اُڈپی میں سڑک پر گڈھوں کی وجہ سے گئی بیٹے کی جان۔ پولس نے دائر کیا باپ پر ہی بے پروائی سے ڈرائیونگ کا مقدمہ !

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 10th October 2017, 2:53 PM | ساحلی خبریں |

اڈپی 10؍اکتوبر (ایس او نیوز) دو اکتوبر کو پارکلا کے قریب نیشنل ہائی وے پر پڑے ہوئے گڈھوں کی وجہ سے پیش آنے والے ایک المناک حادثے میں 18مہینے کے بچے کی جان چلی گئی تھی۔

مگر عوام کو یہ جان کر حیرانی ہورہی ہے کہ منی پال پولیس نے ہلاک ہونے والے بچے کے باپ پر ہی بے پروائی سے گاڑی چلانے کے الزامات لگاتے ہوئے آئی پی سی کی دفعات 279, 337اور 304Aکے تحت مقدمہ دائر کردیا ہے۔

یاد رہے کہ دو اکتوبر کو یہ حادثہ اس وقت ہواتھا جب امیش اور پرمودا نامی میاں بیوی اپنے 18ماہ کے بچے چراغ کے ساتھ موٹر بائک پرپارکلا سے اٹارڈی کی طرف جارہے تھے۔بی ایم اسکول کے قریب سڑک کی بدحالی اور بڑے بڑے گڈھوں سے بچنے کی کوشش میں امیش کی بائک اسکِڈ ہوگئی اور وہ تینوں سڑک پر گر کر زخمی ہوگئے۔ اس کے بعد چھوٹا بچہ چراغ زخموں کی تاب نہ لاکر چل بسا جبکہ ماں اور باپ علاج کے بعد ٹھیک ہورہے ہیں۔

اس حادثے کے فواً بعدپرموداکے بھائی کرشنا پجاری نے سڑک کی بدحالی سے حادثات ہونے کی دلیل کے ساتھ نیشنل ہائی وے اتھاریٹی کوذمہ ٹھہرا تے ہوئے منی پال پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروائی تھی۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ اس نیشنل ہائی وے کی بدحالی کے خلاف مختلف تنظیموں اور سماجی خدمت گاروں نے کئی بار احتجاجی مظاہرے کیے ہیں اور متعلقہ محکمہ کی توجہ اس کی مرمت کی طرف مبذول کروانے کی کوشش کی تھی، جو اب تک ناکام رہی ہے۔

مگر اب تعجب خیز بات یہ ہے کہ پولیس نے ہائی وے کی بدحالی اور حکام کی بے توجہی کو حادثات کا ذمہ دار قرار دینے اور متاثرہ افراد کا ساتھ دینے کے بجائے حادثہ کا شکار ہونے والوں کوہی موردالزام  ٹھہرا کر ان پر مقدمہ دائر کرنے کا موقف اپنایا ہے۔

پولس کی اس کاروائی پر عوام میں سخت ناراضگی پائی جارہی ہے  کہ جو والدین حادثے اور اپنے معصوم کے کھوجانے کے صدمے اور پریشانی کا شکار ہیں پولیس نے انہی کو مزید ہراساں کرنے کا اقدام کیا ہے۔سوشیل میڈیا پر پولیس کے خلاف عوامی غصہ صاف جھلک رہا ہے۔اور پولیس کی نیک نیتی اور انصاف پسندی پر سوال اٹھائے جارہے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

اُترکنڑا کے مختلف علاقوں میں سنگھ پریوار کے کارکنوں کے ہنگاموں سے بھٹکل میں بھی تشویش کی لہر؛ کل بدھ کو بھٹکل بندکا اعلان؛ مرڈیشورکے ایک مکان پر پتھرائو

گذشتہ کچھ دنوں سے ضلع اُترکنڑا کے مختلف شہروں میں ہورہے سنگھ پریوار کے کارکنوں کے احتجاج کے نام پر  ہنگاموں کو دیکھتے ہوئے  شہر بھٹکل کے عوام میں بھی تشویش پائی جارہی ہے، ایسے میں وہاٹس ایپ پر کنڑا کا ایک مسیج تیزی کے ساتھ وائرل ہورہا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ کل بدھ کو بھٹکل، ...

ہوناور میں لاپتہ ہونے والا سرسی کا نوجوان زندہ سلامت مل گیا؛ چار روز تک پاگلوں کی طرح جنگل کی خاک چھانتا رہا

چار روز قبل جمعہ کے دن ہوناور کے ہاڈین بال میں شرپسندوں کے حملوں کے بعد لاپتہ ہونے والا سرسی کا نوجوان آج ہوناور کے جنگل میں زندہ سلامت مل گیا، جس کے ساتھ ہی اُن کے گھر پر رونق لوٹ آئی اور گھروالوں سمیت مقامی لوگوں نے اللہ کا شکر بجالیا۔

کیا ہوناور،کمٹہ اور کاروار کے وُکلا نے مسلم گرفتارشدگان کے معاملات کی پیروی نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے ؟

ہوناورمیں گذشتہ روز ایک نوجوان کی لاش قریبی تالاب سے برآمد ہونے کے بعدمسلمانوں کو اُس کے قتل کا ذمہ دار ٹہراتے ہوئے  نہ صرف ہوناور بلکہ کمٹہ اور ضلع کے دیگر علاقوں میں بھی مسلمانوں کے خلاف منظم سازش کے تحت فضا تیار کی جارہی ہے اور  غیر مسلمانوں کو مسلمانوں پر حملہ کرنے کے لئے ...

ہوناور اور کمٹہ کے بعد اب سرسی میں بی جے پی اور سنگھ پریوار کے کارکنوں کا ہنگامہ؛ مسجد اور دکانوں پر پتھرائو کے بعد پولس لاٹھی چارج

  بی جے پی اور سنگھ پریوار کے کارکنوں کی جانب سے ہوناور اور کمٹہ میں پریش میستا کی موت کو لے کر ہنگامہ کھڑا کرنے کے بعد آج سرسی میں بھی ان کارکنوں نے  توڑپھوڑ مچانے کی کوشش کی، جس کے دوران پولس نے لاٹھی چارج کرتے ہوئے  اُن کی کوششوں کو ناکام بنادیا۔