راجیہ سبھا انتخابات: ایک سیٹ کے لئے پہلے کبھی نہیں مچا ایسا گھماسان؛ گجرات میں کانگریس کے چھ اراکین بی جے پی کے پالے میں

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 3rd August 2017, 2:07 AM | ملکی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

نئی دہلی 2/اگست (ایس او نیوز/ایجنسی)  گجرات سمیت کئی ریاستوں میں آئندہ 8/ اگست کو راجیہ سبھا انتخابات ہونے ہیں. لیکن گجرات میں راجیہ سبھا کی تین نشستوں کے لئے ہونے والا راجیہ سبھا انتخابات دو چار حریفوں کی وجہ سے بحث کا مرکز بن گیا ہے. بی جے پی نے دو سیٹوں کے لئے قومی صدر امت شاہ اور سمرتی ایرانی کو امیدوار بنایا ہے. جبکہ تیسری نشست کے لئے کانگریس کے باغی سابق ممبر اسمبلی بلونت راجپوت کو میدان میں اتارا ہے.

احمد پٹیل کو شکست دینے کے لئے مچا گھماسان
بلونت راجپوت کا مقابلہ کانگریس کے سینئر لیڈر اور سونیا گاندھی کے سیاسی سیکرٹری احمد پٹیل سے ہونا ہے بتایا جارہا ہے کہ  امت شاہ، احمد  پٹیل کو شکست دینے کے لئے اراکین اسمبلی کو توڑنے سے لے کر تمام ہتھکنڈے اپنا نے میں لگے ہوئے ہیں، اور اس نے کانگریس کے 6 ممبران اسمبلی کو اپنے پالے میں کرنے میں بھی کامیابی حاصل کرلی ہے. بتایا جارہا ہے کہ امت شاہ کسی بھی قیمت پر احمد پٹیل کو ہرانا چاہتے ہیں. جبکہ احمد پٹیل مسلسل چار بار  راجیہ سبھا  سے ممبر آف پارلیمنٹ ہیں.

راجیہ سبھا کی ایک سیٹ کے لئے ضروری ہے 44 ووٹ
اگرچہ تازہ صورتحال کو دیکھتے ہوئے کانگریس کے لئے یہ اعداد و شمار جُٹاپانا  مشکل نظر آرہاہے. کیونکہ کانگریس پارٹی کو چھوڑ چکے رہنما شكرسنگھ  واگھیلا کے حامی سمجھے جانے والے چھ ارکان  اسمبلی اب تک پارٹی چھوڑ کر بی جے پی میں شامل ہو چکے ہیں. اس ایوان میں پارٹی کے رکن کی تعداد کم ہوکر 51 رہ گئی ہے. ان میں سے 44 کو  بنگلور ریسورٹ لے جایا گیا ہے۔. ان میں سے بھی راجیہ سبھا انتخابات کی پولنگ کے وقت تک تمام کانگریس کے  ساتھ رہیں گے اس پر بھی شک کا اظہار کیاجارہا ہے۔

15-15 کروڑ روپے کی لگی بولی
کانگریس ارکان  اسمبلی نے الزام لگایا ہے  کہ بی جے پی ابتدا ء سے ان کو 15-15 کروڑ روپئے  کی پیشکش دے چکی ہے۔  اس راجیہ سبھا انتخابات میں ممبران اسمبلی کی خرید وفروخت  کو لے کر جتنی زور آزمائی کی گئی، اس سے پہلے اس طرح کی خریدوفروخت   کسی حکومت کو اعتماد کے ووٹ کے دوران گرنے والی حکومت کو  بچانے کے لئے   سنی جاتی تھی۔

راجیہ سبھا میں بھی مچا گھمسان
پارلیمنٹ کے ایوان بالا راجیہ سبھا میں بھی اس کو لے کر دو دن سے خوب گھماسان  مچا ہوا ہے. کانگریس نے بی جے پی پر سی بی آئی اور محکمہ انکم ٹیکس کا غلط استعمال کرکے ممبران اسمبلی کو ڈرانے دھمکانے کے الزامات لگائے ہیں. کانگریس نے کہا کہ کرناٹک کے وزیر کے یہاں چھاپے صرف اس وجہ ڈلواے گئے کیونکہ انہوں نے ہمارے ممبران اسمبلی کا خرچ اٹھایا.

ریسورٹ  پر بھی لگا جرمانہ
کانگریس کے 44 ممبران اسمبلی بنگلور کے جس اگلٹن ریسورٹ میں ٹھہرے ہیں اس پر 982 کروڑ روپے کا جرمانہ لگا ہے. ریسورٹ  پر 77 ایکڑ زمین آتی کرم کرنے کو لے کر کرناٹک حکومت کی کابینہ نے اجلاس کے بعد اگلٹن ریسورٹ  کو آتی کرم  کی گئی زمین کو واپس  حوالے کرنے یا پھر 982 کروڑ روپے جرمانے کا حکم دیا تھا. یہ حکم کانگریس کے 42 ممبران اسمبلی کو یہاں ٹھہرنے سے دو دن پہلے ہی لگایا گیا تھا. ان سب واقعات سے ثابت ہوتا ہے کہ صرف ایک سیٹ  کے لئے کی جا رہی جدوجہد سیاسی تعصب سے بھری ہوئی ہے، اول اس طرح کے الزامات  کانگریس امیدوار احمد پٹیل کی طرف  سے امت شاہ پر لگائے گئے ہیں.

