خواتین کے تحفظ کیلئے کوئی بل کیوں نہیں ؟ ،عصمت دری کے خلاف مسلسل تیسرے دن ملک گیر احتجاج

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th April 2018, 11:18 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،15؍اپریل(ایس او نیوز؍ایجنسی ) اناﺅ ۔کٹھوعہ ریپ کے خلاف احتجاج بڑھتاجارہے ،گذشتہ تین دنوں سے ملک کے متعدد علاقوں اور شہروں میں کینڈل مارچ نکال کر اس واقعہ کی شدید مذمت کی جارہی ہے او رمجرمین کو تختہ دار پر لٹکانے کا مطالبہ ہورہاہے ۔آج بھی پورے ہندوستان میں بڑے پیمانے پر لوگوں کے ذریعہ احتجاجی مظاہرہ دیکھنے کو مل رہا ہے ۔ اس میں نئی دہلی، ممبئی، کولکاتا، بنگلورو،لکھنو ،کانپور سمیت کئی دیگر ریاستیں شامل ہیں۔ یہ احتجاجی مظاہرہ جموں و کشمیر کے کٹھوعہ اور اتر پردیش کے ا±نّاو اجتماعی عصمت دری معاملے کے منظر عام پر آنے کے بعد اور بی جے پی لیڈروں و کارکنان کے ذریعہ متاثرین کی جگہ ملزمین کے حق میں آواز اٹھانے کے خلاف کیا جا رہا ہے۔ ملک میں عصمت دری، خصوصاً نابالغ بچیوں کی عصمت دری اور قتل جیسے معاملات میں لگاتار ہو رہے اضافے سے ملک کے عوام تشویش میں مبتلا ہیں اس لیے وہ سڑکوں پر نکل کر اپنا احتجاج درج کرا رہے ہیں۔ نئی دہلی، ممبئی سمیت دیگر ریاستوں میں آج 5 بجے کے بعد احتجاج درج کرنے کا فیصلہ لیا گیا تھا جہاں اس وقت کافی تعداد میں لوگ جمع ہو گئے ہیں اور وزیر اعظم نریندر مودی کے خلاف نعرے لگا رہے ہیں۔ کئی مقامات پر لوگ آصفہ کے لیے انصاف کا مطالبہ کرنے والے بینر ہاتھ میں لیے کھڑے دیکھے جا رہے ہیں۔خواتین یہ مطالبہ بھی کررہی ہیں کہ خواتین کے تحفظ کیلئے حکومت علاحدہ کیوں کوئی بل نہیں لارہی ہے ۔ اس ملک گیر احتجاج میں عام آدمی پارٹی ۔کانگریس ۔آر جے ڈی سمیت کئی سیاسی پارٹیاں بھی شامل ہیں ۔
دہلی میں برقع نشیں مسلم خواتین نے بھی پارلیمنٹ اسٹریٹ پر جمع ہو کر عصمت دری متاثرین کو انصاف دلانے کا مطالبہ کیا اور ملک میں خواتین کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے موم بتی جلا کر مظاہرہ بھی کیا ۔

ایک نظر اس پر بھی

مالیگاؤں ۲۰۰۸ ء بم دھماکہ معاملہ،زخمیوں کا علاج کرنے والے ڈاکٹروں کی گواہی کا سلسلہ جاری، ڈاکٹر سعید فیضی نے گواہی بھتہ پبلک ویلفئر فنڈ میں عطیہ کردیا

مالیگاؤں ۲۰۰۸ ء بم دھماکہ معاملے میں خصوصی این آئی اے عدالت میں بم دھماکوں میں زخمی ہونے والوں کا علاج کرنے والے ڈاکٹروں کی گواہی بددستور جاری ہے جس کے دوران آج مالیگاؤں کے مشہور و سینئر ڈاکٹر سعید فیضی کی گواہی عمل میں آئی

دواؤں کا معیار اور نوجوانوں کو روزگار انتہائی اہم مسئلہ: پروفیسر عبداللطیف، آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس (اسٹوڈنٹس وِنگ) کی تشکیل

آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس کی ایک میٹنگ آج ابن سینا اکیڈمی، دودھ پور، علی گڑھ میں منعقد ہوئی، جس کی صدارت پروفیسر عبداللطیف (قومی نائب صدر، آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس، اکیڈمک وِنگ) نے کی۔ جبکہ نظامت کے فرائض ڈاکٹر سنبل رحمن (قومی صدر، آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس، خواتین ...

سکھ فسادات: میرے خلاف نہ کوئی ایف آئی آر اور نہ ہی چارج شیٹ، کمل ناتھ نے کہا،بی جے پی جھوٹ پھیلارہی ہے

مدھیہ پردیش کے وزیراعلیٰ کمل ناتھ نے 1984 کے سکھ فسادات پر اٹھ رہے سوالوں پر جواب دیاہے۔کمل ناتھ نے کہاہے کہ 1984 کے سکھ فسادات میں ان کے خلاف کوئی بھی ایف آئی آر یا چارج شیٹ نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ اب اس مسئلے کواٹھانے کے پیچھے صرف سیاست ہے۔انہوں نے کہاکہ جس وقت میں کانگریس کا جنرل ...

بریلی: ایک ساتھ 58 ہندو، مسلم اور سکھ لڑکیوں کی شادی

اجتماعی شادیوں کے بارے میں تو آپ بہت سن لیں گے لیکن یوپی کے بریلی میں ایک منفرد شادی دیکھنے کوملی ہے۔بریلی میں منعقد ایک پروگرام میں ایک ساتھ ہندو، مسلم اور سکھ کمیونٹی کی غریب لڑکیوں کی شادی کرائی گئی۔ایک ساتھ جب گھوڑی پر بیٹھ کر 58 دولہا نکلے تو ہر کوئی اس منفرد بارات کو ...

1984-1993-2002فسادات: اقلیتوں کو نشانہ بنانے میں سیاسی رہنماؤں اور پولیس کی ملی بھگت تھی : ہائی کورٹ

دہلی ہائی کورٹ نے 1984سکھ مخالف فسادات معاملے کے فیصلے میں دوسرے فسادات کولے کر بھی بے حد سخت تبصرہ کیاہے ۔ جسٹس ایس مرلی دھر اور جسٹس ونود کوئل کی بنچ نے پیر کو سجن کمار کو فسادات پھیلانے اور سازش رچنے کا مجرم قرار دیتے ہوئے عمر قید کی سزا سنائی ۔ کورٹ نے کہا کہ سال 1984 میں نومبر کے ...