نئے لوک آیوکتہ کے تقرر پر اعلیٰ سطحی میٹنگ میں اتفاق نہ ہوسکا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th January 2017, 11:41 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،9؍جنوری(ایس او نیوز) ریاست کے نئے لوک آیوکتہ کے تقرر کے سلسلے میں آج وزیراعلیٰ سدرامیا کی صدارت میں اعلیٰ اختیاری کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا، جس میں کسی جج کے نام پر اتفاق نہیں ہوسکا۔ رشوت ستانی کے الزامات کے بعد اس عہدہ سے جسٹس بھاسکر راؤ کے استعفیٰ کے بعد سے اب تک ریاستی حکومت نے انسانی حقوق کمیشن کے سابق چیرمین جسٹس ایس آر نائک کو لوک آیوکتہ بنانے کی دو مرتبہ کوشش کی ،لیکن گورنر نے اسے منظور نہیں کیا۔ آج منعقدہ اعلیٰ اختیاری کمیٹی میٹنگ میں لوک آیوکتہ کے عہدہ کیلئے جسٹس گوپال گوڈا، جسٹس ایس آر نائک ، جسٹس بی وشواناتھ شٹی اور جسٹس این کمار کے نام پیش کئے گئے۔ وزیر اعلیٰ سدرامیا کی صدارت میں ہوئی میٹنگ میں ریاستی ہائی کورٹ کے چیف جسٹس ایس کے مکھرجی ، اسمبلی اسپیکر کے بی کولیواڈ، کونسل چیرمین شنکر مورتی، وزیر قانون ٹی بی جئے چندرا، اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر جگدیش شٹر ، کونسل کے اپوزیشن لیڈر ایشورپا اور دیگر نے شرکت کی۔ چونکہ گورنر نے جسٹس ایس آر نائک کے نام کو دو مرتبہ منظوری کے بغیر لوٹادیا ، بی جے پی لیڈران نے حکومت کو مشورہ دیا کہ دوبارہ وہ جسٹس نائک کے تقرر پر زور نہ دے، لیکن حکومت کی طرف سے یہی کوشش ہورہی ہے کہ دوبارہ ایس آر نائک کا نام تجویز کیا جائے۔ ان کے علاوہ جسٹس وشواناتھ شٹی ، این کمار اور جسٹس گوپال گوڈا کے ناموں پر تفصیلی تبادلۂ خیال کیاگیا۔ جسٹس وشواناتھ شٹی کے نام پر سماجی کارکن ایس آر ہیرے مٹھ نے اعتراض کیا اور کہا کہ وہ وزیر توانائی ڈی کے شیوکمار کے وکیل ہیں اور ساتھ ہی ان پر جعلی حلف نامہ دے کر سائٹ حاصل کرنے کا الزام ہے۔ اسی لئے انہیں لوک آیوکتہ بنایا نہیں جانا چاہئے۔پچھلے ایک سال سے ریاست میں لوک آیوکتہ کا عہدہ خالی پڑا ہوا ہے۔موزوں امیدوار نہ ہونے کے نتیجہ میں ایسی صورتحال پیدا ہوئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس کارکنوں کو انتخابات کیلئے مستعد رہنے کرناٹکا کے وزیراعلیٰ سدرامیا کی تاکید

ریاستی حکومت پچھلے چار سال کے دوران ریاست کی ترقی کیلئے جو کچھ کام کرچکی ہے اور آنے والے دنوں میں جو مکمل کرنا چاہتی ہے انہی کو بنیاد بناکر آنے والے اسمبلی انتخابات کا سامنا کرنے کیلئے کانگریس کارکن مستعد ہوجائیں۔ یہ بات آج وزیر اعلیٰ سدرامیا نے کرناٹک پردیش کانگریس کمیٹی کے ...

بنگلورو میں میٹرو اسٹیشن پر ہندی بورڈس نصب کرنے کی کنڑا نواز تنظیموں نے کی شدید مخالفت

جانب جہاں بی جے پی اور کانگریس ہندی کو راشٹریہ بھاشا کے طور پر پورے ملک کی زبان مانتی ہیں ، وہیں جنوبی ہندوستان میں آزادی کے کے بعد سے وہاں کی عوام نے اپنی اپنی مقامی زبانوں کو بول چال اور کام کاج کے استعمال میں ترجیح دی ہوئی ہے ۔

چکمگلورو میں بھاری بارش، درخت گرنے سے ایک خاتون ہلاک، دیہی علاقوں میں بجلی کی فراہمی متاثر، اسکولوں اورکالجوں میں چھٹی

ساحلی علاقے کی طرح چکمگلورو ضلع میں بھی گزشتہ چار دنوں سے مسلسل موسلادھار بارش ہونے کی وجہ سے عام زندگی کے معمولات متاثر ہونے کی خبریں ملی ہیں۔ موصولہ تفصیل کے مطابق کلسا نامی مقام پر ایک بڑا درخت اپنی جڑوں سے اکھڑ کر گرگیا جس کی زد میں آنے والی بھاگیہ (۳۳سال) ہلاک ہوگئی ...

ریاست کرناٹک میں طلباء کو مفت لیپ ٹاپ، زرعی پیداوار کے لئے130کروڑ روپئے مختص،130سرکاری اسپتالوں میں آئی سی یو، ریاستی کابینہ کا فیصلہ

رواں تعلیمی سال کے دوران سرکاری اور امدادی میڈیکل ،انجینئرنگ، ڈگری اور پالی ٹکنک کالجوں میں داخلہ حاصل کرنے والے تمام طبقات کے طلباء جن کے کنبہ کی سالانہ آمدنی ڈھائی لاکھ روپئے سے کم ہے ایسے تمام طلباء کو حکومت کرناٹک کی جانب سے مفت لیپ ٹاپ فراہم کرنے کا ریاستی کابینہ نے آج ...

گلبرگہ میں تین افراد کے قاتل 5ملزمین گرفتار

سیڑم پولیس نے ایک ہی خاندان کے تین افراد کا قتل کرنے والے پانچ ملزین کو گرفتار کرنے میں کامیابی حاصل کرلی ہے۔ یہ قتل 17جولائی کو سیڑم کے موضع مگنور کی اراضی کے تنازعہ کے ضمن میں ہوئے تھے۔