جمعیۃ علماء تارا پور اور انجمن اتحاد کمیٹی کے اشتراک سے ضلع پالگھر کے 15 مکاتب کے طلبہ و طالبات میں انعامات کی تقسیم

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 4th December 2017, 7:19 PM | ملکی خبریں |

 

پالگھر۴؍ دسمبر (ایس او نیوز/راست)  جمعیۃ علماء ضلع تھانے و پالگھر کی تارا پور یونٹ اور انجمن اتحاد کمیٹی کے روح رواں جناب ایاز الدین شیخ صاحب اور ان کے رفقاء نے پالگھر ضلع کے کوردہ مقامات پر چل رہے 15 مکاتب کے ہونہار طلبہ و طالبات کی حوصلہ افزائی کے لئے انعامی مقابلہ منعقد کیا اور ان میں اول ،دوم اور سوم پوزیشن حاصل کرنے والے تقریباً160 طلبہ و طالبات کو ٹرافی اور دیگر انعامات سے نوازا۔

اس انعامی تقریب کی صدارت جمعیۃ علماء ضلع تھانے و پالگھر کے صدر مولانا حلیم اللہ صاحب قاسمی نے فرمائی.اس پروگرام میں مولانا حلیم اللہ قاسمی،ایاز الدین شیخ ،محی الدین دمنیا کے علاوہ بھی لوگوں نے خطاب کیاجبکہ ضلع انتظامیہ کے کئی عہدے داران اور معززین تارا پور نے بھی شرکت کی جن میں ایڈوکیٹ موہن جوشی،کمار صاحب P.S.I.تارا پور، مفتی حفیظ اللہ قاسمی ناظم تنظیم جمعیۃ علماء مہاراشٹر،حافظ عارف انصاری صدر جمعیۃعلماء تھانہ، سلیم گونڈ ٹرسٹی آف واکولہ مسجد،آویس صابو والا ایڈوائزر آف فلاح ٹرسٹ ،محی الدین اے آئی ایم ایجوکیشن سوسائٹی،اقبال پٹیل وغیرہ قابل ذکر ہیں ۔

اس پروگرام کی کامیابی میں مولانا صفوان ،کلیم سر،حافظ افضل ،بدر الدین بھائی،امین نورانی،محبوب بھائی چونا والا،محی الدین مارکنڈے اور مقصود مارکنڈے وغیرہ کا تعاون حاصل رہا۔

ایک نظر اس پر بھی

مینکا گاندھی نے بچوں کے خلاف جرائم کے سلسلے میں پولیس کے لیے قانونی عمل پرکتابچہ جاری کیا 

عورتوں اور بچوں کی ترقی کی مرکزی وزیر محترمہ مینکاسنجے گاندھی نے آج یہاں ایک تقریب کے دوران بچوں کے خلاف جرائم کے سلسلے میں پولیس کے لئے قانونی عمل کے بارے میں ایک کتابچہ جاری کیا۔

رادھا موہن سنگھ نے نیپال کے زرعی شعبے کو آگے بڑھانے کے لیے تعاون کایقین دلایا 

زراعت اور کسانوں کی فلاح و بہبود کے مرکزی وزیر جناب رادھا موہن سنگھ نے آج نئی دہلی میں اپنے نیپالی ہم منصب اورنیپال کے زراعت ، زمین بندوبست اور امداد باہمی کے وزیر جناب چکرپانی کھنال سے ملاقات کی

جموں کشمیر میں بی جے پی۔پی ڈی پی سرکار گرگئی؛ محبوبہ مفتی نے سونپا گورنر کو اپنا استعفیٰ

جموں کشمیر میں بی جے پی نے محبوبہ مفتی سرکار سے اپنی حمایت واپس لے لی ہے جس کے ساتھ ہی ریاست میں تین سالوں سے چلی آرہی گٹھ بندھن سرکار ختم ہوگئی ہے۔ بی جے پی کے سرکار سے  الگ ہونے کی اطلاع کے فوری  فوری بعد محبوبہ نے گورنر این این بوہرا  کو اپنا استعفیٰ سونپ دیا۔