عہدۂ وزارت کے تئیں عدم اطمینان نہیں ہے: سدارمیا 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th June 2018, 11:13 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو12جون (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا ) کرناٹک کے سابق وزیر اعلی سدارمیا نے آج کہا کہ وزیر کے عہدے نہیں ملنے کو لے کر کانگریس کے اندر کوئی اختلاف رائے نہیں ہے اور یقین ظاہر کیا کہ پارٹی کا کوئی بھی رکن اسمبلی بی جے پی سے ہاتھ نہیں ملائے گا۔ کانگریس ۔ جے ڈی ایس مخلوط حکومت کے پانچ سال مکمل کرنے کے خواہاں کانگریس پارٹی اراکین کے لیڈر سدارمیا نے کہاکہ ایسا کوئی نہیں ہے جو غیر مطمئن ہو۔ اب تمام لوگ مطمئن ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے ایم بی پاٹل سمیت وزیر نہیں بننے سے مبینہ طور پر ناخوش ہر شخص (ایم ایل اے) سے بات کی ہے اوربی جے پی ممبران اسمبلی کو لالچ دینے کی کتنی ہی کوشش کیوں نہ کر لیں، کوئی (اس کے ساتھ) نہیں جائے گا۔دراصل چھ جون کی کابینہ توسیع میں جگہ نہیں ملنے سے نو منتخب کانگریس ممبران اسمبلی کے درمیان عدم اطمینان بڑھ رہا تھا۔ کچھ نے کھل کر عدم اطمینان ظاہر کیا تھا اور علیحدہ ملاقاتیں کی تھی۔ لیکن گزشتہ دو دنوں میں انہیں کام کرنے کی پارٹی قیادت کی کوشش رنگ لائی ہے اور ماحول پرسکون ہوا۔ صوبہ بی جے پی صدر بی ایس یدی یورپا کے اس بیان پر کہ بہت کانگریس لیڈر ان کی پارٹی میں شامل ہونے کے لیے خواہش مند ہیں اس کے جواب میں سدارمیا نے کہا کہ انہیں خود ہی پتہ نہیں ہے کہ وہ کیا بول رہے ہیں۔ مخلوط حکومت کی رابطہ کمیٹی کے سربراہ نے کہا کہ ایجنڈا اب تک تیار نہیں ہوا ہے نئے ریاستی کانگریس صدر کے موضوع پر سابق وزیر اعلی نے کہا کہ انہوں نے اس سلسلے میں راہل گاندھی سے بات نہیں کی ہے، یہاں کام مکمل کرنے کے بعد وہ اس سلسلے میں نئی دہلی جائیں گے۔انتظامی نظام میں وسیع پیمانے پر بدعنوانی ہونے کے وزیر اعلی کمار سوامی کے بیان پر سدارمیانے کہا کہ مجھے پتہ نہیں کہ انہوں نے کہاں بدعنوانی د یکھی ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

پرجول ریونا کی سدرامیا اور پرمیشور سے ملاقات، ہاسن حلقے میں انتخابی مہم چلانے دونوں قائدین سے گزارش

ہاسن پارلیمانی حلقے سے جے ڈی ایس امیدوار اور سابق وزیراعظم ایچ ڈی دیوے گوڈا کے پوتے پرجول ریونا نے آج شہر میں سابق وزیراعلیٰ اور حکمران اتحاد کے چیرمین سدرامیا سے ملاقات کی اور ہاسن پارلیمانی حلقے میں ان کے لئے انتخابی مہم چلانے کی گزارش کی۔