے، کل اسے بھی اس کا سامنا کرنا پڑے گا۔

اکھلیش نے خود پر سی بی آئی جانچ کی آنچ ہونے کے خدشہ کے سوال پر کہاکہ ایس پی اس کوشش میں ہے کہ زیادہ سے زیادہ لوک سبھا سیٹیں جیتے۔جو ہمیں روکنا چاہتے ہیں، ان کے پاس سی بی آئی ہے۔ایک بار کانگریس نے سی بی آئی جانچ کرائی تھی، تب بھی پوچھ گچھ ہوئی تھی۔اگر بی جے پی یہ سب کرا رہی ہے اور سی بی آئی کی پوچھ گچھ کرے گی تو ہم جواب دیں گے۔مگر عوام بی جے پی کو جواب دینے کے لیے تیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ آخر سی بی آئی چھاپہ ماری کیوں کر رہی ہے۔جو پوچھنا ہے ہم سے پوچھ لے، لیکن بی جے پی کے لوگ یہ یاد رکھیں کہ جو دوروہ چھوڑ کر جا رہے ہیں اس کا کل انہیں بھی سامنا کرنا پڑے گا۔اکھلیش نے طنز بھرے لہجے میں کہا کہ اب تو سی بی آئی کو بتانا پڑے گا کہ ہم نے اتحاد میں کتنی کتنی سیٹیں بانٹی ہیں۔مجھے خوشی ہے اس بات کی کہ کم از کم بی جے پی نے اپنا رنگ دکھا دیا۔پہلے کانگریس نے ہمیں سی بی آئی سے ملنے کا موقع دیا تھا۔اس بار بی جے پی یہ موقع دے رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے سیاسی آداب ہی ختم کر دیا۔بی جے پی چاہتی ہے کہ جیسا اس کا سیاسی رویہ ہے، ویسا ہی دوسری پارٹیوں کا بھی ہو جائے۔مگر ہم اپنا سیاسی رویہ نہیں بدلیں گے۔اگر کانگریس چور بول رہا ہے تو بی جے پی چاہتی ہے کہ ہم بھی اسے چور بولیں۔معلوم ہو کہ پیشرو ایس پی حکومت کے دور حکومت میں سال 2012 سے 2016 کے درمیان ریاست میں ہوئے مبینہ کان کنی گھوٹالہ معاملے میں سی بی آئی نے کل لکھنؤ میں آئی اے ایس افسر بی چندکلا کے گھر پر چھاپہ مارا تھا۔سی بی آئی نے بنڈیل کھنڈ میں غیر قانونی کان کنی کے معاملے میں الہ آباد ہائی کورٹ کے حکم پر چندرکلا سمیت 11 افراد پر مقدمہ درج کیا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

بورڈنگ پاس پر مودی کی تصویر پر تنقید کے بعد ایئر انڈیا نے انہیں واپس لیا

ایئر انڈیا نے تنقید کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی اور گجرات کے وزیر اعلی وجے روپانی کی تصاویر والے بورڈنگ پاس واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ایئر لائنز نے پہلے کہا تھا کہ تصاویر والے بورڈنگ پاس تیسری پارٹی کے اشتہارات کے طور پر جاری کئے گئے اور اگر یہ مثالی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ...

دہلی میں خدمات پر کنٹرول کے معاملے پر فیصلے کیلئے وسیع بنچ بنائے عدالت عظمی: آپ حکومت

قومی راجدھانی دہلی میں انتظامی خدمات پر کنٹرول کے معاملے پر جلد فیصلہ لینے کے لیے آپ حکومت نے پیر کو سپریم کورٹ سے ایک وسیع بنچ قائم کرنے کی درخواست کی۔چیف جسٹس رنجن گوگوئی اور جسٹس دیپک گپتا کی بنچ کے سامنے اس معاملے کا ذکر کیا گیا تو بنچ نے آپ حکومت کے وکیل سے کہا کہ اس پر غور ...

عدالت نے منی لانڈرنگ کیس میں گوتم کھیتان اور تین دیگر کو طلب کیا

دہلی کی ایک عدالت نے منی لانڈرنگ کے ایک معاملے میں ای ڈی کی طرف سے چارج شیٹ داخل کئے جانے کے بعد پیر کو وکیل گوتم کھیتان، ان کی بیوی ریتو اور دو کمپنیوں اسمیکس اور ونڈفور کو طلب کیا۔خصوصی جج اروند کمار نے چاروں ملزمان کو چار مئی کو پیش ہونے کے لئے کہا ہے

سبرامنیم سوامی بولے: میں برہمن ہوں، چوکیدار نہیں ہو سکتا

کانگریس کی جانب سے 'چوکیدار چور ہے" کا نعرہ اچھالے جانے کے جواب میں بھارتیہ جنتا پارٹی نے " میں بھی چوکیدار ہوں' کیمپین شروع کیا۔ اس کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی سمیت بی جے پی کے تقریبا سبھی لیڈران نے مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹویٹر پر اپنے نام کے آگے 'چوکیدار' لفظ لگایا لیا۔

سشیل کمارمودی کا شتروگھن سنہا کو مشورہ، انتخابات نہ لڑیں، پولنگ ایجنٹ تک نہیں ملے گا

بی جے پی کے سینئر لیڈر اور بہار کے نائب وزیراعلیٰ سشیل کمارمودی نے پارٹی کے باغی لیڈر شتروگھن سنہاپرکراراحملہ بولاہے۔سشیل مودی نے کہا کہ شتروگھن سنہا کو پٹنہ صاحب لوک سبھا لوک سبھا میں پولنگ ایجنٹ ملنا مشکل ہو جائے گا۔