سعودی عرب: دنیا کے سب سے بڑے تفریحی شہر کا اعلان

Source: S.O. News Service | Published on 8th April 2017, 5:20 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،8اپریل(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)سعودی عرب کے نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز نے عالمی سطح پر سب سے بڑے ثقافتی اور تفریحی شہر کے مں صوبے کا اعلان کیا ہے۔ یہ منصوبہ سعودی دارالحکومت ریاض کے جنوب مغرب میں واقع علاقے القِدیہ میں 334 مربع کلومیٹر کے رقبے پر ہوگا۔سعودی پریس ایجنسی کے مطابق شہزادہ سلمان جو پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چیئرمین بھی ہیں انہوں نے بتایا کہ مذکورہ شہر ایک اہم ثقافتی سنگِ میل ثابت ہونے کے علاوہ مملکت میں مستقبل کی نسل کی تفریحی، ثقافتی اور سماجی ضروریات پوری کرنے کا مرکز بھی ہوگا۔
سعودی نائب ولی عہد نے واضح کیا کہ یہ پْر عزم منصوبہ سعودی عرب کے پروگرام ویڑن 2030 کے سلسلے کی ایک کڑی ہے۔ اس مقصد کے لیے مملکت کے اندر سرمایہ کاری کی جائے گی جس سے ملک و قوم کو فائدہ پہنچے، ملکی آمدنی کے متنوع ذرائع میسر آئیں، سعودی معیشت آگے بڑھے اور نوجوانوں کے کے لیے روزگار کے مزید مواقع پیدا ہوں۔شہزادہ سلمان کے مطابق مملکت کا پبلک انویسٹمنٹ فنڈ اس منصوبے میں مرکزی سرمایہ کار ہوگا۔ اس کے علاوہ ملکی و غیر ملکی بڑے سرمایہ کار بھی حصہ لیں گے۔
منصوبے کا سنگِ بنیاد 2018 کے اوائل میں رکھا جائے گا جب کہ اس کے پہلے فیز کا افتتاح 2022 میں کر دیا جائے گا۔ امید ہے کہ یہ منصوبہ معاشرتی ترقی اور خوش حالی لانے کے علاوہ دارالحکومت ریاض کو زندگی گزارنے کے لیے دنیا کے 100 بہترین شہروں کی فہرست میں بھی لانے میں اہم کردار ادا کرے گا۔مذکورہ منصوبہ مستقبل کی مہم جوئی کا دارالحکومت ہونے کے لحاظ سے دنیا بھر کے زائرین کے لیے کشش کا مرکز ہوگا۔ انتہائی باریک بینی کے ساتھ منتخب کی جانے والی سرگرمیوں کے لیے جدید ترین بین الاقوامی معیار کو بنیاد بنایا گیا ہے تا کہ صحت مندانہ ماحول میں بہترین تفریح فراہم کی جا سکے۔اس بات کی بھی توقع ہے کہ(Six Flags) کا تفریحی شہر منصوبے کے پر کشش ترین ذرائع میں شامل ہو گا۔یاد رہے کہ القِدِیّہ کے منصوبے میں 4 مرکزی مجوعے شامل ہوں گے جو تفریح، گاڑیوں کا کھیل، کھیل کود اور ہاؤسنگ و ضیافت ہے۔منصوبے میں دنیا کے مشہور ترین ریستوران اور ٹریڈ مارک اپنی خدمات فراہم کریں گے۔آنے والے وقتوں میں منصوبے کے متعلق تفصیلات کو منظر عام پر لایا جائے گا۔
 

ایک نظر اس پر بھی

مسقط عمان میں پیر کو منائی جائے گی عیدالفطر؛ اسی رات ہوگی بھٹکل مسلم جماعت مسقط کی عید ملن پارٹی

 مسقط کی وزارت مذہبی اُمور کی طرف سے خبر دی گئی ہے کہ عمان میں چاند کہیں پر بھی نظر نہیں آیا ہے، اس لئے اس بار پورے 30 روزے رکھے جائیں گے، میڈیا رپورٹس کے مطابق  عمان میں پیر کو عیدالفطر منائی جائے گی۔

عیدالفطر کی رات کو ہوگی مسقط میں بھٹکل مسلم جماعت کی عید ملن تقریب؛ بچوں کےہوں گے رنگا رنگ اور دلچسپ پروگرام

بھٹکل مسلم جماعت مسقط کی جانب سے گذشتہ سالوں کی طرح امسال بھی شاندار عید ملن تقریب کا انعقاد کیا گیا ہے جس میں بچوں کے رنگا پروگرام ہوں گے۔ عیدملن کی یہ خوبصورت تقریب عیدالفطر کی رات یعنی یکم شوال کو بعد نماز عشاء رامی  ڈریم ریسارٹ، سیب میں رکھی گئی ہے۔

سیاسی بحران کی وجہ نہ تو ایران ہے اور نہ ہی الجزیرہ: قطرکے وزیر خارجہ کا بیان

قطر کے وزیر خارجہ شیخ محمد بن عبدالرحمان الثانی کا کہنا ہے کہ حالیہ سفارتی بحران کی اصل وجوہات کے بارے میں علم نہیں ہے لیکن اتنا معلوم ہے کہ بحران کی وجہ 'نہ تو ایران ہے اور نہ ہی الجزیرہ۔پیرس میں پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران انھوں نے کہا کہ قطر مذاکرات کے لیے تیار ہے اور خلیج ...

دبئی ایئرپورٹ: اسمارٹ فون آپ کے پاسپورٹ کا متبادل !

متحدہ عرب امارات بالخصوص دبئی اپنے ہوائی اڈوں پر مزید سہولتیں فراہم کرنے اور اس میدان میں دستیاب جدید ترین ٹکنالوجی کو استعمال کرنے کے لیے کوشاں ہے۔ان شان دار "سہولتوں" کے سلسلے میں آخری کڑی پاسپورٹ اور ویزے سے بے نیاز ہو کر اسمارٹ فون کو متبادل کے طور پر استعمال کیا جانا ہے۔

تین خلیجی ممالک کا قطر کے ساتھ مشترکہ خاندانوں کی دیکھ بھال کا فیصلہ

سعودی عرب ، بحرین اور متحدہ عرب امارات کی جانب سے اتوار کی صبح جاری علاحدہ بیانات میں تینوں ممالک کے عوام اور قطری شہریوں پر مشتمل مشترکہ خاندانوں کی انسانی صورت حال کا خیال رکھنے کی ہدایات دی گئی ہیں۔اس سلسلے میں ایک سعودی ذمے دار نے اپنے بیان میں کہا مملکتِ سعودی عرب برادر ...

موجودہ بحران پورے خلیج کو اپنی لپیٹ میں لے سکتا ہے:قطر دوحہ کی طرف منسوب دہشت گرد گروپوں کی فہرست مسترد

قطری وزیرخارجہ محمد بن عبدالرحمان آل ثانی نے کہا ہے کہ ان کا ملک خلیجی ریاستوں کے ساتھ پیدا ہونے والے سفارتی بحران کے جلد حل کا خواہاں ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ قطر اور دوسرے ملکوں کے درمیان کشیدگی ختم نہ ہوئی تو تمام خلیجی ریاستیں اور اقوام اس کی لپیٹ میں آسکتی ہیں۔ قطری وزیر خارجہ ...