شراب خانہ میں موجود لڑکیوں پر حملہ کرنا کوئی غلط بات نہیں ۔مینگلور کے وی ایچ پی لیڈر شرن پمپ ویل کا بیان

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 11th May 2018, 1:05 AM | ساحلی خبریں |

منگلورو 10؍مئی (ایس او نیوز) وشواہندو پریشد منگلورو کے سکریٹری شرن پمپ ویل نے کہا ہے کہ پَب یعنی شراب خانہ میں رقص کرنے ، شراب نوشی وغیرہ میں ملوث نوجوان لڑکیوں پر اگر کوئی حملہ کرتا ہے تو و ہ ایک اچھا کام ہے۔وہ   ایک  نیوز پورٹل کے نمائندے کو انٹرویو دیتے ہوئےاپنے  خیالات کا اظہار کررہے تھے۔

مذکورہ ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق ماضی میں بجرنگ دل کے لیڈر کے طورپہنچان رکھنے والاشرن پمپ ویل فی الحال اسمبلی انتخابات کے پس منظر میں ساحلی علاقے میں بی جے پی کی تشہیری مہم میں مصروف ہے۔

منگلورو اور اس کے اطراف میں غیراخلاقی پولیس گیری کے تعلق سے شرن پمپ ویل نے اپنی حمایت ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ :’’ اگر کوئی سماج میں بیداری لانا چاہتا ہے اور اس ضمن میں مار پیٹ بھی کی جاتی ہے تو اس میں کوئی برائی نہیں ہے۔ ایک نوجوان لڑکی اگر پب میں جاتی ہے تو وہ وہاں پرڈرگس اور شراب استعمال کرتی ہے، رقص کرتی ہے۔ ایسے شراب خانوں  میں سیکس مافیا بھی موجودہے۔یہ سب دیکھنے کے بعد کیا ہمیں خاموش بیٹھنا چاہیے؟

منگلورو ایک اچھے کلچر والا شہر ہے۔ اس طرح کی حرکتوں پر روک لگانے کے لئے نوجوان سرگرم رہتے ہیں۔‘‘شرن پمپ ویل نے اپنی غیر اخلاقی پولیس گیری کے لئے استدلا ل پیش کرتے ہوئے کہا کہ شراب نوشی سے باز رکھنے کے لئے ٹی وی پر اشتہارات آتے ہیں۔اسی کو عملی شکل دینے کے لئے یہ کام(غیراخلاقی پولیس گیری) انجام دیاجاتا ہے۔ شرن پمپ ویل کے مطابق ساحلی کرناٹکا میں صرف ہندتووا کے حامی اور گؤ رکھشا کرنے والے ہندو امیدواروں کو انتخابات میں کامیابی دلانے کی نیت سے وی ایچ پی کی طرف سے بی جے پی کی حمایت میں مہم چلائی جارہی ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

یلاپور میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں اور تھرڈ پارٹی انشورنس پریمئم میں اضافہ کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں کے علاوہ موٹر گاڑیوں کے تھرڈ پارٹی انشورنس پریمئم میں اضافہ کے خلاف ٹرک ڈرائیور اور مالکان کی یونین کی جانب سے یلاپور ماگوڈ کراس پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرین نے نیشنل ہائی وے 63پر ٹائر جلاکر لاریوں کی ہڑتال کی۔

منگلورو:24مقدمات میں مطلوب اور قاتلانہ حملے کے ملزمین گرفتار

الال پولیس نے ایک نوجوان کے قتل کی کوشش کرنے والے محمد مصطفےٰ عرف سونو (21سال) کو گرفتار کرلیا ہے اس کے علاوہ محمد حنیف (30سال)نامی بدنام زمانہ مجرم کوبھی گرفتار کیاگیا ہے جس کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ وہ 24مجرمانہ معاملات میں پولیس کو مطلوب تھا۔