کاروار: گوا حکومت کے نئے قانون سے کرناٹک کے مچھلیوں کے تاجر پھنس گئے مشکل میں

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 28th October 2018, 3:36 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

کاروار28؍اکتوبر (ایس اونیوز)پڑوسی ریاست گوا میں مچھلیوں کے کاروبار کے لئے نیا قانون لاگو کیا گیا ہے جس کے تحت مچھلی کے تاجروں کو فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے) کے پاس اپنا رجسٹریشن کروانا لازمی ہے۔

اس کا سیدھا اثر کرناٹکا سے گوا کے لئے مچھلیاں سپلائی کرنے والے کاروباریوں پر پڑا ہے۔ جس کا مظاہرہ سنیچر کی رات کو کرناٹکا گوا سرحد پر موجود چیک پوسٹ پرتفتیش کے لئے روکی گئی مچھلی سے بھری ہوئی گاڑیوں لمبی قطار کی شکل میں دیکھنے کوملا۔اڈپی، منگلورو، ملپے اور ساحلی پٹی کے دیگر علاقوں سے مچھلیاں بھر کر نکلی ہوئی پچاس سے زیادہ گاڑیاں چیک پوسٹ پر ہی کئی گھنٹوں تک روک لی گئی تھیں۔مچھلیاں سپلائی کرنے کے لئے ضروری اجازت نامے، گاڑیوں کے دستاویز، مچھلیاں بھرکر لے جانے کے لئے گاڑیوں کے اندر ضروری انتظامات وغیرہ کا تفصیلی معائنہ کیا گیا۔ جس کی وجہ سے آدھی رات سے دوسرے دن دوپہر تک مچھلی بھری گاڑیوں کو چیک پوسٹ پر ہی انتظار میں رکے رہنا پڑا۔ بتایاجاتا ہے کہ بعض گاڑیوں میں فریزر کا مناسب بندوبست تھا، ان گاڑیوں کو گوا میں داخل ہونے کی اجازت دی گئی۔مگر قانونی پیچیدگیوں کی وجہ سے بہت سی گاڑیوں کے ڈرائیوروں کو گوا کی سرحد پر بھاگ دوڑ کرتے ہوئے دیکھاگیا۔

خیال رہے کہ گوا کے وزیر صحت وشواجیت رانے نے جمعرات کے دن پریس کانفرنس کرکے بتایا تھاکہ فارمولین استعمال کرنے کی وجہ سے بیرونی ریاست سے آنے والی مچھلیوں پر پابندی تو نہیں لگائی جارہی ہے،لیکن مچھلیوں کے کاروباریوں کو ایف ڈی اے میں رجسٹریشن کروانا لازمی ہوگا۔ اس کے لئے 15دن کی مہلت دی جائے گی۔ادھر گوا کے ایک دوسرے بہت ہی بااثر وزیر وجئے سردیسائی نے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ بیرونی ریاست سے آنے والی مچھلیوں پر گوا میں لازمی طور پر پابندی لگائی جانی چاہیے۔اب ان دونوں وزیروں کے بیچ چل رہے سنگرام کااثر کس انداز میں بیرونی ریاست کے مچھلی تاجروں کو بھگتنا پڑے گا یہ آنے والے دنوں میں واضح ہوگا۔

ایف ڈی اے میں رجسٹریشن کے اس نئے قانون کا پہلا اثر تو یہ ہواہے کہ گوا میں بیرونی ریاست سے مچھلیوں کی سپلائی رک گئی ہے اورگوا کی مارکیٹ میں مچھلیوں کی قلت شروع ہوگئی ہے۔اس سے گوا کے ٹورازم انڈسٹری پربھی کافی منفی اثر پڑنے والا ہے۔دوسری طرف قانون لاگو ہونے میں ابھی 15دنوں کی مہلت رہنے کے باوجود گوا پولیس کی طرف سے چیک پوسٹ پر گاڑیوں کی تلاشی او رمعائنے کے نام پوری پوری رات روکے رہنے سے مچھلیاں سڑنے لگی ہیں او ر اس سے تاجروں کا بھاری نقصان برداشت کرنا پڑ رہا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