وزیر کے یہاں چھاپے ماری
محکمہ انکم ٹیکس کے حکام نے بدھ کو کانگریس کی قیادت والی کرناٹک حکومت کے ایک وزیر، ایک کانگریسی رہنما اور ایک ریسورٹ پر چھاپہ مارا. یہ وہی يگلٹن ریسورٹ ہے، جہاں گجرات کانگریس کے 40 سے زیادہ ممبران اسمبلی کو پارٹی سے الگ ہونے  سے بچانے کے لئے ہائی کمان نے رکھا ہے. راجیہ سبھا انتخابات سے پہلے اور ممبران اسمبلی کے پارٹی چھوڑنے سے احمد پٹیل کا الیکشن جیتنا مشکل ہو سکتا ہے. کانگریس نے اس ایکشن کو انتقامی کارروائی قرار دیا ہے. تاہم، بی جے پی نے کہا ہے کہ اگر يگلٹن ریسورٹ انتظامیہ نے کچھ غلط کام  کیا ہے تو کارروائی کرنے میں  کچھ بھی غلط نہیں ہے.

کرناٹکا کے وزیر توانائی ڈی کے شیو کمار کے39ٹھکانوں پر انکم ٹیکس کے چھاپے پر مینگلور میں کانگریس کارکنوں کا سخت احتجاج؛ انکم ٹیکس دفتر میں توڑ پھوڑ ؛ وڈیو کی زبانی

 

ایک نظر اس پر بھی

جے این یو طالب علم عمر خالد پر فائرنگ کے معاملے میں دو گرفتار

یوم آزادی سے دو دن پہلے راجدھانی کے انتہائی محفوظ علاقے پارلیمنٹ سے چند قدم کے فاصلے پر واقع کانسٹی ٹیوشن کلب آف انڈیا کے باہر سر عام جے این یو کے طالب علم عمر خالد پر جان لیوا حملے کے معاملے میں دہلی پولس کی اسپیشل سیل نے دو لوگوں کو حراست میں لیا ہے ۔

مرحوم حضرت مولانا محمد سالم قاسمی کے کمالات و اوصاف ۔۔۔۔۔۔۔۔ بہ قلم: خورشید عالم داؤد قاسمی

دار العلوم، دیوبند کے بانی امام محمد قاسم نانوتویؒ (1832-1880) کے پڑپوتے، ریاست دکن (حیدرآباد) کی عدالتِ عالیہ کے قاضی اور مفتی اعظم مولانا حافظ محمد احمد صاحبؒ (1862-1928) کے پوتے اور بیسویں صدی میں برّ صغیر کےعالم فرید اور ملت اسلامیہ کی آبرو حکیم الاسلام قاری محمد طیب صاحب قاسمیؒ ...

اردو میڈیم اسکولوں میں نصابی  کتب فراہم نہ ہونے  سے طلبا تعلیم سے محروم ؛ کیا یہ اُردو کو ختم کرنے کی کوشش ہے ؟

اسکولوں اور ہائی اسکولوں کی شروعات ہوکر دو مہینے بیت رہے ہیں، ریاست کرناٹک کے 559سرکاری ، امدادی اور غیر امدادی اردو میڈیم اسکولوں اور ہائی اسکولوں کے لئے کتابیں فراہم نہ  ہونے سے پڑھائی نہیں ہوپارہی ہے۔ طلبا ، اساتذہ اور والدین و سرپرستان تعلیمی صورت حال سے پریشان ہیں۔

بھٹکل کڑوین کٹّا ڈیم کی تہہ میں کیچڑ اور کچرے کا ڈھیر۔گھٹتی جارہی ہے پانی ذخیرہ کی گنجائش

امسال ریاست میں کسی بھی مقام پر برسات کم ہونے کی خبرسنائی نہیں دے رہی ہے۔ عوام کے دلوں کو خوش کرنے والی بات یہ ہے کہ بہت برسوں کے بعد ہر جگی ڈیم پانی سے لبالب ہوگئے ہیں۔لیکن اکثریہ دیکھا جاتا ہے کہ جب برسات کم ہوتی ہے اور پانی کا قحط پڑ جاتا ہے تو حیران اور پریشان ہونے والے لوگ ...

سعودی عربیہ سے واپس لوٹنے والوں کو راحت دلانے کا وعدہ ؛ کیا وزیر اعلیٰ کمارا سوامی کو کسانوں کا وعدہ یاد رہا، اقلیتوں کا وعدہ بھول گئے ؟

انتخابات کے بعد سیاسی پارٹیوں کو اقتدار ملنے کی صورت میں کیے گئے وعدوں کو پورا کرنا بہت اہم ہوتا ہے۔ جنتادل (ایس) کے سکریٹری کمارا سوامی نے بھی مخلوط حکومت میں وزیرا علیٰ کا منصب سنبھالتے ہی کسانوں کا قرضہ معاف کرنے کا انتخابی وعدہ پورا کردیااور عوام کی امیدوں پر پورا اترنے کا ...