صدر جمہوریہ نے سہ روزہ او ڈی او پی اجلاس کاافتتاح کیا

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 11th August 2018, 1:14 AM | ملکی خبریں |

لکھنؤ:10/ اگست (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)صدر جمہوریہ رام ناتھ کوند نے جمعہ کو قومی اور بین الاقوامی بازار میں اترپردیش کی روایتی مصنوعات کو نئی پہچان دینے کی غرض سے شروع کی گئی او ڈی او پی اسکیم (ایک ضلع ایک صنعت اسکیم) کوفروغ دینے کی غرض سے راجدھانی لکنھؤ میں منعقد سہ روزہ کانفرنس کا افتتاح کیا۔چھوٹی ،بہت چھوٹی اور درمیانی صنعت کے کاروباریوں کی یہ کانفرنس روایتی مصنوعات کو فروغ دینے کے ساتھ ایک ضلع ایک صنعت اسکیم کے لئے میل کا پتھر ثابت ہوگی۔قابل ذکر ہے کہ او ڈی اوپی اسکیم کا افتتاح اسی سال 24 جنوری کو یوم اتر پردیش کے موقع پرنائب صدر جمہوریہ ایم وینکیا نائیڈو نے کیا تھا۔صدرجمہوریہ نے اجلاس کا افتتاح مشعل روشن کر کے کیا اس موقع پر گورنر رام نائیک، وزیر اعلی یوگی آتیہ ناتھ، نائب وزیراعلی کیشو پرساد موریہ اور مائیکرو و چھوٹے مصنوعات کے وزیر ستیہ دیو چودھری موجود تھے۔صدرجمہوریہ نے ریاست کے گورکھپور، آگرہ اور مرادآباد سمیت صوبہ کے مختلف ضلعوں سے آئے چنندہ افراد کے درمیان قرضے کا تصدیق نامہ تقسیم کیا۔بنارس، گورکھپو، مرادآباد، آگرہ اورکانپورکے کچھ کاروباریوں نے اس موقع پر اپنے تجربات صدر جمہوریہ کے سامنے پیش کئے۔ اس اجلاس کا راست ٹیلی کاسٹ پورے ریاست میں کیا گیا۔اس سے پہلے صدر جمہوریہ نے ایک ضلع ایک صنعت اسکیم کے تحت سہ روزہ سمینار کا افتتاح کیا اور دستکاروں فنکاروں اور کاروباریوں سے ان کے صنعت کے بارے میں معلومات حاصل کیں۔

ایک نظر اس پر بھی

جے پی سی سے جانچ کرانے کا راستہ ا بھی کھلا ہے، عام آدمی پارٹی نے کہا،عوام کی عدالت اورپارلیمنٹ میں جواب دیناہوگا،بدعنوانی کے الزام پرقائم

آپ کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے کہا ہے کہ رافیل معاملے میں جمعہ کو آئے سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود متحدہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے اس معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کا اراستہ اب بھی کھلا ہے۔

رافیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ، راہل گاندھی معافی مانگیں: بی جے پی

فرانس سے 36 لڑاکا طیارے کی خریداری کے معاملے میں بدعنوانی کے الزامات پر سپریم کورٹ کی کلین چٹ ملنے کے بعد کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے جمعہ کو کہا کہ کانگریس پارٹی اور اس کے چیئرمین راہل گاندھی ملک کو گمراہ کرنے کیلئے معافی مانگیں۔