مرکزی وزیر نتن گڈکری نے کہا، میں نے مودی جی اور 15 لاکھ کو لے کر کچھ بھی نہیں کہا، یہ جھوٹ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th October 2018, 9:36 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی ،10؍ اکتوبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) سوشل میڈیا پر مبینہ طور پر ایک ویڈیو وائرل ہے، جس میں یہ کہا جا رہا ہے کہ مرکزی وزیر نتن گڈکری یہ مان رہے ہیں کہ ان کی مودی حکومت نے اقتدار میں آنے کے لیے جھوٹے وعدے کیے، مگراب اس پر بی جے پی لیڈر اور مرکزی وزیر نتن گڈکری نے خود بیان دیا ہے۔وائرل ویڈیو اور وعدوں کو لے کر اپنے بیان پر نتن گڈکری کا کہنا ہے کہ یہ مکمل طور پربے بنیاد اورجھوٹ ہے۔انہوں نے ایسا کچھ بھی نہیں کہا ۔بتا دیں کہ کانگریس نے حال ہی میں ایک ویڈیو کو شیئر کرتے ہوئے لکھا تھا کہ مرکزی وزیر نتن گڈکری کو اس بات سے متفق ہوتے ہوئے دیکھ کر اچھا لگ رہا ہے کہ مودی حکومت جھوٹے وعدوں اور جملوں کی بنیاد پر کھڑی ہوئی ہے۔2014 انتخابات میں بی جے پی کے وعدوں سے متعلق میڈیا میں اپنے مبینہ بیان لے کر مرکزی وزیر نتن گڈکری نے بدھ کو کہا کہ یہ جھوٹ ہے۔میں نے مودی جی اور 15 لاکھ روپے کو لے کر ایسا کچھ بھی نہیں کہا ہے۔پروگرام مراٹھی میں تھا اور میں حیران ہوں کہ راہل گاندھی کب سے مراٹھی سمجھنے لگے؟نتن گڈکری نے مزید کہا کہ میرے وعدے کو لے کر کبھی کسی نے نہیں سوال کیا۔مہاراشٹر میں الیکشن کے وقت منڈے جی اور دیویندر جی نے کہا کہ ٹول ٹیکس معاف کر دو،ایسابول دیجیے۔میں نے کہا ایسا نہیں کرنا چاہئے، نقصان ہوگا تو وہ لوگ بولے ارے ہم لوگ اقتدار میں کہاں آنے والے ہیں۔اس وقت کسی حکومت کی بات نہیں تھی، مودی جی کی بات نہیں تھی۔15 لاکھ کی بات نہیں تھی۔دیویندر جی نے بعد میں ٹول معاف بھی کیا۔راہل جی سے درخواست ہے مراٹھی سیکھیں اورسمجھنا شروع کریں تاکہ آگے سے ایسی غلطی نہ ہو۔

ایک نظر اس پر بھی

مودی ،خواتین کے حامی یا اکبرکے طرفدار؟ جنسی استحصال کے الزام کے خلاف مقدمہ درج کرانے پر کانگریس نے وزیراعظم کو گھیرا

کانگریس نے وزیر مملکت برائے امور خارجہ ایم جے اکبر پر لگنے والے جنسی استحصال کے الزامات کو انتہائی سنگین قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ملک کی خواتین کے احترام کا معاملہ ہے اور وزیر اعظم نریندر مودی کو اس پر خاموشی توڑکر اپنا رخ واضح کرناچاہیے۔

دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لئے ہنگامی منصوبہ لاگو

دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لئے ایک ہنگامی منصوبہ پیر کو لاگو کیا گیا ہے جس میں مشینوں سے سڑکوں کی صفائی اور اس علاقے کے بھیڑ بھاڑ والے علاقوں میں گاڑیوں کے ہموار ٹریفک کے لئے ٹریفک پولیس کی تعیناتی جیسے اقدامات شامل ہوں گے۔