کورٹ کے فیصلے کے بعد رام مندر کی تعمیر شروع ہوگی : آر ایس ایس جنرل سکریٹری بھیاجی جوشی  کا بیان

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th March 2018, 2:58 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی11 مارچ(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) آر ایس ایس جنرل سکریٹری بھیاجی جوشی نے کہا کہ رام مندر بننا طے ہے، وہاں کچھ اور بن نہیں سکتا لیکن اس کے لیے کوششوں سے گذرنا ہوگا ۔ عدالت کے فیصلے کے بعد مندر کی تعمیر شروع ہو جائے گی ۔ رام مندر پر اتفاق رائے بننا آسان نہیں ، تاہم اس سلسلے میں جو کوشش ہورہی ہے ہم اس کا خیر مقدم کرتے ہیں۔

واضح ہو کہ ہفتہ کو آر ایس ایس کے ملک بھر کے عہدیداروں نے سریش بھیاجی جوشی کو تین سال کی مدت کے لئے دوبارہ سکریٹری جنرل منتخب کیا تھا، یہ ان کی چوتھی مدت ہے ۔سال 2009 سے آر ایس ایس کے جنرل سکریٹری کے عہدے سنبھال رہے جوشی 2021 تک اس عہدے پر رہیں گے۔ وہ ایچ وی شیش دری کے بعد اتنے لمبے مدت کے لئے آر ایس ایس کے سیکریٹری جنرل رہنے والے دوسرے شخص ہیں۔ شیش دری 1987 سے 2000 تک اس عہدے پر رہے تھے۔ سنگھ کے سیکریٹری جنرل اس کے خصوصی عہدید ار ہوتے ہیں جو تنظیم کے روزانہ کے کاموں کی نگرانی کرتے ہیں۔

آر ایس ایس کے پرچارک(مبلغ) منموہن ویدنے ہفتہ کو بتایا تھا کہ سیکریٹری جنرل کا انتخاب  پرامن طریقے سے عمل میں آیا اور بھیا جی جوشی کومزید ایک اور مدت کے لئے دوبارہ اس عہدے کے لیے منتخب کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق سنگھ نے اس اہم وقت میں جب وہ تمام سمتوں میں خود کی توسیع کر رہا ہے، تبدیلی کی جگہ تسلسل کو ترجیح دی۔ جوشی کے علاوہ کرناٹک، آندھرا اور تلنگانہ اورجنوبی وسطی علاقے کے علاقائی تنظیم کو چلانے والے وی ناگراج کو بھی متفقہ طور پر دوبارہ منتخب کیا گیا، یہ ان کی دوسری میعاد ہے۔ واضح ہو کہ اس سے قبل شری روی شنکر نے رام مندر کی تعمیر کے لیے دونوں فریق کو رضامند کرنے کی کوشش کی تھی جس سے ان کی کوششوں پر پانی پھرا ہے ۔ علاوہ ازیں انہوں نے رام مندر کی عدم تعمیر کی صورت میں ملک میں بدترین خانہ جنگی کا انتباہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر رام مندر کی تعمیر نہیں ہوتی ہے تو بھارت شام بن جائے گا ۔ جس کی مخالفت و تردید دونوں طبقوں کے افراد نے کی تھی ۔بھیا جی جوشی کے اس بیان سے ایک بار پھر ان کی کوششوں پربریک لگ گیا ہے ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

جموں و کشمیر میں مودی سرکارکی پالیسی ناکام ہوئی : محبوبہ مفتی

پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) صدر اور سابقہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان میں جموں وکشمیر پولیس کے تین ایس پی اووز کو اغوا کے بعد گولی مار کر ہلاک کرنے کے واقعہ پر اپنا ردعمل میں کہا ہے کہ وادی کشمیر میں مرکزی حکومت کی طاقت پر مبنی پالیسی ناکام ثابت ہوئی ...

کشمیرکے بدترحالات کے لیے مودی سرکارذمہ دار:کانگریس

کانگریس نے کہاہے کہ پچھلے 24گھنٹے کے دوران جموں کشمیر میں تین پولیس جوانوں کے اغواکے بعد قتل اور دہشت گردوں کے خوف سے دس پولیس جوانوں کے مبینہ استعفیٰ کے واقعات تشویش ناک ہیں اور ریاست کے ان حالات کے لیے مودی حکومت ذمہ دارہے۔