بیندور: ایک شخص کی مشتبہ موت کا معاملہ۔ پولیس نے اپنے طور پر درج کیا کیس۔ تحقیقات کے لئے عدالت سے مانگی اجازت

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 30th April 2018, 7:27 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بیندور 30؍اپریل (ایس او نیوز) یہاں سے قریبی گاؤں گولی ہولے میں 28اپریل کو ایک شخص کی مشتبہ حالت میں موت واقع ہونے اور خاموشی کے ساتھ اسے نذر آتش کیے جانے کی اطلاع موصول ہونے پر پولیس نے خود اپنے طور پر معاملہ درج کرلیا ہے اور اگلی تحقیقات کے لئے عدالت سے اجازت طلب کی ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ موتیّا نائکا نامی شخص کی لاش اس کے گھر والوں نے کسی کو خبر کیے بغیر اپنے گھر کے پاس موجود زمین پر جلا ڈالی اور  پوچھنے والوں کو یہ بتایا کہ موتیّا نے خود کشی کرلی تھی۔ گاؤں میں  کھلے عام اس شبہ  کا اظہار کیا جارہا تھا  کہ شاید اس کے بھائی نے ہی اس کو قتل کردیا ہوگا اسی لئے رازداری کے ساتھ اسے نذر آتش کیا گیا ہے۔ کیونکہ گاؤں والے جانتے تھے کہ گزشتہ تین مہینے قبل اپنے والد کی موت کے بعد موتیّا نائکا ممبئی سے گھر واپس لوٹاتھا۔ وہ بری طرح شراب کا عادی ہوچکا تھااور ہمیشہ گھر والوں کے ساتھ جھگڑے کیاکرتا تھا۔ اپنی ماں سے شراب کے لئے پیسے مانگ کر بہت تنگ کیاکرتاتھا۔ گاؤں والے سوال کررہے تھے کہ اگر موتیّا نے خودکشی کی تھی تو گھر والوں نے پاس پڑوس والوں کو کیوں خبر نہیں کی۔ اس کے علاوہ اس معاملے کی اطلاع پولیس کو نہ دینے کا کیا راز ہے؟

پولیس نے افواہوں پر توجہ دیتے ہوئے اس مقام کا معائنہ کیا جہاں لاش جلائی گئی تھی۔ اس جگہ پرسوکھے اور ہرے بھرے درختوں کو کاٹنے اور لاش جلانے کے آثار دکھائی دئے۔ اس کے علاوہ اس مقام سے ایک پھاوڑا اور کُدال وغیر ہ بھی برآمد ہوئے۔البتہ آخری رسومات ادا کرنے کی مذہبی علامات کا کوئی نام ونشان وہاں پر موجود نہیں تھا۔اس بنیاد پر عوام کا شک بڑھ گیا کہ آپسی جھگڑے میں اس کے بھائی کے ہاتھوں ہی  اس کی   موت واقع ہوئی ہوگی۔

اب دیکھنا یہ ہے کہ پولیس نے رضاکارانہ طورپر اس کیس کو ہاتھ میں لینے اور تحقیقات کرنے کا جو فیصلہ کیا ہے اس کے کیا نتائج سامنے آتے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار:انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن کی سدراہ بنے ماحولیاتی این جی اوز کو ملنے والی مالی امداد کی جانچ کریں : رکن اسمبلی روپالی نائک کامرکزی ریلوے وزیر سے مطالبہ

ریاست کے ساحلی علاقے سے شمالی کرناٹک  کو جوڑنے والی ’قسمت کی ریکھا‘ انکولہ ۔ ہبلی ریلوے لائن کی تعمیرمیں جو ماحولیاتی اداروں ، این جی اوزاور ماہرین سدراہ بنے ہوئے ہیں دراصل یہ تمام  بیرونی ممالک کی  کروڑوں دولت کے تعاون سے بےبنیاد چیخ وپکار کررہے ہیں کاروار انکولہ کی رکن ...

کاروار میں انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن منصوبےکو جاری کرنےعوامی احتجاج : قومی شاہراہ بند کرنے پر احتجاجی پولس کی تحویل میں

انکولہ۔ ہبلی ریلوے لائن منصوبہ، سرحد علاقہ کاروار میں صنعتوں کا قیام سمیت مختلف مانگوں کو لے کر لندن برج پر قومی شاہراہ کو بند کرتے ہوئے احتجاج کی تیاری میں مصروف کنڑا چلولی واٹال پارٹی کے واٹال ناگراج سمیت 21جہدکاروں کو پولس نے گرفتار کرنے کے بعد رہاکردیا۔

لوک سبھاانتخابات کی تیاری میں مصروف الیکشن کمشن :اتراکنڑا  ضلع میں 11.40 لاکھ رائے دہندگان : 14ہزار ووٹرس آؤٹ تو 12ہزار ووٹرس اِن

الیکشن کمیشن  آئندہ ہونےو الے لوک سبھا انتخابات کی تیاری میں مصروف ہے۔اندراج و اخراج   اور ترمیم کے بعد تشکیل دی گئی  رائے دہندگان کی  فہرست کے مطابق ضلع کے 6ودھان سبھا حلقہ جات میں کل 11،40،316 ووٹر ہیں۔ چونکہ انتخابات کے قریب تک ووٹروں کے اندراج کے لئے موقع دیا گیا ہے تو رائے ...

شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر ہزاروں عوام  شاہراہ روک کیا  احتجاج : مجموعی استعفیٰ کا انتباہ اور الیکشن بائیکاٹ کا اعلان

تعلقہ کے شرالی میں دن بدن قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر معاملہ گرم ہوتا جارہاہے۔ شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع 45میٹر سے کم کرکے 30میٹر کئے جانےکی مخالفت کرتے ہوئے جمعرات کو ہزاروں لوگو ں نے قومی شاہراہ روک کر سخت احتجاج درج کیا۔ اس دوران عوامی مانگوں کو منظوری نہیں دی گئی تو ...

شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر ہزاروں عوام  شاہراہ روک کیا  احتجاج : مجموعی استعفیٰ کا انتباہ اور الیکشن بائیکاٹ کا اعلان

تعلقہ کے شرالی میں دن بدن قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر معاملہ گرم ہوتا جارہاہے۔ شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع 45میٹر سے کم کرکے 30میٹر کئے جانےکی مخالفت کرتے ہوئے جمعرات کو ہزاروں لوگو ں نے قومی شاہراہ روک کر سخت احتجاج درج کیا۔ اس دوران عوامی مانگوں کو منظوری نہیں دی گئی تو ...

بھٹکل انجمن بی بی اے کی طالبہ مریم حرا کو  کرناٹکا یونیورسٹی سطح پر دوسرا رینک

انجمن انسٹی ٹیوٹ آف مینجمنٹ بھٹکل کی طالبہ مریم حرابنت ارشاد ائیکری ڈاٹا نے کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ کے زیر اہتمام اپریل 2018میں منعقد ہوئی بی بی اے امتحانات میں پوری یونیورسٹی میں دوسرارینک حاصل کرتے ہوئے انجمن اور شہر کا نام روشن کیا ہے۔