اُڈپی عدالت میں سزا سنائے جانے سے مشتعل ہوکر عصمت دری کے مجرم نے سرکاری وکیل پر پھینکے جوتے!

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th April 2018, 3:07 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

اڈپی 14؍اپریل (ایس او نیوز)اڈپی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنس کورٹ میں جج اوروکلاء کو سکتے میں ڈالنے والا ایسا واقعہ پیش آیا جس کی مثال اس سے پہلے کبھی یہاں نہیں دیکھی گئی تھی، جس میں مجرم نے سزا سنائے جانے سے مشتعل ہوکر اپنے جوتے سرکاری وکیل پر پھینک دئے۔

موصولہ اطلاع  کے مطابق عصمت دری کے ملزم پرشانت (۲۵سال) کا جرم ثابت ہونے پر پوکسو ایکٹ کے تحت اسپیشل پوکسو ایکٹ کے جج ٹی وینکٹیش نے اسے 20سال کی قید اور 25ہزار روپے جرمانے کی سزا سنائی ۔ اس سے مشتعل ہوکر پرشانت نے پہلے سرکاری وکیل وجئے واسو پجاری کو گالیاں بکنی شروع کیں کہ اس کی جرح اور بحث کی وجہ سے جج نے اتنی سخت سزا سنائی ہے اور پھر اس نے اپنے پیر وں سے جوتے نکالے اورمارنے کی نیت سے سرکاری وکیل کی طرف پھینکے۔اور بھری عدالت میں ہی اس نے سرکاری وکیل کو’ زندہ نہ چھوڑنے‘ کی دھمکی بھی دے ڈالی۔

برہماور کے آرور گاوں میں رہنے والے پرشانت پر الزام تھا کہ فروری 2017کوکوٹیشورکی ایک 15سالہ لڑکی کو وہ بہلاپھسلاکر اپنے رشتے دار کے گھر لے گیا اور وہاں اس کی عصمت دری کی ۔جس کے بعد کنداپور پولیس اسٹیشن میں کیس درج ہوا۔اس وقت کے کنداپور سرکل انسپکٹر پی ایم دیواکر نے ملزم کے خلاف چارج شیٹ داخل کی تھی۔پرشانت کوعصمت دری کے اس کیس میں سخت سزا ہوئی تو وہ اپنے آپ پر قابو نہیں رکھ سکااور سرکاری وکیل پر حملہ کربیٹھا۔ پرشانت کے بارے میں معلوم ہواہے کہ برہماور پولیس اسٹیشن کے حدود میں وہ قتل کے ایک معاملے میں بھی ملزم ہے ۔اس کے علاوہ اس کے خلاف دیگر بہت سارے معاملات بھی عدالت میں زیر سماعت ہیں۔

سرکاری وکیل وجئے واسو پجاری نے جج کے سامنے بھری عدالت میں سزایافتہ مجرم کی طرف سے اپنے اوپرہونے والے حملے کو عدلیہ پر حملے کے مترادف بتایا اور کہا کہ متاثرہ افراد کو انصاف دلانے کا کام ان کی ذمہ داری ہے اور وہ اسے انجام دیتے رہیں گے۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ لکشمن نمبرگی نے بتایا کہ سرکاری وکیل نے اڈپی پولیس اسٹیشن میں پرشانت کے خلاف اس حملے کی شکایت درج کروائی ہے۔ عدالت کی اجازت سے پولیس نے سرکاری وکیل پر پھینکے گئے جوتوں کو اپنے قبضے میں لیا ہے اور اس معاملے کی مزید تحقیقات آگے بڑھاتے ہوئے مجرم کو کاروار کی جیل میں بھیج دیا گیا ہے۔ بار ایسو سی ایشن نے بھی اس واقعے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل رکن اسمبلی کی کار روک کر بی جےپی کارکنان نے کی نعرے بازی

پیر کو جب دوحریف سیاسی پارٹیوں کے امیدوار پرچہ نامزدگی داخل کرنےکے دوران کچھ انہونی واقعات پیش آئے ۔ کانگریس امیدوار منکال وئیدیا اے سی دفتر میں پہلے پہنچ کر اپنا پرچہ داخل کرنےمیں مصروف تھے تو اسی وقت بی جے پی امیدوار سنیل نایک بھی اپنےلیڈران کے ساتھ پرچہ داخل کرنے کے لئے ...

بھٹکل بی جےپی میں عدم اطمینانی کا دور : امیدوار کے پرچہ نامزد گی کے دوران اہم اور سنئیر لیڈران غائب

پیر کو بی جے پی امیدوار سنیل نائک جب پرچہ نامزدگی کے لئے ہزاروں حمایتوں کے ساتھ روڈ شو کرتے ہوئے نکلے تو سابق وزیر اور بی جے پی لیڈران شیوانند نائک، سابق رکن اسمبلی جے ڈی نائک، بھٹکل کے ہندو برانڈ لیڈر ،بی جےپی ضلع نائب صدر گوند نائک کا نظر نہیں آنااورپروگرام کے بالکل آخر میں ...

