آصفہ ریپ اور مرڈر واردات کے خلاف کیرالہ میں غیر معلّنہ ہڑتال۔ موٹر گاڑیوں پر سنگ باری

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 16th April 2018, 6:24 PM | ساحلی خبریں | ملکی خبریں |

کاسرگوڈ 16؍اپریل (ایس اونیوز) جموں وکشمیر کے کٹھوا میں آصفہ کی اجتماعی عصمت دری اور وحشیانہ قتل کی مذمت میں باضابطہ طور پر ہڑتال کا اعلان یا مطالبہ کسی بڑی تنظیم یا پارٹی کی طرف سے نہ کیے جانے کے باوجود آج کیرالہ میں پوری طرح غیر معلنہ ہڑتال منائی گئی۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق بطور مذمت و احتجاج کیرالہ میں ہرجگہ دفاتر،دکانیں اور کاروباری ٹھکانے بند رہے۔ سڑکوں پر سے موٹر گاڑیاں غائب رہیں ۔ اس ہڑتال کے لئے ’جنا پرا سمیتی کیرالہ‘ کے نام سے وہاٹس ایپ سمیت دیگر سوشیل میڈیا پر پیغامات عام کیے گئے تھے۔جس سے عوام الجھن کا شکار ہوگئے تھے کہ اس پر عمل کیا جائے یا نہیں۔لیکن لوگوں نے احتیاطی طور پر موٹر گاڑیوں کو سڑکوں پر نہ اتارنے میں عافیت سمجھ لی ۔ اسی طرح بسیں بھی بند رکھی گئیں۔کچھ مقامات پر ٹریفک روکنے کے لئے بڑے بڑے پتھر ا،درختوں کی شاخیں، تنے ، ٹائرس، ڈرمس اور دیگر رکاوٹ پیدا کرنے والی چیزیں سڑکوں پر ڈال دی گئی تھیں۔بعض جگہوں پر ٹائرس جلانے اور سڑکوں پر نظر آنے والی گاڑیوں پر پتھراؤ کرنے کے واقعات بھی پیش آئے ہیں۔ہائی وے پر گاڑیوں کو دوڑنے سے روکنے اور کیرالہ اسٹیٹ ٹرانسپورٹ بس پر سنگ باری کرکے اس کے شیشے چور چور کردینے کے معاملے بھی سامنے آئے ہیں۔

اتوار کی شام سے سوشیل میڈیا پر ہڑتال کے پیغامات عام ہورہے تھے ، چونکہ ہڑتال کا اعلان کرنے والی کسی تنظیم کا نام نہیں تھا، اس لئے پولیس نے بھی اسے سنجیدگی سے نہیں لیا تھا۔ لیکن جب اتوار کے آدھی رات کے بعدصبح تک موٹر گاڑیوں کی آمد ورفت روکنے کے واقعات پیش آنے لگے توپھر پولیس حرکت میں آگئی ۔ معلوم ہواہے کہ ٹریفک میں رکاوٹ پیدا کرنے کے الزام میں پولیس نے 25افراد کو اپنی حراست میں لیا ہے۔
بتایاجاتا ہے کہ اس اچانک ااور غیر متوقع ہڑتال سے عام لوگوں اور خاص کر مسافروں کو بڑی ہی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا۔ اس کے علاوہ دفاتر اور دیگر ادارے بند ہونے کی وجہ سے دفتری کام کے لئے دوردراز سے آنے والے افراد مشکل میں پھنس گئے۔ٹرینوں کے ذریعے بیرونی شہروں سے پہنچنے والے سینکڑوں مسافر وں کو ریلوے اسٹیشنوں تک ہی محدود رہنا پڑا کیونکہ انہیں اپنے اپنے گھروں تک جانے کے لئے کوئی سواری دستیاب نہیں تھی۔

پولیس نے صبح ہی سے اپنا بندوبست تیز کردیا اور حالات کو پرامن بنائے رکھنے کے لئے ضروری اقدامات کیے۔ جس کی وجہ سے کہیں سے بھی تشددیا تصادم کی خبریں نہیں ملی ہیں۔
 

