کرناٹک میں بارش کی تباہی؛ 3 مہینوں میں 100 سے زائد افراد جاں بحق

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th June 2018, 11:59 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،13جو ن (ایس او  نیوز) کرناٹک میں گزشتہ 3 مہینوں میں جو زبردست بارش ہوئی ہے اس کے نتیجہ میں 100 سے زائدافراد اور 322 جانوروں کی موت واقع ہوئی ہے ۔ ان تباہی پر قابو پانے کیلئے درکار اقدامات نہیں کئے گئے ۔ماہرین کا کہنا ہے کہ ضلعی انتظامیہ کی کوششوں سے ان اموات پر قابو پایا جاسکتا تھا ۔ ریاست کے کسی بھی حصہ میں گرج کے ساتھ بارش ہونے کے متعلق محکمۂ موسمیات کی طرف سے متعلقہ ڈپٹی کمشنروں کو اطلاع مل جاتی ہے لیکن جن علاقوں میں تباہی ہونے کا امکان رہتا ہے ان مقامات کو یہ اطلاع نہیں ملتی جس کے نتیجہ میں بارش کے موسم میں ہر سال جانیں تلف ہونے کی تعداد میں سالہا سال اضافہ ہوتا ہے ۔ گرج اور بجلی گرنے سے جو تباہی ہوتی ہے اس پر قابو پانے کی غرض سے بارش ہونے سے 3 گھنٹے قبل ہی محکمۂ موسمیات کے ریجنل دفتر سے ریاست کے تمام ڈپٹی کمشنروں کو بارش کی تفصیل روانہ کردی جاتی ہے ۔ گزشتہ ایک سال سے ای۔ میل کے ذریعہ یہ اطلاع تمام ڈپٹی کمشنروں کو روانہ کی جارہی ہے لیکن توقع کے مطابق اس کا نتیجہ برآمد نہیں ہورہا ہے ۔ اگر محکمۂ موسمیات کی طرف سے جاری کردہ تفصیلات پر عمل کیا جاتا تو تباہی پر قابو ممکن ہوسکتا تھا ۔ محکمۂ موسمیات کے باوثوق ذرائع سے ملنے والی اطلاع کے مطابق محکمہ کی طرف سے ریکارڈر کے ذریعہ بادل چھانے ، ہواؤں کا رُخ کا پتہ لگاکر گرج اور بجلی گرنے والے علاقوں کی نشاندہی کی جاتی ہے ۔ اس کی تمام تفصیل متعلقہ ڈپٹی کمشنروں کو روانہ کی جاتی ہے ۔ ڈپٹی کمشنروں کی یہ ذمہ داری ہوتی ہے کہ وہ متعلقہ علاقوں کو روانہ کریں ۔ ایسا نہ کرنے کی صورت میں معصوم افراد کی جانیں تلف ہوتی ہیں۔دوسری طرف ڈپٹی کمشنروں نے محکمہ موسمیات کی اس بات پر برہمی کا اظہار کیا ہے ۔ ڈپٹی کمشنروں کا کہنا ہے کہ محکمۂ موسمیات کی طرف سے روانہ کردہ پیغام میں یہ اطلاع نہیں دی جاتی کہ متعلقہ جگہ پر گرج کے ساتھ بجلی گرنے والی ہے ۔ اس کے باوجود آئندہ دنوں میں یہ اطلاع متعلقہ علاقوں کو روانہ کرنے کیلئے مناسب اقدامات کئے جائیں گے ۔ اس کے لئے دیہی سطح پر ماہرین کو تعینات کیا جائے گا ۔ ان کے ذریعہ بارش سے ہونے والی تباہی کے متعلق رپورٹ روانہ کی جائے گی ۔ انہوں نے بتایا کہ بارش کے سبب جنوبی کنڑا ضلع میں سب سے زیادہ لوگوں کی موت واقع ہوئی ہے ۔بلگام کے ڈپٹی کمشنر ضیاء اللہ کے مطابق بارش کے 3 گھنٹے قبل محکمۂ موسمیات سے بارش کے متعلق جو تفصیلات فراہم ہوتی ہے اس سے ندی کے کنارے زندگی بسر کرنے والوں کو ہوشیار کرنے اور انہیں تحفظ فراہم کرنے میں آسانی ہوگی ۔ محکمہ موسمیات کی طرف سے فراہم کی جانے والی تفصیل کو عوام پر پہنچانے کیلئے ہوبلی سطح پر افسران کا تعینات کیاگیا ہے۔ واٹس ایپ گروپ کے ذریعہ بھی پیغام روانہ کیا جارہا ہے ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

