قطری لڑاکا طیاروں کی امارات کے ایک مسافر طیارے کو روکنے کی پھر کوشش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 23rd April 2018, 6:10 PM | خلیجی خبریں |

دبئی 23اپریل (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا )متحدہ عرب امارات نے کہا ہے کہ قطر کے دو لڑاکا طیاروں نے بحرین کی جانب جانے والے اس کے ایک مسافر طیارے کو پرواز کے دوران میں بڑے بے ہنگم طریقے سے روکنے کی کوشش کی ہے۔ اس مسافر طیارے میں 86 افراد سوار تھے۔امارات کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق مسافر طیارے کے ہواباز نے مشاقی کا مظاہرہ کرتے ہوئے قطری طیاروں سے ٹکراؤ سے بچنے کی کوشش کی ہے۔ایک قطری لڑاکا جیٹ اماراتی طیارے سے 200 میٹر سے بھی کم فاصلے پر آگیا تھا۔متحدہ عرب امارات کی جنرل ایوی ایشن اتھارٹی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مسافر طیارے کا رْخ قطری لڑاکا جیٹ سے ٹکرانے سے چند ثانیے قبل ہی موڑا گیا تھا۔اس سے طیارے میں سوار تمام مسافروں کی جانیں خطرے سے دوچار ہوگئی تھیں۔اتھارٹی کا کہنا ہے کہ’’ قطری طیاروں کی جانب شہری ہوابازی کے قوانین کی اس خلاف ورزی پر بین الاقوامی سول ایوی ایشن تنظیم کو شکایت کی جائے گی۔مسافروں کی جانوں کو کسی قسم کا خطرہ کسی بھی طرح قابل قبول نہیں ہے۔یہ واقعہ شہری ہوا بازی کے تحفظ ، بین الاقوامی قوانین اور کنونشنوں کی صریح خلاف ورزی ہے‘‘۔قطری حکام کی جانب سے امارات کے اس الزام کے رد عمل میں کوئی بیان سامنے نہیں آیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

دبئی کے قریب عجمان میں شروع ہورہا ہے نوائط پرئمیر لیگ کا شاندار کرکٹ ٹورنامنٹ؛ پہلے نام درج کرنے والی چھ ٹیموں کو ملے گا ٹورنامنٹ میں موقع

متحدہ عرب امارات کے شہر عجمان میں جنوری 2019 کو نوائط پرئمیر لیگ (این پی ایل) کاشاندار کرکٹ ٹورنامنٹ منعقد کیا جارہا ہے ، جس  میں دبئی یا متحدہ عرب امارات کے شہروں میں مقیم  بھٹکل، شرالی، مرڈیشور اور منکی کے کھلاڑی اپنے جوہر دکھلا سکیں گے۔ اس بات کی اطلاع  این پی ایل کے کنوینر ...

ایران میں گرفتار اُترکنڑا کے ماہی گیروں کی فوری رہائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کرناٹکا این آر آئی فورم کا دبئی میں ہندوستانی سفارت کار سے ملاقات

  ریاست کرناٹک کے ضلع اُترکنڑا کے 18 ماہی گیروں کی ایران میں گرفتاری کے بعد اُن کی رہائی کی کوششیں تیز ہوگئی ہیں۔ اس تعلق سے تازہ اطلاع یہ ہے کہ  دبئی میں موجود ماہی گیروں کے رشتہ داروں نے  کرناٹکا این آر فورم کے  اہم ذمہ دار اور قائد قوم جناب ایس ایم سید خلیل الرحمن صاحب سے ...