آرایس ایس کوآرٹیکل 370یادآیا،لیکن دفعہ کی حمایتی پی ڈی پی کے ساتھ سرکار؟

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th January 2018, 10:57 AM | ملکی خبریں |

جے پور، 13جنوری(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)آر ایس ایس نے ایک بار پھر ہندوستانی آئین کے آرٹیکل 370کو ہٹانے کا مطالبہ کیا ہے۔مکہ مسجد اورمالیگاؤں بم دھماکے کے ملزم اور آر ایس ایس لیڈر اندریش کمار نے کہا کہ آرٹیکل 370کو ہٹانے سے ہندوستان کی ساکھ اور کامیابی میں اضافہ ہوگا۔ملک کا مستقبل بدل جائے گا اور یہ نئی راہ اور سمت کی طرف بڑھے گا۔سوال یہ ہے کہ بی جے پی پی ڈی پی کے ساتھ سرکاربنائی ہوئی ہے ۔جواس دفعہ کی حمایتی ہے ،تووہ اپنے اس انتخابی ایجنڈے پرکیسے آگے بڑھ سکتی ہے ۔جے پور میں یوم نوجوانوں کے موقع پراس نے نوجوانوں کو بتایا کہ آپ کو سوامی ویویکانندکے راستے پرچل کرآگے بڑھنے کی ضرورت ہے۔اس نے کہا کہ کشمیری مسئلہ بعض سیاسی خاندانوں کی دین ہے، جنہوں نے اپنے فائدے کیلئے وہاں کے لوگوں کو ہندوستان کے خلاف بھڑکایاہے۔اس نے کہا کہ پاکستان اسپانسر دہشت گردی سے ہندوستان جوجھ رہا ہے۔1972سے اب تک ہندوستان میں دہشت گردی کی وجہ سے 66ہزار افراد مر چکے ہیں۔اس کے باوجودہندوستان اور پاک سرحد پر بھی فائرنگ سے دہشت گردی کا سلسلہ جاری ہے،تاہم اس نے یہ بھی کہا کہ مودی حکومت کی پالیسیوں نے دہشت گردانہ واقعات کو کم کر دیا ہے۔آرایس ایس کے رہنما نے کہا کہ بہت سے علیحدگی پسند جیل کی ہوا کھا رہے ہیں اور بھٹکے ہوئے نوجوانوں کو ملکی دھاراسے جوڑاجارہاہے۔اس سے پہلے مودی نے ایک عوامی اجلاس میں کہا تھا کہ آرٹیکل 370پر بحث کی جانی چاہئے۔واضح رہے کہ بی جے پی نے انتخابی ایجنڈا میں جموں و کشمیر سے آرٹیکل 370کو ہٹانا بھی شامل کیاتھا۔واضح رہے کہ آئین کے آرٹیکل 370کے تحت جموں و کشمیر کو ایک خصوصی خودمختار ریاست کادرجہ حاصل ہے۔ آرٹیکل 370 کاخاکہ 1947میں شیخ عبداللہ نے تیار کیا جنہیں وزیراعظم جواہر لال نہرو اور مہاراجہ ہری سنگھ نے جموں و کشمیر کا وزیراعظم مقرر کیاتھا۔شیخ عبداللہ نے آرٹیکل 370کے بارے میں یہ دلیل دی تھی کہ آئین میں اس کابندوبست عارضی طور پر نہ کیا جائے۔انہوں نے ریاست کے لئے مضبوط خودمختاری کا مطالبہ کیاتھا، جسے مرکزنے ٹھکرادیاتھا۔آئین کے آرٹیکل 370کی دفعات کے مطابق پارلیمنٹ کو جموں و کشمیرکے بارے میں دفاعی، غیر ملکی معاملات اور مواصلات سے متعلق معاملات سے متعلق قوانین کا حق ہے لیکن دوسری شعبے سے متعلق قانون کو نافذ کرنے کے لیے مرکزکو ریاست کی منظوری کی ضرورت ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

رافیل جنگی طیارہ سودے کو لے کر راہول گاندھی نے کیا وزیر دفاع سے استعفیٰ کا مطالبہ

کانگریس صدر راہل گاندھی نے وزیر دفاع نرملا سیتا رمن پر رافیل جنگی طیارہ سودے کو لے کر لگا تار جھو ٹ بولنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے جھوٹ کی پول کھلتی جا رہی ہے اس لئے اب وہ اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیں۔

جیٹ ایئرویز کے سیفٹی آڈٹ کا حکم، پائلٹ صاحب  ہوا کا دباو کم کرنے والا سوئچ آن کرنا ہی بھول گئے

جیٹ ائیرویز کے طیارہ میں پائلٹ ٹیم کی غلطی کی وجہ سے مسافروں کی طبیعت بگڑنے کے معاملہ میں شہری ہوابازی کی وزارت نے ڈی جی سی اے کو ایئر لائن کا سیفٹی آڈٹ کرنے کا حکم دیا ہے۔ شہری ہوابازی کے وزیر سریش پربھو نے اس معاملہ میں جانچ کی ہدایت بھی دی ہے۔

تین طلاق پر آرڈیننس لانامودی حکومت کی ہٹ دھرمی اورمسلم خواتین کو گمراہ کرنے کی مذموم کوشش:مولانا اسرارالحق قاسمی

معروف عالم دین وممبر پارلیمنٹ مولانا اسرارالحق قاسمی نے تین طلاق پرمودی حکومت کے آرڈیننس لانے کے اقدام کوقطعی نامناسب اور ضدو ہٹ دھرمی پر مبنی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کو موقر ایوان اور دستور کی کوئی پروانہیں ہے اور وہ آئندہ عام انتخابات کے پیش نظر مسلم خواتین کو گمراہ ...

بھساول ۔ناسک ٹاڈا مقدمہ؛ سرکاری گواہ کا پولس کی جانب سے لالچ دیئے جانے کا اعتراف؛ عرضداشت پر بحث مکمل، ۲۷؍ ستمبر کو ہوگا فیصلہ

24؍ سال پرانے بھساول۔ناسک ٹاڈا مقدمہ میں گذشتہ کل تیسر ے سرکاری گواہ کی گواہی عمل میں آئی جس کے دوران اس نے جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) کی جانب سے مقرر کردہ دفاعی وکیل شریف شیخ کی جرح کی دوران اعتراف کیا کہ وہ اس معاملے میں پہلے ملزم تھا اور تحقیقاتی دستہ نے اس کا 164 اور 161 ...

طلاق دینے پر صرف مسلم مردوں کو سزاء کیوں؟ ہندومردوں کو سزاء کیوں نہیں؟ کویتا کرشنن کا سوال

ملک کی اپوزیشن جماعتوں اور سرگرم خاتون کارکنوں نے کل جبکہ حکومت ہند ’’ بیک وقت تین طلاق ‘‘ کو ایک تعزیری جرم قراردینے ‘ آرڈیننس جاری کرنے کا راستہ اختیار کیا ہے‘ حکومت سے پوچھا ہے کہ ایسے ہندومَردوں کیلئے مذکورہ نوعیت کی دفعات کیوں نہیں بنائی گئیں جو اپنی بیویوں کو ...