مظفر پور شیلٹر ہوم کیس کی میڈیا کوریج پر پابندی کے خلاف سپریم کورٹ میں 10ستمبرکو سماعت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 7th September 2018, 10:44 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،07؍ ستمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) پٹنہ ہائی کورٹ کے ذریعہ مظفر پور شیلٹر ہوم میں بچیوں کی عصمت دری کے معاملہ کی میڈیا کوریج پر روک لگانے کے حکم کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی گئی ہے۔ سپریم کورٹ اس درخواست پر جلد سماعت کے لئے راضی ہو گیا ہے۔ سپریم کورٹ اس درخواست پر 10 ستمبر کو سنوائی کرے گا۔آج اس درخواست کو چیف جسٹس دیپک مشرا کی سربراہی والی بینچ کے سامنے پیش کیا گیا اورجلد سماعت کا مطالبہ کیا گیا۔ اس پر عدالت نے 10 ستمبر کو سماعت کا حکم دیا۔ درخواست بہار کی صحافی نویدیتا جھا نے دائر کی ہے۔گذشتہ23 اگست کو پٹنہ ہائی کورٹ نے کیس کی میڈیا کوریج پر پابندی عائد کر دی تھی۔ نویدیتا جھا نے وکیل فوزیہ شکیل کے ذریعہ دائر درخواست میں کہا ہے کہ گذشتہ سال اپریل میں ٹاٹا انسٹی ٹیوٹ آف سوشل سائنسز کی رپورٹ میں شیلٹر ہوم میں بچیوں کے جنسی استحصال کا انکشاف کیا گیا تھا۔ جب اخبارات اور ٹی وی چینلز نے اس خبر کو خوب دکھایا تب پولس نے ایف آئی آر درج کر تحقیقات شروع کی ۔ مظفر پور شیلٹر ہوم معاملہ نے سیاسی کھلبلی مچا دی تھی۔ بہار حکومت کی ایک وزیر کو بھی استعفیٰ دینا پڑا تھا۔ سپریم کورٹ نے بھی اس معاملہ میں خود سے نوٹس لیا ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

پلوانہ حملہ سکیورٹی میں خامی کا نتیجہ ،کانگریس نے نشانے پرلیا

کانگریس کے راجیہ سبھا رکن اورسینئرترجمان ابھیشیک منو سنگھوی نے جموں وکشمیرکے پلوامہ میں پچھلے ہفتہ ہوئے دہشت گردانہ حملے کے تعلق سے وزیراعظم نریندرمودی کونشانہ بناتے ہوئے کہاکہ یہ واقعہ سکیورٹی میں خامی کا نتیجہ ہے۔

شارداچٹ فنڈ:سپریم کورٹ میں مغربی بنگال کے تین افسران کی موجودگی پر ہوگی سماعت

سپریم کورٹ نے مغربی بنگال کے چیف سکریٹری، پولیس ڈائریکٹر جنرل اور کولکاتہ کے پولیس کمشنر کو زاردا چٹ فنڈ کیس سے متعلق توہین کے معاملے میں ذاتی طور پر پیش ہونے کے بارے میں منگل کو کوئی حکم جاری نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔

ممبرا۔اورنگ آبادداعش معاملہ، چار ریمانڈ مکمل ہوجانے کے باجود اے ٹی ایس ملزمین کے خلاف پختہ ثبوت پیش نہیں کرسکا، ایڈوکیٹ خضر پٹیل

مہاراشٹر کے اورنگ آباد اور ممبئی سے قریب مسلم آبادی والے ممبرا سے گرفتا ۹؍ مسلم نوجوانوں کو گذشتہ کل اورنگ آباد کی خصوصی یو اے پی اے عدالت نے عدالتی تحویل میں دیئے جانے کے احکامات جاری کیئے