فوجی اڈوں کی میزبانی کے لیے کئی ممالک تیار ہیں:ٹرمپ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th July 2017, 12:34 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

دبئی،16جولائی(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر قطر کی جانب سے دہشت گردی کی حمایت پر کڑی نکتہ چینی کی ہے اور کہا ہے کہ قطر میں امریکی فوجی اڈے کی موجودگی امریکا کی مجبوری نہیں۔ خطے کے کئی دوسرے ممالک اپنے ہاں امریکی فوجی اڈوں کے قیام کے لیے تیار ہیں۔امریکی ٹیلی ویژن CBN کو دیے گئے ایک انٹرویو میں ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ قطر دہشت گردوں کے مالی معاون کیطور پر مشہور ہے۔ اب وقت آگیا ہے کہ دوحہ دہشتگردی کی معاونت فوری طور پر روک دے۔ایک سوال کے جواب میں امریکی صدر کا کہنا تھا کہ ان کے ملک کے قطر کے ساتھ اچھے تعلقات قائم ہیں۔ قطر میں امریکی فوجی اڈے کی موجودگی پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگرامریکا مجبور ہوا تو دوحہ میں فوجی اڈا ختم کیا جاسکتا ہے۔ دسیوں ممالک اپنے ہاں امریکی فوجی اڈے کے قیام کے لیے تیار ہیں۔امریکی صدر کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں کا پیٹ بھرنے اور ان کی ضروریات پوری کرنے والے ممالک کو اپنی پالیسی بدلنا ہوگی۔ وحشی کو بھوکا رکھ کر اسے ختم کرنا ہوگا۔ دہشت گردی وحشت ہے اور اس کی مالی معاونت کا کوئی جواز نہیں۔قطر کے معاملے میں امریکی انتظامیہ کے درمیان پائے جانے والے اختلافات پر بات کرتے ہوئے صدر ٹرمپ نے کہا کہ دوحہ کے حوالے سے ان کے وزیرخارجہ ریکس ٹیلرسن کے ساتھ اختلافات معمولی نوعیت کے ہیں۔ تعبیر اور طریقہ کار پر معمولی اختلاف ہے جسے جلد ختم کردیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

ایرانیوں کا پیغام واضح ہے، وہ نظام کی تبدیلی چاہتے ہیں : شہزادہ رضا پہلوی

سابق شاہ ایران کے بیٹے شہزادہ رضا پہلوی نے ایران میں مظاہروں کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے باور کرایا ہے کہ ایرانی عوام 40 برس تک مذہبی آمریت کے نظام کے تحت زندگی گزارنے کے بعد اس بات پر قائل ہو چکے ہیں کہ اس نظام کی اصلاح ممکن نہیں۔

اب سو فیصد ڈیجیٹل حج؛ آن لائن اور ایپ کے ذریعے3.60 لاکھ درخواستیں موصول؛ سعودی میں مرکزی وزیر مختار عباس نقوی کا بیان

امسال سے حج سو فی صد  دیجٹل  ہوگا اور لوگوں کے ابآن لائن اور موبائل ایپ کے ذریعے درخواستیں موصول کئے جارہے ہیں، اب تک  آن لائن  اور موبائیل ایپ کے ذریعہ تین لاکھ  60 ہزار درخواستیں  حج کمیٹی کو موصول ہوچکی  ہیں۔  ہمارا حج کوٹہ پچھلے سال کی طرح امسال بھی پرایویٹ ٹور اپریٹرس ...

روہنگیا مہاجرین کی وطن واپسی دو سال میں ممکن 

میانمار میں سکیورٹی دستوں کے وحشیانہ سلوک اور قتل و غارت گری سے جان بچا کر بنگلہ د یش پناہ گزیں لاکھوں روہنگیا مہاجرین کی دو سال کے دوران وطن واپسی پر بنگلہ د یش اور میانمار حکام کے مابین اتفاق رائے ہو گیا ہے ۔