لوک سبھا انتخابات؛ اُترکنڑا میں کیا آنند، آننت کو پچھاڑ پائیں گے ؟ نامدھاری، اقلیت، مراٹھا اور پچھڑی ذات کے ووٹ نہایت فیصلہ کن

اُترکنڑا میں لوک سبھا انتخابات  کے دن جیسے جیسے قریب آتے جارہے ہیں   نامدھاری، مراٹھا، پچھڑی ذات  اور اقلیت ایک دوسرے کے قریب تر آنے کے آثار نظر آرہے ہیں،  اگر ایسا ہوا تو  اس بار کے انتخابات  نہایت فیصلہ کن ثابت ہوسکتےہیں بشرطیکہ اقلیتی ووٹرس  پورے جوش و خروش کے ساتھ  ...

بھٹکل میں بی کے ہری پرساد کا بی جے پی اور مودی پر راست حملہ، کہا؛ پسماندہ طبقات کومزید کمزور کرنے کی سازش رچی جارہی ہے

بی جے پی بھلے ہی اپنے آپ کو اقلیت مخالف پارٹی کے طور پر پیش کرتی ہو، مگر  دیکھا جائے تو یہ پارٹی حقیقتاً پسماندہ طبقات، دلت اور ادیواسیوں کو  مزید  کمزور کرنے کی سازش میں لگی ہوئی ہے اور صرف ایک طبقہ کو برسراقتدار پر لانے میں کوشاں ہے۔ یہ بات  آل انڈیا کانگریس کمیٹی (اے آئی ...

اگر آپ عزت دار ماہی گیر ہیں تو آننت کمار ہیگڈے کو ہرگز ووٹ نہ دیں؛ بھٹکل میں ماہی گیروں سے پرمود مدھوراج کی اپیل

اگر آپ عزت دار ماہی گیر ہیں تو  آپ کو چاہئے کہ  ماہی گیروں کی پرواہ نہ کرنے والے بی جے پی اُمیدوار آننت کمار ہیگڈے  کو ہرگز ووٹ  نہ دیں۔ ملپے سے نکلی سات ماہی گیروں پر مشتمل بوٹ لاپتہ ہوکر  پانچ ماہ ہوچکے ہیں مگر مرکزی وزیر آننت کمار ہیگڈے کو ماہی گیروں کی پرواہ ہی نہیں ہے۔ ...

منگلورو میں ایک عجیب سانحہ۔بوتھ کے آخری ووٹر نے ووٹ دینے کے بعد لی آخری سانس

پاجیرو گاؤں کے پانیلا میں ایک شخص نے پولنگ بوتھ میں اپنا ووٹ ڈالنے کے بعد گھر لوٹتے ہی دم توڑ دیا۔پانیلا کے رہنے والے والٹر ڈیسوزا(۴۰سال) گردے کی بیماری میں مبتلا تھاجس کے لئے وہ بہت عرصے سے زیرعلاج تھا۔

محمد محس کی معطلی کا معاملہ طول پکڑ گیا، الیکشن کمیشن کے سکریٹری کے خلاف شہر میں مجرمانہ شکایت درج

وزیراعظم مودی کے ہیلی کاپٹر کی تلاشی کو لے کر اپنی فرض شناسی کا ثبوت پیش کرنے والے کرناٹک کیڈر کے آئی اے ایس افسر محمد محسن کی غیر ضروری معطلی نے خود الیکشن کمیشن کوگھیرے میں لے لیاہے ۔ محمد محسن پر ہوئی زیادتی کے خلاف آواز اٹھاتے ہوئے بنگلور جنادھیکار سنگھرش پریشد نے الیکشن ...

