بھیوجی مہاراج کی موت پر سوال قائم ،حامیوں کی طرف سے سی بی آئی تفتیش کا مطالبہ 

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 8th December 2018, 12:48 AM | ملکی خبریں |

بھوپال:7/دسمبر (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)مشہور سنت بھیو جی مہاراج کی موت کے معاملے میں نیا موڑ آ گیا ہے۔ بھیوجی مہاراج کے ٹرسٹ اورخادم کے علاوہ ان کے حامیوں نے ان کی موت کے معاملے کی سی بی آئی جانچ کا مطالبہ کیا ہے۔ مہاراشٹر اور مدھیہ پردیش کے رہنے والے ان کے حامیوں نے اندور کلیکٹر اور ڈی آئی جی کو ایک میمورنڈم سونپا ہے۔ٹرسٹ کے لوگوں نے میمورنڈم کے ذریعہ بھیو جی مہاراج کی موت کے معاملے میں کئی سوال کھڑے کئے ہیں۔ بھیو جی کے حامیوں نے میمو رنڈم میں ان کی موت والے دن اور اس سے پہلے اور بعد کے کچھ واقعات کے ذریعے سوال کھڑے کئے ہیں۔ میمو رنڈم میں یہ سوال کھڑے کئے گئے ہے کہ : 1موت سے 3۔4 ماہ پہلے بھیوجی کے اندورنی خلفشار کی خبریں کس نے منصوبہ بند طریقے سے لوکل میڈیا میں چلوائی؟۔2دوسری شادی کے بعد پہلی بیوی سے اولاد کے ساتھ والد کے تعلقات کو منفی طریقے سے اچھالا گیا، اس کی جانچ ہونی چاہئے۔ 3۔بھیو جی اپنی بیٹی سے بہت لگاؤ رکھتے تھے، ایسے میں جب وہ گھر آ رہی تھی، گاڑی اسے لینے ایئرپورٹ گئی تھی تو ٹھیک اس پہلے گولی کیوں ماری؟ بیٹی سے ملے کیوں نہیں؟۔4بھیو جی جب بھی کمرے میں اکیلے رہتے تھے تب کسی کو بھی اندر جانے کی اجازت نہیں تھی، ایسے میں جب کسی نے گولی چلنے کی آواز ہی نہیں سنی تو پھر دروازہ کیوں توڑا گیا؟۔ ان جیسے امور پر ان کے حامیوں نے سوال قائم کئے ہیں اور میمورنڈم سونپ کر اس کی منصفانہ تفتیش کا مطالبہ کیا ہے ۔واضح ہو کہ مبینہ طور پر انہوں نے گولی مار کر خودکشی کر لی تھی اور ان کے کمرے سے جو سوسائڈ نوٹ برآمد ہوا اس میں لکھا تھا کہ وہ کشیدگی میں تھے۔ انتہائی فعال اور چرچا میں رہنے والے بھیو جی کی خودکشی پر پورا ملک حیران رہ گیا تھا۔مدھیہ پردیش کی شیوراج حکومت نے انہیں وزیر مملکت کا درجہ دینے کا فیصلہ کیا تھا۔ اگرچہ بھیو جی نے شیوراج حکومت کا یہ آفر ٹھکرا دیا تھا؛ لیکن اپوزیشن نے سوال اٹھایا تھا کہ چونکہ بھیو جی کچھ سنتوں کے ساتھ مل کر نرمدا گھوٹالہ رتھ یاترا نکالنے والے تھے؛ اس لیے شیوراج حکومت نے انہیں وزیر مملکت کے عہدے پر بٹھانے کا لالچ دیا تھا۔ مدھیہ پردیش کانگریس کے لیڈر مانک اگروال یہ کہنے سے نہیں چوکے تھے کہ بھیو جی پر شیوراج حکومت کا دباؤ تھا؛ اس لیے ان کے خودکشی کی سی بی آئی کے ذریعہ تفتیش ہونی چاہیے۔

ایک نظر اس پر بھی

مودی جی کا پرگیہ سنگھ ٹھاکور سے لاتعلقی ظاہر کرنا ایسا ہی ہے جیسے پاکستان کا دہشت گردی سے ۔۔۔۔ دکن ہیرالڈ میں شائع    ایک فکر انگیز مضمون

 وزیر اعظم نریندرا مودی کا کہنا ہے کہ وہ مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کو دیش بھکت قرار دیتے ہوئے ”باپو کی بے عزتی“ کرنے کے معاملے پر پرگیہ ٹھاکورکو”کبھی بھی معاف نہیں کرسکیں گے۔“امیت شاہ کہتے ہیں کہ پرگیہ ٹھاکور نے جو کچھ کہا ہے(اور یونین اسکلس منسٹر اننت کمار ہیگڈے ...

لوک سبھا انتخابات؛ آخری مراحل کے انتخابات جاری؛ 918 اُمیدواروں کی قسمت داو پر؛ ای وی ایم میں خرابی کی شکایتیں؛ بنگال میں دو کاروں پر حملہ

لوک سبھا انتخابات کے ساتویں  اور آخری مرحلہ کے لئے اتوار کی صبح 7 بجے سے ووٹنگ جاری ہے۔جس میں  918 امیدواروں کی قسمت دائو پر لگی ہوئی ہے۔آج جاری انتخابات میں  وزیر اعظم نریندر مودی کا حلقہ انتخاب وارانسی بھی شامل ہے۔ 

دہشت گرد ہر مذہب میں ہیں: کمل ہاسن

تنازعات میں گھرے اداکار لیڈر کمل ہاسن نے جمعہ کو کہا کہ ہر مذہب میں دہشت گرد ہوتے ہیں اور کوئی بھی اپنے مذہب کوبہترین ہونے کا دعویٰ نہیں کر سکتا۔

بی جے پی کو280 سے زیادہ سیٹیں ملیں گی، این ڈی اے کی سیٹیں 300 سے متجاوز ہوں گی: پی مرلیدھر راؤ

بی جے پی لیڈر رام مادھو کے تخمینے کو مسترد کرتے ہوئے پارٹی کے سینئر لیڈر پی مرلیدھر راؤ نے کہا کہ بھگوا پارٹی کو 280 سے زیادہ سیٹیں ملیں گی جبکہ این ڈی اے کے سیٹوں کی تعداد 300 کے پار ہوں گی۔

مالیگاؤں 2008بم دھماکہ معاملہ: اے ٹی ایس کی عدالت سے غیر حاضری کے معاملے میں عدالت کا دخل دینے سے انکار

مالیگاؤں 2008 بم دھماکہ متاثرین جانب سے خصوصی این آئی اے عدالت میں داخل عرضداشت جس میں اس معاملے کی سب سے پہلے تفتیش کرنے والی تفتیشی ایجنسی ATSکی عدالت سے غیرحاضری پر سوال اٹھایا گیا تھا کو عدالت نے یہ کہتے ہوئے خارج کردیا کہ اے ٹی ایس کو پابند کرنا اس کے دائرہ اختیار میں نہیں ہے ...