راہل کا ماہی گیروں سے وعدہ، اقتدار میں آئے تو آپ کیلئے بنائیں گے الگ وزارت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th March 2019, 11:22 PM | ملکی خبریں |

ترشور، 14 مارچ(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)کیرالہ کے ترشور میں ماہی گیروں کے پروگرام میں کانگریس صدر راہل گاندھی نے ماہی گیروں سے بات چیت کی۔اس دوران انہوں نے وزیر اعظم نریندر مودی پر حملہ بولتے ہوئے وعدہ کیا کہ اگر کانگریس حکومت اقتدار میں آئی تو علیحدہ ماہی گیری اور ماہی گیروں کی فلاح و بہبود کے لئے ایک الگ وزارت بنائی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ ماہی گیری کمیونٹی نے سی آرزیڈ نوٹیفکیشن 2019 کو اپنے کمیونٹی کے لئے نقصان دہ قرار دیتے ہوئے اس منسوخ کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔راہل نے مزید کہا کہ ہم یہیں نہیں رکیں گے اور دہلی حکومت میں قومی سطح پر سرکاری نوکری میں 33 فیصد ریزرویشن اور ماہی گیروں کمیونٹی کو آگے بڑھانے کی کوشش بھی کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ملک کے ماہی گیر بہت سی مشکلات کا شکار ہیں، لیکن مودی حکومت اس پر کوئی کارروائی نہیں کر رہی ہے، آپ کی پریشانی تبھی سلجھے گی جب آپ کا کوئی نمائندہ حکومت میں ہوگا،میں آپ سے وعدہ کرتا ہوں، جب مرکز میں کانگریس سرکار بنے گی تو اس سلسلے میں ایک وزارت کا قیام کیاجائے گا،جو ان کی مشکلات کو دور کرنے میں مددکرے گی۔انہوں نے مودی پر طنز کستے ہوئے کہا کہ میں وزیر اعظم مودی کی طرح جھوٹے وعدے نہیں کرتا۔کانگریس صدر راہل نے کہا کہ مودی حکومت میں صنعت کی آواز آسانی سے سنی جاتی ہیں، وہیں غریب کسان، ماہی گیر اور مختلف کمیونٹیز کی آواز حکومت تک نہیں پہنچتی ہے۔انہوں نے وعدہ کیا کہ اگر ہم 2019 میں حکومت میں آئیں گے تو ہر شخص کے لئے کم از کم انکم ضمانت کا بندوبست کریں گے،اس میں ایسے لوگوں کو فائدہ ہوگا جن کی انکم کم از کم انکم سطح سے کم ہوگی،اس خاندان کی حکومت مدد کرے گی۔راہل نے مودی پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ کروڑوں روپے صنعت کاروں کو دے دیا پر مودی حکومت نے کسانوں کا ایک روپیہ معاف نہیں کیا،اگر پی ایم مودی کروڑوں روپے چند صنعت کاروں کو دے سکتے ہیں، لیکن اس رقم کی سب سے زیادہ ضرورت غریب کسانوں کو ہے۔انہوں نے کہاکہ میری تقریر پر غور کریں، جب میں کچھ کہتا ہوں تو صرف اس وجہ سے کہتا ہوں کیونکہ میں نے وہ کرنے کی ٹھان لی ہوتی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

وزیراعظم مودی نے کابینہ سمیت سونپا صدرجمہوریہ کو استعفیٰ، 30 مئی کو دوبارہ حلف لینےکا امکان

لوک سبھا الیکشن کے نتائج کے بعد جمعہ کی شام نریندرمودی نے وزیراعظم عہدہ سے استعفیٰ دے دیا۔ ان کے ساتھ  ہی سبھی وزرا نے بھی صدرجمہوریہ کواپنا استعفیٰ سونپا۔ صدر جمہوریہ نےاستعفیٰ منظورکرتےہوئےسبھی سے نئی حکومت کی تشکیل تک کام کاج سنبھالنےکی اپیل کی، جسے وزیراعظم نےقبول ...

نوجوت سنگھ سدھوکی مشکلوں میں اضافہ، امریندر سنگھ نے کابینہ سے باہرکرنے کے لئے راہل گاندھی سے کیا مطالبہ

لوک سبھا الیکشن میں زبردست شکست کا سامنا کرنے والی کانگریس میں اب اندرونی انتشار کھل کرباہرآنے لگی ہے۔ پہلےسے الزام جھیل رہے نوجوت سنگھ سدھو کی مشکلوں میں اضافہ ہونےلگا ہے۔ اب نوجوت سنگھ کوکابینہ سےہٹانےکی قواعد نے زورپکڑلیا ہے۔

اعظم گڑھ میں ہارنے کے بعد نروہوا نے اکھلیش یادو پر کسا طنز، لکھا، آئے تو مودی ہی

بھوجپوری سپر اسٹار نروہوا (دنیش لال یادو) نے لوک سبھا انتخابات کے دوران سیاست میں ڈبیو کیا تھا،وہ بی جے پی کے ٹکٹ پر یوپی کی ہائی پروفائل سیٹ اعظم گڑھ سے انتخابی میدان میں اترے تھے لیکن اترپردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو کے سامنے نروہا ٹک نہیں پائے۔