بھٹکل میں بی کے ہری پرساد کا بی جے پی اور مودی پر راست حملہ، کہا؛ پسماندہ طبقات کومزید کمزور کرنے کی سازش رچی جارہی ہے

بی جے پی بھلے ہی اپنے آپ کو اقلیت مخالف پارٹی کے طور پر پیش کرتی ہو، مگر  دیکھا جائے تو یہ پارٹی حقیقتاً پسماندہ طبقات، دلت اور ادیواسیوں کو  مزید  کمزور کرنے کی سازش میں لگی ہوئی ہے اور صرف ایک طبقہ کو برسراقتدار پر لانے میں کوشاں ہے۔ یہ بات  آل انڈیا کانگریس کمیٹی (اے آئی ...

پارلیمینٹ گلبرگہ کے مسلمانوں سے کھڑگے کے حق میں قیمتی ووٹ دینے ڈاکٹر اصغر چلبل کی اپیل 

ڈاکٹراصغرچلبل سابق صدر گلبرگہ اربن ڈیولوپمینٹ اتھارٹی نے ایک صحافتی بیان میں کہا ہے کہ ملک کے موجودہ پارلیمانی انتخابات نہایت اہمیت کے حامل ہیں ۔2019کے پارلیمانی انتخابات مسلمانوں کے لئے آر پار کی لڑائی کی طرح سمجھے جارہے ہیں ۔پچھلے پانچ سالوں میں بی جے پی سرکار میں دلتوں ، ...

سدارامیا کے دوبارہ وزیراعلیٰ بننے میں غلط کیا ہے؟ کس کے نصیب میں کیا لکھا ہے کوئی نہیں جانتا : کمار سوامی

سدارامیا کے دوبارہ وزیر اعلیٰ بننے میں غلط کیا ہے ؟ اس قسم کا چونکانے والا بیان ریاستی وزیر اعلیٰ کمار سوامی نے دیا ہے ۔ ضلع کے مدے بہال تعلقہ میں اخباری نمائندوں سے انہوں نے کہا کہ کس کے نصیب میں کیا لکھا ہے ، کسی کو معلوم نہیں ہے ۔

لوک سبھا انتخابات: اُترکنڑا ڈپٹی کمشنر نے کمٹہ اوربھٹکل میں پارلیمانی انتخابات کی تیاریوں کا لیا جائزہ

ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر ہریش کمار نے ضلع شمالی کینرا کے حلقے میں واقع کمٹہ اور بھٹکل شہروں میں پارلیمانی الیکشن کے لئے انتظامیہ کی طرف سے کی گئی حتمی تیاریوں کا معائنہ کیا۔

دو مراحل میں ایس پی۔بی ایس پی اور کانگریس ’ صفر‘: یوگی

اتر پردیش کے وزیر یوگی آدتیہ ناتھ نے جمعہ کو کہا کہ لوک سبھا انتخابات کے لئے ووٹنگ کے اختتام پذیر ہو چکے دو مراحل میں ایس پی، بی ایس پی اور کانگریس ’ صفر‘ رہی ہیں۔ یوگی نے سنبھل میں ایک جلسہ عام میں کہا کہ ووٹنگ کے دو مرحلے ہو چکے ہیں۔ بی جے پی کو سب سے زیادہ ووٹ ملے ہیں۔ انہوں نے ...

لوک سبھا انتخابات: کیا اُترکنڑا میں انکم ٹیکس کے مزید چھاپے پڑنے والے ہیں؟

پارلیمانی الیکشن کے پس منظر میں محکمہ انکم ٹیکس اور انتخابی نگراں اسکواڈ کی طرف سے مختلف ٹھکانوں پر جو چھاپے مارے جارہے ہیں، اس تعلق سے خبر ملی ہے کہ ضلع شمالی کینرا میں مزیدکئی سیاسی لیڈروں اورتاجروں کے ٹھکانوں پر چھاپے پڑنے والے ہیں۔