مودی کی ہندو تواجانکاری پرراہل کا سوال کیا وزیراعظم کی یہ سوچ صحیح ہے کہ ساری معلومات انہی کے ذہن سے آتی ہیں ؟

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 2nd December 2018, 2:11 PM | ملکی خبریں |

جے پور2دسمبر(ایس او نیوز/آئی این ایس اندیا) راجستھان میں کانگریس صدر راہل گاندھی نے کئی انتخابی پروگرام کئے۔اپنی پہلی انتخابی مہم میں راہل گاندھی نے ادے پور میں تاجروں سے خطاب کیا اور مودی حکومت کو نشانہ بنایا۔ سرجیکل اسٹرائیک سے لے کر فوج کے علاقے میں مودی حکومت کی دخل اندازی پر راہل گاندھی نے جم کر ہلہ بولا۔ راہل گاندھی نے وزیر اعظم مودی کی ہندتوکی جانکاری پربھی سوال اٹھائے۔دراصل راہل گاندھی نے ادے پور میں تاجروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوؤں کا کیا مطلب ہے؟ گیتا میں کیا کیا ہے؟ علم ہر جگہ ہے، علم آپ کی طرف ہے،ہر کوئی جس کے پاس جان ہے اس کے پاس علم ہے،ہمارے وزیراعظم کہتے ہیں کہ وہ ہندو ہیں لیکن ہندودھرم کا مطلب نہیں سمجھتے ہیں کہ کس طرح کے ہندوہیں؟۔ وزیر اعظم نریندر مودی پرہلہ بولتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا کہ وزیراعظم کولگتاہے کہ وہ فوجی سیکٹر میں فوج سے زیادہ علم رکھتے ہیں،وزیر خارجہ سے زیادہ وزارت خارجہ کو جانتے ہیں،وہ سوچتے ہیں کہ وہ زراعت کے شعبے کے بارے میں وزیر زراعت سے زیادہ جانتے ہیں،وہ سوچتے ہیں کہ ساری معلومات انہیں کے دماغ سے آتی ہیں۔کانگریس کے صدر راہل گاندھی نے کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی فوج کے کام کے علاقے میں گھسے اور سرجیکل اسٹرائیک کوسیاسی مسئلہ بنادیا، حالانکہ یہ فوج کا فیصلہ تھا۔انہوں نے مزید کہا کہ کیا آپ جانتے ہیں کہ مودی کے سرجیکل اسڑائیک کی طرح منموہن سنگھ نے بھی تین بار سرجیکل اسٹرائیک کیاتھا۔ جب فوج منموہن سنگھ کے پاس آئی اور کہا کہ ہمیں پاکستان کی حرکتوں کاجواب دیناپڑے گا،ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ اسے خفیہ رکھنا پڑے گا۔ملک میں تعلیمی اداروں کی حالت پر راہل گاندھی نے کہا کہ یہ ایک تصوراتی چیز ہے کہ نجی سیکٹر کا تعلیمی ادارہ بہتر ہے،ہم یقین رکھتے ہیں کہ سرکاری اداروں اور صحت کی دیکھ بھال کے بغیر ہم ملک کو نہیں چلا سکتے،ہندستان کا بہترین تعلیمی ادارہ سرکاری ہے۔تاجروں سے کانگریس کے صدر نے کہا کہ اگر10-15سال ہندوستان میں سہی حکومت آئے تو ہم چین کو شکست دیں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ نوجوانوں کے لئے روزگار کی پیداوار کے لحاظ سے پی ایم مودی مکمل طور پر ناکام رہے۔

ایک نظر اس پر بھی

مودی جی کا پرگیہ سنگھ ٹھاکور سے لاتعلقی ظاہر کرنا ایسا ہی ہے جیسے پاکستان کا دہشت گردی سے ۔۔۔۔ دکن ہیرالڈ میں شائع    ایک فکر انگیز مضمون

 وزیر اعظم نریندرا مودی کا کہنا ہے کہ وہ مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کو دیش بھکت قرار دیتے ہوئے ”باپو کی بے عزتی“ کرنے کے معاملے پر پرگیہ ٹھاکورکو”کبھی بھی معاف نہیں کرسکیں گے۔“امیت شاہ کہتے ہیں کہ پرگیہ ٹھاکور نے جو کچھ کہا ہے(اور یونین اسکلس منسٹر اننت کمار ہیگڈے ...

لوک سبھا انتخابات؛ آخری مراحل کے انتخابات جاری؛ 918 اُمیدواروں کی قسمت داو پر؛ ای وی ایم میں خرابی کی شکایتیں؛ بنگال میں دو کاروں پر حملہ

لوک سبھا انتخابات کے ساتویں  اور آخری مرحلہ کے لئے اتوار کی صبح 7 بجے سے ووٹنگ جاری ہے۔جس میں  918 امیدواروں کی قسمت دائو پر لگی ہوئی ہے۔آج جاری انتخابات میں  وزیر اعظم نریندر مودی کا حلقہ انتخاب وارانسی بھی شامل ہے۔ 

دہشت گرد ہر مذہب میں ہیں: کمل ہاسن

تنازعات میں گھرے اداکار لیڈر کمل ہاسن نے جمعہ کو کہا کہ ہر مذہب میں دہشت گرد ہوتے ہیں اور کوئی بھی اپنے مذہب کوبہترین ہونے کا دعویٰ نہیں کر سکتا۔

بی جے پی کو280 سے زیادہ سیٹیں ملیں گی، این ڈی اے کی سیٹیں 300 سے متجاوز ہوں گی: پی مرلیدھر راؤ

بی جے پی لیڈر رام مادھو کے تخمینے کو مسترد کرتے ہوئے پارٹی کے سینئر لیڈر پی مرلیدھر راؤ نے کہا کہ بھگوا پارٹی کو 280 سے زیادہ سیٹیں ملیں گی جبکہ این ڈی اے کے سیٹوں کی تعداد 300 کے پار ہوں گی۔

مالیگاؤں 2008بم دھماکہ معاملہ: اے ٹی ایس کی عدالت سے غیر حاضری کے معاملے میں عدالت کا دخل دینے سے انکار

مالیگاؤں 2008 بم دھماکہ متاثرین جانب سے خصوصی این آئی اے عدالت میں داخل عرضداشت جس میں اس معاملے کی سب سے پہلے تفتیش کرنے والی تفتیشی ایجنسی ATSکی عدالت سے غیرحاضری پر سوال اٹھایا گیا تھا کو عدالت نے یہ کہتے ہوئے خارج کردیا کہ اے ٹی ایس کو پابند کرنا اس کے دائرہ اختیار میں نہیں ہے ...