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل انجمن پی یوکالج طلبا ٹیم کی کھیل  کے میدان میں شہنشائیت جاری : تیراکی میں 14 اور کراٹے میں 3گولڈ سمیت کئی تمغے انجمن کے نام

انجمن پی یوکالج بھٹکل کی کھلاڑیوں کی شاندار پرفارمنس جاری ہے۔ کبڈی اور فٹ بال میں ضلع سطح پر چمپئین بننے کے بعد باسکٹ بال میں رنر اپ کا خطاب جیتا تو اب ضلع لیول کے تیراکی (سوئمنگ )میں 14گولڈ ،09سلور اور 01برانج میڈل جیتا ہے تو کراٹے میں 3گولڈ اور 2سلور میڈل جیت کر کھیل کے میدان میں ...

بھٹکل انجمن پی یوکالج  فٹ بال ٹورنامنٹ میں چمپئین تو باسکٹ بال ٹورنامنٹ میں رنر اپ

تعلیمات عامہ اترکنڑا ضلع اور وائی ٹی ایس ایس کالج یلاپور کے اشتراک سے مالادیوی کھیل میدان کاروار میں منعقدہ ضلع لیول فٹ بال ٹورنامنٹ میں چمپئین شپ کاخطاب جیتاہے تو اسی طرح منڈگوڈ کے لویالا کالج میں منعقدہ ضلع سطح کے باسکٹ بال ٹورنامنٹ میں انر اپ کا خطاب جیت کر کالج اور شہر کا ...

موڈبیدری:پرشانت پجاری قتل کیس کے ملزم پرحملہ۔ زخمی خطرے سے باہر

ہندوتووادی کارکن اور پھولوں کے تاجر پرشانت پجاری کے قتل میں ملزم بنائے گئے امتیاز نامی شخص پر گنٹل کٹّے قریب صبح 5.30بجے موٹر بائک سواروں نے حملہ کردیا جس کی وجہ سے امتیاز کو زخمی حالت میں منگلورو کے ایک نجی اسپتال میں منتقل کیا گیا ہے۔ بعض ذرائع کا کہنا ہے کہ امتیاز پر جان لیوا ...

نیرو مودی، میہل چوکسی اور وجے مالیا کے بعد نتن سندیسارا بھی 5000 کروڑلوٹ کر فرار

نیرو مودی، میہل چوکسی اور وجے مالیا کے بعد ایک دیگر کاروباری نتن سندیسارا ہندوستانی بینکوں کو ہزاروں کروڑ روپے کا دھوکہ دے کر ملک سے فرار ہو گیا ہے۔ خبروں کے مطابق وہ فیملی کے ساتھ نائیجیریا میں ہے۔

سماج کلیان بورڈ کی صدر پدما شکلا کے ساتھ دو درجن لوگوں نے بی جے پی چھوڑا

مدھیہ پردیش میں اسمبلی کے الیکشن جیسے جیسے نزدیک آتے جا رہے ہیں ویسے ویسے سیاسی گہما گہی بڑھتی جا رہی ہے ۔ لیڈروں کے ذریعہ ایک پارٹی سے استعفیٰ دے کر دوسری پارٹی کی رکنیت لینے کا سلسلہ بھی شروع ہو گیا ہے ۔ اسی سلسلے میں پیر کو کابینہ وزیر کادرجہ حاصل اور ریاست کے سماجی بہبود ...

ملک کا آئین اورجمہوریت خطرے میں، امن اورسیکولرازم کی راہ پرچل کرہی ملک کرسکتا ہے ترقی: مولانا ارشد مدنی

ملک کے موجودہ حالات کے تناظر میں مرکزی دفترجمعیۃعلماء ہندکے مفتی کفایت اللہ میٹنگ ہال ۱؂ بہادرشاہ ظفرمارگ نئی دہلی میں جمعیۃعلماء ہند کی مجلس عاملہ کا ایک اہم اجلاس منعقد ہوا ،