کانگریس اراکین اسمبلی کی بی جے پی میں شمولیت محض افواہ: پرمیشور

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th September 2018, 12:17 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،11؍ستمبر(ایس او نیوز) نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور نے کہا ہے کہ ریاستی وزیر رمیش جارکی ہولی اور ان کے بڑے بھائی ستیش جارکی ہولی اور ان کے حامی اراکین اسمبلی کسی بھی حال میں کانگریس چھوڑ کر کسی بھی حال میں بی جے پی میں شامل نہیں ہوں گے۔

ریاستی حکومت کے گرنے کے متعلق بی جے پی کے دعوؤں کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ مخلوط حکومت کے استحکام کو کسی طرح کا کوئی خطرہ لاحق نہیں ہے۔ انہوں نے کہاکہ ریاست میں کمار سوامی حکومت کمزور نہیں بلکہ آنے والے دنوں میں اور بھی زیادہ مستحکم ہوجائے گی۔ انہوں نے کہاکہ آج صبح کے پی سی سی صدر دنیش گنڈو راؤ نے رمیش جارکی ہولی سے تفصیلی بات چیت کی ہے، اس بات چیت کے دوران رمیش جارکی ہولی نے واضح کیا ہے کہ ریاستی حکومت سے ان کی کوئی ناراضی نہیں ہے، مقامی سطح پر جو مسائل ہیں ان کو پارٹی کی طرف سے جلد از جلد سلجھالیا جائے گا۔ اس سوال پر کہ آخر جارکی ہولی برادران کی ناراضی کا سبب کیا ہے؟

نائب وزیر اعلیٰ نے کہاکہ چند ایسے امور ہیں جن کو ظاہر نہیں کیا جاسکتا۔ بلگاوی کی سیاست میں وزیر آبی وسائل ڈی کے شیوکمار کی مداخلت کے متعلق سوال پر نائب وزیراعلیٰ نے کہا کہ جارکی ہولی نے ان سے ایسی کوئی شکایت نہیں کی ہے اگر ایسی کوئی بات سامنے آتی ہے تو تمام قائدین کو اعتماد میں لے کر مناسب راستہ نکالا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ بی جے پی کی طرف سے ہر دن اس حکومت کے استحکام کے متعلق ایک نیا بیان دیا جارہاہے۔ کہا جارہا ہے کہ رمیش جارکی ہولی کے ساتھ 20 اراکین اسمبلی کانگریس چھوڑ کر جانے والے ہیں ان دعوؤں میں کوئی سچائی نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ رمیش جارکی ہولی سے خود انہوں نے بات کی ہے اس بات چیت کے دوران رمیش نے واضح کیا ہے کہ وہ کانگریس پارٹی چھوڑنے والے نہیں ہیں۔ بی جے پی کے اس الزام پر کہ کل کانگریس کی آواز پرمنائے گئے بھارت بند کے دوران دکانوں کو زبردستی بند کرانے کے لئے پولیس فورس کا استعمال کیا گیا ۔ ڈاکٹر پرمیشور نے اس الزام کی تردید کرتے ہوئے کہاکہ جہاں بھی نظم وضبط کا مسئلہ پیدا ہوا ہے وہاں پولیس نے مداخلت کی ہے۔ دکانوں کو بند کرانے کے لئے پولیس کی طرف سے کوئی ہراسانی نہیں کی گئی۔ انہوں نے کہاکہ بی جے پی کی طرف سے لگائے گئے الزامات سیاسی بدنیتی پر مبنی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مرکزی حکومت کی طرف سے پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافے کے خلاف پورے ملک میں کامیاب بند منایا گیا۔ اس سے بی جے پی بوکھلاگئی ہے۔ ریاستی بی جے پی نے بھی اسی بوکھلاہٹ میں حکومت پر الزامات عائد کئے ہیں۔ 

ایک نظر اس پر بھی

کاروار کائیگا جوہری توانی پلانٹ کا توسیعی منصوبہ۔ ماحولیات کے لئے فکر مند افراد کا احتجاج

ابھی دو تین دن ہی ہوئے ہیں جب کاروار میں واقع کائیگا جوہری توانائی کے مرکز میں موجود یونٹ نمبر 1میں مسلسل 941دنوں تک یورینیم کے بھاری پانی سے بجلی پیدا کرنے کا عالمی ریکارڈ قائم کیا گیا تھا۔ اس ریکارڈ سے دیسی ساخت کے اس پلانٹ کی بہترین اہلیت اور صلاحیت کا مظاہرہ ہواتھا۔

منشیات کے استعمال ،سڑکو ں پر تحفظ اور ماحولیاتی آلودگی سے متعلق بیداری کے لئے بزرگ سائیکل سوار کی مہم؛ بھٹکل میں ایک دن رکنے کے بعد گوا کے لئے روانگی

سڑکو ں پر تحفظ ، منشیات کے استعمال اور ماحولیاتی آلودگی سے متعلق عوام میں بیداری پیدا کرنے کے لئے اڑیسہ کے ایک بزرگ نے سائیکل پرسوارہو کر ملک کی 10 ریاستوں کا سفرکرنے کی مہم چلارکھی ہے۔ 

منگلورو: کانگریس ایم ایل اے کی آر ایس ایس لیڈروں کے ساتھ موجودگی ۔آپریشن کنول کا اشارہ تو نہیں!

ریاست کرناٹک کے مختلف علاقوں میں بی جے پی کی طرف سے آپریشن کنول کا راستہ اپنانے اور کانگریس و جنتادل ایس کی مخلوط حکومت کو گرانے کی سازشیں رچنے کی خبریں وقتاً فوقتاً سر اٹھاتی رہتی ہیں۔ اب تازہ ہوا منگلورو کے قریب کلاڈکا سے چلی ہے جہاں پر آر ایس ایس لیڈر کلاڈکا پربھاکر بھٹ کے ...

کاروار: کائیکا اٹامک پاور اسٹیشن نے مسلسل بجلی تیار کرنے کا ورلڈ ریکارڈ قائم کیا۔ وزیر اعظم مودی نے عملے کو دی مبارکباد

) کائیگا اٹامک پاوراسٹیشن(کے اے پی ایس)میں جوچار یونٹس بجلی تیار کررہے ہیں ان میں سے یونٹ نمبر1نے مسلسل 941 دنوں تک یورینیم کے بھاری پانی(ہیوی واٹر) سے بجلی تیار کرنے کا ورلڈ ریکارڈ بنایا ہے ، جس پر ملک کے وزیر اعظم نریندرمودی نے ہندوستان کے جوہری توانائی پروگرام پر کام کررہے ...