ڈاکٹر زاہد تماپوری این سی پی یو ایل (مرکزی کونسل برائے فروغ اردو) کے رکن نامزد ، گلبرگہ ، بنگلور ، تماپور ۔ شوراپور ، رام نگر اور دیگر مقامات کے محبان اردو کی جانب سے مبارک باد

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 9th December 2018, 1:20 AM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

بنگلور:8/دسمبر (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) ڈاکٹر زاہد تماپوری متوطن گلبرگہ حال مقیم بنگلور کو مرکزی وزارت برائے فروغ انسانی وسائل حکومت ہند کے محکمہ ہائیر ایجوکیشن کی تشکیل جدید میں تین سال کی مدت کے لئے اردو اسکالرس کے ذمرہ سے گورننگ کونسل کا رکن نامزد کیا گیا ہے ۔ ڈاکٹر زاہد تماپوری ریاست کرناٹک کے اردو اسکالرس میں شمار کئے جاتے ہیں ۔ انھوں نے گلبرگہ یونیورسٹی سے 1987میں قائد ملت نواب بہادر یار جنگ پر پی ایچ ڈی حاصل کی ہے۔ قائد ملت بہادر یادر جنگ ایم آئی ایم کے بانی اور اس کے پہلے صدر رہے ہیں ۔ اپنے مقالہ میں انھوں نے ''خطابت''کو فنون لطیفہ کی شاخ قرار دیا ہے۔ وہ اپنے اسکول ، کالج اور یونیورسٹی کے زمانہ سے ہی تقریری مقابلہ جات میں حصہ لے کر مسلسل انعامات حاصل کرتے رہے ہیں ۔ شوراپور پربھو کالج کے میرٹ اسٹوڈینٹ رہے ہیں ۔ 1995میں قائد ملت نواب بہادر یار جنگ کی طرز پر ڈاکٹر زاہد تماپوری نے شہر گلبرگہ میں درس اقبال ؒ کی محافل کا انعقاد کرکے اقبالیات کے میدان میں بر صغیر میں نئی تاریخ رقم کی ہے ۔یاد رہے کہ درس اقبال کے پہلے اجلاس کی صدارت قائد محترم قمر الاسلام صاحب مرحوم نے فرمائی تھی ۔ جس کا انعقاد فارن ہائی اسکول گلبرگہ کے وسیع و عریض ہال میں کیا گیا تھا اور بعد میں اس کے کئی اجلاس غالب ہال نیشنل کالج میں بھی منعقد کئے گئے تھے ۔ ڈاکٹر اہد تماپوری نے رحمت العالمین کے جلسہ سے قبل محترم قمر السلام صاحب اور قیصر محمود منیار مرحوم سابق رکن اسمبلی گلبرگہ کی نگرانی میں محترم سید غوث خاموشی مرحوم کی ہدایت پر اسلامک اسٹڈیز سرکل کے زیر اہتمام سیرت رسول ﷺ پر طلبا گلبرگہ کے لئے تقریری اور تحریریمقابلہ جات کا اہتمام کیا جن میں سینکڑوں طلبا اردو نے حصہ لیا ۔ ڈاکٹرزاہد تماپوری نے آل انڈیا ریڈیو اور دور درشن کے پروگراموں میں شرکت کرکے اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا ۔ اس کے علاوہ اسکولس ، کالجوں اور یونیورسٹی میں سیمینارس و سمپوزئیمسؤمیں کامیابی کے ساتھ حصہ لیا ۔ ڈاکٹر زاہد تماپوری کے رکن گورننگ کونسل فروغ اردو NCPULکی نامزدگی پر ان کے قریبی دوست خالد احمد تالی کوٹی اور ان کے فرزند بین الاقوامی شہرت یافتہ کیانسر کے مشہور سرجن ڈاکٹر ماجد احمد تالی کوٹی، نذیر استاد تماپوری ، سینئیر صحیفہ نگاران ایم اے حکیم شاکر، محبوب علی، کے علاوہ ان کے دوست احباب ، اہل تماپور و شوراپؤور ، یادگیر ، شاہپور،کولارشموگہ ، رام نگرم اور بنگلور نے بھی مبارک باد دی ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

چکبلاپور کے شڈلگٹہ میں کوہ نور ٹیپو تعلیم مائنارٹی ٹرسٹ کی جانب سے پلوامہ میں شہید فوجیوں کو خراج عقیدت؛ اہل خانہ کو پانچ کروڑ روپیہ معاوضہ دینے کا مطالبہ

22فروری بروزجمعہ کو کوہ نور ٹیپو تعلیم مائنارٹی ویلفئیر ٹرسٹ شڈلگٹہ کی زیر قیادت بعد نماز جمعہ ہزاروں مسلمانوں نے 14فروری کو کشمیر کے پلوامہ میں دہشت گردوں کا نشانہ بنے سی آر  پی ایف جوانوں کی شہادت کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے دہشت گردی کی سخت مذمت کی گئی ۔

شہیدوں کے گھر ’درد کے دریا کا سیلاب‘ تھا اور مودی دریا میں شوٹنگ کر رہے تھے: راہل گاندھی

کانگریس صدر راہل گاندھی نے پلوامہ دہشت گردانہ حملے والے دن وزیر اعظم نریندر مودی کے ایک چینل کے لئے فلم کی شوٹنگ کرنے سے متعلق خبروں کو لے کر جمعہ کو ان پر حملہ بولا اور الزام لگایا کہ جب شہیدوں کے گھر دردکے دریا کا سیلاب تھا تو پرائم ٹائم منسٹر 'ہنستے ہوئے دریا میں شوٹنگ کر رہے ...

عظیم اتحادملک کے لیے اچھانہیں،اپوزیشن کے پاس کوئی نظریہ اورکوئی لیڈرنہیں ہے، امت شاہ کوپھرمہاگٹھ بندھن سے شکایت،کانگریس اورلیفٹ کونشانہ بنایا

جھک کرلوجپا،شیوسینا،جدیواورڈی ایم کے کے ساتھ اتحادکرنے والی بی جے پی صدر امت شاہ نے جمعہ کو اپوزیشن پارٹیوں کے مجوزہ مہاگٹھ بندھن پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ملک کے لیے اچھا نہیں ہے۔

بہار کے سابق وزیرالیاس حسین کو 22 سال پرانے کول تار گھوٹالے میں 5 سال کی سزا

مرکزی تفتیشی بیورو(سی بی آئی) کی خصوصی عدالت نے جمعہ کو کول تار گھوٹالے میں بہارکے سابق وزیرالیاس حسین اورچاردیگر کو پانچ سال قید کی سزا سنائی اور ایک ٹھیکیدار کو اس معاملے میں سات سال کی سزا سنائی۔