قومی سلامتی سے جڑے معاملے میں ہم عالمی عدالت کے فیصلے کو قبول نہیں کرتے

Source: S.O. News Service | Published on 18th May 2017, 11:55 PM | ملکی خبریں |

اسلام آباد،18مئی(ایس اونیوز/آئی این ایس انڈیا) ہندوستانی شہری کلبھوشن جادھو کی موت کی سزا پر بین الاقوامی عدالت(آئی سی جے) کی طرف سے روک لگائے جانے کے بعد پاکستان کے دفتر خارجہ نے آج کہا کہ اسلام آباد قومی سلامتی سے جڑے معاملے میں بین الاقوامی عدالت کے فیصلے کو نہیں قبول کرتا۔دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس زکریا نے ہندوستان پر برستے ہوئے کہا کہ وہ جادھو کا معاملہ بین الاقوامی عدالت(آئی سی جے) لے جاکر اپنا اصلی چہرہ چھپانے کی کوشش کر رہا ہے۔جادھو(46 سال) کو پاکستان کی ایک فوجی عدالت نے مارچ میں موت کی سزا سنائی تھی۔ اس فیصلے پر روک لگانے کی درخواست کرتے ہوئے ہندوستان نے آئی سی جے کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا۔ہیگ میں واقع بین الاقوامی عدالت نے جادھو کی موت کی سزا پر آج روک لگا دی اور پاکستان کو ہدایت کی کہ وہ اس بات کو یقینی بنانے کے لئے تمام ضروری اقدامات اٹھائے کہ اس (بین الاقوامی عدالت) کی طرف سے آخری فیصلہ سنائے جانے تک جادھو کو پھانسی نہ دی جائے۔فیصلہ آنے کے بعد پاکستان ٹیلی ویڑن سے بات چیت کرتے ہوئے زکریا نے کہا کہ جادھو کا معاملہ بین الاقوامی عدالت(آئی سی جے) لے جاکر ہندوستان اپنا اصلی چہرہ چھپانے کی کوشش کر رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ ہندوستان کو دنیا کے سامنے بے نقاب کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ جادھو نے ایک بار نہیں دو باراپنے جرائم کو تسلیم کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان پہلے ہی آئی سی جے کو مطلع کر چکا ہے کہ وہ قومی سلامتی سے جڑے معاملات میں انصاف علاقے کو قبول نہیں کرتا۔
 

ایک نظر اس پر بھی