ہمارے اتحاد سے بی جے پی میں بوکھلاہٹ ہے: مایاوتی

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 7th February 2019, 1:00 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی:5 /فروری (ایس اونیوز /آئی این ایس انڈیا) بی ایس پی سربراہ مایاوتی نے کہا ہے کہ بی جے پی اپنے انتخابی وعدوں کو پورانہ کر نہ کر پانے کی وجہ سے عوام کو گمراہ کرنے کے لیے ایس پی۔بی ایس پی اتحاد کو’کوس‘ رہی ہے اور اپوزیشن پارٹیوں کے لیڈروں کو بدنام کرنے کی سازش میں مصروف ہے۔ مایاوتی نے بدھ کو ایک بیان جاری کر بی جے پی صدر امت شاہ کی طرف علی گڑھ میں ایس پی۔بی ایس پی اتحاد کے بارے میں دیئے گئے بیان کے جواب میں یہ باتیں کہی۔ انہوں نے کہا کہ اگر بی جے پی اس اتحاد سے خوفزدہ نہیں ہے تو ان کی اعلیٰ قیادت ’کھسیانی بلی کھمبا نوچے‘ کی طرح برتاؤ کیوں کر رہی ہے۔ بیان کے مطابق بی جے پی صدر شاہ نے علی گڑھ میں ایک پروگرام کے دوران اتحاد کو ’’ڈھکوسلہ‘‘ بتایا ہے۔ اس پر مایاوتی نے کہا کہ اصل میں بی جے پی کی خوف ہے کہ بی ایس پی۔ایس پی اتحاد کی وجہ سے وہ یوپی میں بری طرح ہارنے والی ہے اور پھر مرکزی اقتدارسے بھی ہاتھ دھلنا پڑسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اسی بوکھلاہٹ میں بی جے پی کے لیڈرانمختلف ہتھکنڈے اپنا کر اس اتحاد کو بدنام کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ بی ایس پی سربراہ نے کہا کہ بی جے پی حکومت اپنے نام نہاد’وکاس‘ کے ایجنڈے کو مکمل طور پر بھلا کر اور اپنے انتخابی وعدوں سے لوگوں کی توجہ بھٹکانے کے لیے ہماری اتحادی پارٹی کو کوس رہی ہے اور ہر قسم کے ہتھکنڈے اپنا کر اپوزیشن کے رہنماؤں کو بدنام کرنے میں مصروف ہے 

ایک نظر اس پر بھی

لوک سبھا انتخابات 2019: مہاراشٹر کے سابق وزیر اعلی نارائن رانے کا دعوی، اکیلے لڑیں گے عام انتخابات

لوک سبھا انتخابات میں چند ماہ کا وقت رہ گیا ہے، اور اتحاد کا بننا۔ٹوٹنا اس وقت عروج پر ہے۔ایک طرف پورا اپوزیشن وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کی بھارتیہ جنتا پارٹی کے خلاف متحد ہونے کی کوششوں میں مصروف ہے،