آخرکار محمد نلپاڈ کو ضمانت مل گئی عیدالفطر کے موقع پر رکن اسمبلی حارث کو بڑی راحت

ریاست کے ایک نامور صنعت کار کا بیٹا ودوت کے ساتھ مارپیٹ کرنے کے معاملہ میں پچھلے 4؍مہینوں سے جیل کی سزا کاٹ رہے شانتی نگر اسمبلی حلقہ کے رکن اسمبلی این اے حارث کے فرزند محمد نلپاڈ کو کرناٹک ہائی کورٹ نے آخرکار آج مشروط ضمانت دے دی۔ اس معاملہ میں پولیس نے متعلقہ عدالت میں چارج ...

جئے مالاکو کونسل لیڈر نامزد کرنے کے فیصلہ کی سخت مخالفت کانگریس لیڈروں کی دستخطی مہم ۔ خاتون وزیر میں اپوزیشن بی جے پی کا مقابلہ کرنے کی قابلیت نہیں

ریاستی کابینہ کی حالیہ توسیع سے متعلق کانگریس کے ناراض اراکین اسمبلی نے جو سوالات اٹھائے ہیں وہ کانگریس کے سینئر لیڈروں کے لئے سردرد بن گئے ہیں ۔

اُڈپی میں بجرنگ دل کارکنوں کے حملہ میں ہلاک ہونے والے حسین ابّا کی موت کا سبب سر پر لگنے والی چوٹ۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں انکشاف

ہیری اڈکا پولیس اسٹیشن کی حدود میں پیراڈور کے مقام پر مویشیوں کے تاجر حسین ابّا اور اس کے ساتھیوں کی گاڑی روک کر پولیس اور بجرنگ دل کارکنان کی ملی بھگت سے 30مئی کو صبح کی اولین ساعتوں میں جو حملہ ہوا تھا اوراس کے بعد ایک پہاڑی علاقے سے حسین ابا کی لاش برآمد ہوئی تھی اس معاملے کی ...

وزیراعلیٰ کمار سوامی کے یوٹرن سے سیاسی حلقوں میں ہلچل لوک سبھا انتخابات کے بعد کانگریس جے ڈی ایس اتحاد ٹوٹ جائے گا؟ کمار سوامی لوک سبھا انتخابات تک ہی مخلوط حکومت کے وزیراعلیٰ ہوں گے؟

’’اگلے ایک سال تک مجھے کوئی ہاتھ نہیں لگاسکتا۔ اگلے لوک سبھا انتخابات تک میں ہی وزیراعلیٰ ہوں‘‘ وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی کو اچانک اس طرح کا بیان دینے کی نوبت کیوں پیش آگئی ہے۔

کرناٹک کے سرکاری اسکولوں میں بیومیٹرک نظام کا نفاذ عنقریب

کرناٹک کی پرائمری اور ہائی اسکولوں میں اساتذہ کی حاضری کو یقینی بنانے کے لئے محکمۂ تعلیمات نے بیومیٹرک آلہ نصب کرنے کے کام میں تیزی لانا شروع کردیا ہے ۔ محکمہ کو شکایات موصول ہورہی ہیں کہ اساتذہ بچوں کو پڑھانا چھوڑ کر سیاست کی سرگرمیوں میں مصروف ہورہے ہیں ۔

بنگلوروانٹرنیشنل ایرپورٹ میں 1.5 کے جی سونا ضبط

کسٹمز افسران کی آنکھوں میں دھول جھونک کر غیر قانونی طور پر دوبئی سے حیدرآباد لے جارہے تقریباً 1.5کے جی سو نے کے زیورات ضبط کرکے دو افراد کو گرفتار کرلیا ہے ۔ ملزمین پر الزام ہے کہ وہ ہوائی جہاز کے سیٹ کے نیچے سونا چھپائے ہوئے تھے ۔