اگررافیل پر سچی ہے تو جے پی سی تحقیقات سے ڈر کیوں رہی ہے حکومت: راہل گاندھی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 3rd January 2019, 9:07 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،3 جنوری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)کانگریس صدر راہل گاندھی نے لوک سبھا میں رافیل پر بحث کے دوران کہا کہ اگر یہ حکومت اس ڈیل کے معاملے میں سچی ہے تو کیوں اس پر مشترکہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) کی طرف سے تحقیقات سے ڈر رہی ہے؟

راہل گاندھی نے کہا کہ معاملے کی جے پی سی جانچ ہونی چاہئے کیونکہ سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ رافیل کی جانچ ان کے دائرہ کار میں نہیں ہے اور عدالت نے ڈیل کی جے پی سی جانچ سے انکار نہیں کیا ہے۔راہل نے کہا کہ آج پورا ملک وزیر اعظم نریندر مودی پر انگلی اٹھا رہا ہے۔

انہوں نے کہاکہ سابق وزیر دفاع نے سب کے سامنے بولا کہ رافیل کی فائلیں میرے پاس پڑی ہوئی ہیں۔اس کے علاوہ وزیر اعظم کی جانب سے بھی رافیل کی فائلوں میں دخل دیا گیا ہے، یہ بات وزارت دفاع کی جانب سے کہی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر پرانے عہد نامے کے مطابق رافیل ڈیل ہوتا تو HAL میں ہوائی جہاز بنتے اور لاکھوں نوجوانوں کو روزگار ملتا لیکن وزیر اعظم نے اپنے ایک دوست کے لیے اس ڈیل کو مسترد کردی۔

سپریم کورٹ میں رافیل ڈیل سے منسلک تمام عرضیاں خارج ہونے کے بعد کانگریس سمیت حزب اختلاف کی جماعتوں نے اس سودے کی تحقیقات مشترکہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے کرانے کی مانگ کی تھی۔چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی صدارت والی بنچ نے اپنے فیصلے میں کہا تھا کہ رافیل کی قیمت سے منسلک جانچ اس کے دائرے میں نہیں ہے۔سی جے آئی نے کہاکہ ہم اس سے مطمئن ہیں اور فیصلہ کے عمل پر شک کرنے کا کوئی جواز نہیں ہے۔اس میں مالی فوائد کا کوئی معاملہ نہیں ہے۔رافیل ڈیل پر سپریم کورٹ کا فیصلہ آنے کے بعد کانگریس سمیت اپوزیشن پارٹی اس معاملے کی جانچ جے پی سی سے کرانے کا مطالبہ کرنے لگے۔

کانگریس کے ترجمان رندیپ سرجیوالانے فیصلہ آنے کے بعد کہا تھاکہ کانگریس پارٹی کو کئی ماہ سے کہتی آئی ہے، سپریم کورٹ کے آج کے فیصلے نے اسے صحیح قرار دیا ہے۔راہل گاندھی نے لوک سبھا میں سوال اٹھایا کہ وزیر اعظم نے یو پی اے کی ڈیل کو کیوں بدلا؟ کیا فضائیہ کی جانب سے اس کی مانگ کی گئی تھی؟ انہوں نے کہا کہ ڈیل کی قیمت بڑھ کر تین گنا کیسے ہو گئی؟ ساتھ ہی انہوں نے سوال کیا کہ کیوں HAL کو آف سیٹ پارٹنر نہیں بنایا گیا اور کیوں وزیر اعظم کے دوست کی کمپنی کو ڈیل کا پارٹنر بنایا گیا؟

ایک نظر اس پر بھی

اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کا اُمیدوارکون ؟ راہول گاندھی، مایاوتی یا ممتا بنرجی ؟

آنے والے لوک سبھا انتخابات میں اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کے عہدے کا اُمیدوار کون ہوگا اس سوال کا جواب ہرکوئی تلاش کررہا ہے، ایسے میں سابق وزیر خارجہ اور کانگریس کے سابق سنئیر لیڈر نٹور سنگھ نے بڑا بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ  اس وقت بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) سربراہ مایاوتی ...

مدھیہ پردیش میں 5روپے، 13روپے کی ہوئی قرض معافی، کسانوں نے کہا،اتنی کی تو ہم بیڑی پی جاتے ہیں

مدھیہ پردیش میں جے کسان زراعت منصوبہ کے تحت کسانوں کے قرض معافی کے فارم بھرنے لگے ہیں لیکن کسانوں کو اس فہرست سے لیکن جوفہرست سرکاری دفاترمیں چپکائی جارہی ہے اس سے کسان کافی پریشان ہیں،