پردیومن قتل سانحہ : شترو گھن سنہا کامطالبہ ،کیمرے کے سامنے ہو ں سبھی پوچھ گچھ : شتروگھن سنہا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th November 2017, 11:24 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی13نومبر (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا ) پردیومن قتل معاملے میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما اور اداکار شتروگھن سنہا نے پیر کو سات سالہ پردیومن ٹھاکر کے قتل کے مقدمات کی تفتیش کیمرے کے سامنے کرنے کی مانگ کی۔ انہوں نے کیمرہ میں کیس کی انکوائری کا مطالبہ کیا اور تھرڈ ڈگری کی سزا نہ دینے کی بھی مانگ کی ۔ ریان انٹرنیشنل سکول کے دوسری کلاس کے طالب علم کا اسکول کے بیت الخلا میں میں گلا ریت کر کو قتل کیا گیا تھا۔پریدومن کی لاش اسکول کے بیت الخلا میں پائی گئی تھی ۔اس معاملے میں سی بی آئی اور ہریانہ پولیس کی تحقیقات میں ایک بہت بڑ ا فرق ہے۔ ایک طرف جہاں ہریانہ پولیس نے پرد یومن کے قتل کے لیے بس کنڈیکٹرکوملزم بتایاتھا۔وہیں سی بی آئی نے اس معاملے میں 11 ویں کلاس میں پڑھنے والے طالب علم کو پردیومن کا قاتل قرار دیاہے، اس سے پہلے گروگرام پولیس نے بس کنڈکٹراشوک کمار کو پردیومن کے قتل کے الزام میں گرفتار کیا تھا، مگر جب جانچ سی بی آئی نے سنبھالی تو اس نے کہا کہ یہ قتل پردیومن کے اسکول کے ہی ایک طالب علم نے انجام دیا ہے ۔ سنہا نے اپنے ایک کے بعد ایک ٹویٹ میں کہا کہ جس غریب عام آدمی اشوک کمار کو ہمارے بچے پردیومن کے قتل کا ملزم بنایا جارہا ہے ، اس سے سی بی آئی کی طرف سے چھوڑ دیا جاتا ہے۔ ایسے میں گروگرام پولیس یا جس کسی نے بھی توجہ بھٹکانے کے لئے اس پر (اشوک پر) الزام لگایا تھا، اس پر رحم نہیں کرنا چاہیے اور اس مناسب اور سخت سے سخت سزا دی جانی چاہئے ۔ واضح ہو کہ سنہا کی یہ تبصرہ مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کی جانچ میں قتل معاملے میں نیا موڑسامنے آنے کے بعد سامنے آیا ہے ۔ سی بی آئی کا دعوی ہے کہ سکول کے ایک 16 سالہ طالب علم نے پردیومن کو قتل کیا ہے۔ سنہا نے کہا کہ اب جو کچھ بھی پوچھ گچھ ہو وہ صرف کیمرے کی نگرانی میں ہو نی چاہئے،ارو اشوک کمار کنڈیکٹر پر غیر انسانی سلوک نہ کیا جائے۔

ایک نظر اس پر بھی

گجرات:بی جے پی میں بڑی بغاوت کے آثار،ٹکٹ کٹنے پراستعفوں کی دھمکی،اعلیٰ قیادت پرامیدوارتبدیل کرنے کادباؤ

بی جے پی کے ٹکٹ کی تقسیم کے بعد شروع ہونے والی بغاوت تھمنے کانام نہیں لے رہی ہے۔ پارٹی کے اعلیٰ کمان دفترتک پہنچنے کے بعد بی جے پی کے کارکنان نے اپنا احتجاج کرناشروع کردیا۔