بھٹکل رکن اسمبلی منکال وئیدیا اور بی جے پی امیدوار سنیل نائک دونوں کروڑوں جائیداد کے مالک

ریاست کے مختلف مقامات پر وزراء اور ارکان اسمبلی کی جائیداد میں دوگنا ، تگنا اضافہ ہواہے تو بھٹکل کے رکن اسمبلی منکا ل وئیدیا اپنی ذاتی سواریوں ، ڈامبر پلانٹ، ٹپر ، ہٹاچی وغیرہ کو فروخت کرتے ہوئے اپنی جائیداد میں 57،85410 روپئے کا اضافہ کر لیا ہے۔

اننت کمارہیگڈے کو فون پر ملی جان سے مارنے کی دھمکی۔سرسی پولیس اسٹیشن میں شکایت درج

مرکزی وزیر برائے اسکل ڈیولپمنٹ اننت کمار ہیگڈے کو مبینہ طور پرکسی نے انجان نمبر سے فون کرکے جان سے مارنے کی دھمکی دی ، جس کے تعلق سے اننت کمار کے پرسنل اسسٹنٹ سریش شیٹی نے سرسی ٹاؤن پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروائی ہے۔

بھٹکل میں کانگریس کی طرف سے منکال وئیدیا اوربی جے پی کی طرف سے سنیل نائک نے داخل کیا پرچہ نامزدگی

کرناٹکا ودھان سبھا انتخابات کے لئے پرچہ نامزدگی داخل کرنے کے لئے آخری تاریخ 24/ اپریل ہے اور آج پیر کو دو اہم سیاسی حریف پارٹیوں کے طرف سے پرچہ نامزدگی داخل کی گئی ہے۔ کانگریس کی طرف سے آج منکال وئیدیا نے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا تو بی جے پی کی طرف سے سُنیل نائک نے  سینکڑوں ...

کیا میسورو میں سدارامیا کے خلاف جنتا دل (ایس )نے بی جے پی کے ساتھ ہاتھ ملایا ہے ؟

ایسا لگتا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی اور جنتا دل(ایس)نے میسورو میں صرف چامنڈیشوری سیٹ کے تعلق سے ہی نہیں بلکہ میسورو ضلع کی تمام اسمبلیوں سیٹوں پر وزیراعلیٰ سدارامیا کے خلاف آپس میں گٹھ جوڑ کرلیا ہے۔

کرناٹک انتخابات:بی جے پی نے سات امیدواروں کی چوتھی فہرست جاری کی

کرناٹک انتخابات کے سلسلہ میں بی جے پی کی سنٹرل کمیٹی نے سات امیدواروں کی چوتھی فہرست جاری کی ہے ۔جی آر پراوین پاٹل کو بھدراوتی حلقہ،جگدیش کو یشونت پورحلقہ،للیش ریڈی کو بی ٹی ایم لے آوٹ حلقہ،شریمتی ایچ لیلاوتی کو رامانگرم حلقہ،شریمتی نندنی گوڑا کو کنکاپور حلقہ،ایچ کے سریش کو ...

مواخذہ مسئلہ: کانگریس کو دستورپر سوال اٹھانے کا کوئی اخلاقی حق نہیں :اننت کمار

پارلیمانی امور کے وزیرو بی جے پی کے سینئر لیڈر اننت کمار نے آج کہا ہے کہ کانگریس جس نے ملک میں ایمرجنسی نافذ کی تھی،کو ملک کی دستوری اتھارٹی اورجمہوریت پر سوال اٹھانے کا کوئی اخلاقی حق حاصل نہیں ہے ۔

کرناٹک میں بی جے پی کا الیکشن کمیشن پرجانبداری برتنے کا الزام 

بی جے پی نے انگور کھٹے کی مانند اب یہ الزام لگارہی ہے کہ الیکشن کمیشن ریاست میں کانگریس کی جیت کے لئے کام کررہا ہے۔ کرناٹک میں بی جے پی امور کے انچارج مرلی دھر راؤ نے آج ایک اخباری کانفرنس میں الزام لگایا کہ ریاستی الیکشن کمیشن کانگریس کی ایماء پر متحرک ہے،

امبریش کے معاملے پر تبصرے سے سدرامیا کا انکار

منڈیا اسمبلی حلقے سے کانگریس امیدوار کے طور پر میدان میں اترنے میں سابق وزیر اور اس حلقے کے موجودہ رکن اسمبلی امبریش کے تذبذب پر تبصرہ کرنے سے وزیراعلیٰ سدرامیا نے انکار کردیا ہے۔

کرناٹک لوک آیوکتہ وشواناتھ شٹی خدمات سے رجوع

کرناٹک لوک آیوکتہ وشواناتھ شٹی جن پر 7؍مارچ کو ان کے چیمبر میں حملہ آور کی جانب سے چاقو سے حملہ کرتے ہوئے زخمی کردیا گیا تھا، اسپتال میں علاج کے بعد آج خدمات سے رجوع ہوگئے ۔جستس شٹی کے سینہ ، ہاتھ اور گردن پر چاقو سے حملہ کیا گیا تھا ۔