مہاتما گاندھی بھی آرایس ایس کے پروگرام میں شامل ہوئے تھے: پرچارک نریندر سہگل کا دعوی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 7th June 2018, 4:04 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی  دہلی7 جون(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) آج  ناگپور میں ہونے والے راشٹریہ سیوم سیوک سنگھ (آرایس ایس) کے پروگرام میں صابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی مہمان خصوصی کے طورپر شرکت کررہے ہیں۔ اس موقع پر وہ وہاں آرایس ایس کے لیڈران اور ممبران کوخطاب کریں گے۔پرنب مکھرجی  کا پس منظر ایک کانگریسی لیڈر کا رہا ہے۔ اس لئے ان کا آرایس ایس کے پروگرام میں جانا کانگریس سمیت کئی پارٹیوں کو پسند نہیں آرہا ہے۔

پرنب مکھرجی کے دورہ کو لے کر کئی لوگوں نے تبصرہ کیا ہے۔ اس درمیان آرایس ایس پرچارک رہ چکے صحافی اور رائٹر نریندر سہگل نے دعوی کیا ہے کہ مہاتما گاندھی 1934 میں آرایس ایس کے ایک پروگرام میں تشریف لاچکے ہیں۔

نریندر سہگل نے کہا کہ آرایس ایس کے پروگراموں میں مدن موہن مالویہ بھی آئے تھے۔ سبھاش چندر بوس نے1938 یا 1939 میں ناگپور میں پتھ تحریک دیکھی تھی۔ آرایس ایس کی دعوت پر اب پرنب مکھرجی آرہے ہیں۔ آرایس ایس کی پالیسی رہی ہے کہ ہم آہنگی، رابطہ اور بات چیت۔ یہ ہندوستانی ثقافت ہے. لوگ آرایس ایس میں آتے رہتے ہیں اوران سے گفتگو کرتے ہیں۔

ہندوستانی تحریک آزادی میں آرایس ایس کے کردار پر اٹھنے والے سوالات کے درمیان سہگل کی لکھی گئی کتاب ’’بھارت وش کی سروانگ سوتنرتا‘‘ اور ان کے بیان سرخیوں میں آگئے ہیں۔ سہگل کا دعوی ہے کہ کانگریس کی طرح ہی آرایس ایس کا بھی جنگ آزادی میں تعاون رہا ہے۔

لیکن بدقسمتی سے اس سے منسلک تاریخ ایک خاندان کو دیکھتے ہوئے یکطرفہ لکھا گیا ہے۔طویل وقت سے ان الزامات سے جدوجہد کررہا ہے کہ جنگ آزادی میں اس کا کوئی رول نہیں تھا۔پنجاب میں آرایس ایس کے پرچارک رہ چکے سہگل کے مطابق میں نے  ایسا  نہیں کہا کہ جنگ آزادی میں آرایس ایس کا تعاون کانگریس سے زیادہ ہے، بلکہ  میں نے یہ کہا کہ کانگریس کی طرح ہمارا بھی تعاون ہے۔ میں نے اپنی کتاب میں ثبوتوں کے ساتھ بتایا ہے کہ کس طرح آرایس ایس کا تعاون رہا ہے۔

نریندر سہگل نے کہا کہ آرایس ایس اپنے نام سے کچھ نہیں کرتا تھا۔ اپنے نام اور ادارے کے نام سے اوپر اٹھ کر ملک کے مفاد میں آزادی سے جڑی کانگریس کے سبھی تحریک میں آرایس ایس کے کارکنان نے حصہ لیاہے۔ آرایس ایس کے بانی ڈاکٹر کیشو بلیرام ہیڈگوار خود دوبار سال سال بھر کے لئے جیل میں رہے ہیں۔ پورے ستیہ گرہ کے اندر آرایس ایس کے 16 ہزار کارکن جیل میں تھے۔ 1942کے موومنٹ میں ہمارا سب سے زیادہ حصہ تھا، لیکن آرایس ایس کے نام سے نہیں تھا۔ آرایس ایس تو آج بھی اپنے نام سے کچھ نہیں کرتا ہے، وہ تو آج بھی وشو ہندو پریشد، مزدور سنگھ، بھارتیہ جنتا پارٹی اور ونواسی کلیان آشرم کے نام سے کام کرتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

مالیگاؤں 2008ء بم دھماکہ معاملہ، بم دھماکوں میں زخمی ہونے والے دو افراد نے گواہی دی، دفاعی وکلاء عدالت سے غیر حاضر ، جرح اگلے ہفتہ متوقع

مالیگاؤں ۲۰۰۸ء بم دھماکہ معاملے میں سماعت روز بہ روز جاری ہے ، آج اس معاملے میں بم دھماکوں میں زخمی ہونے والے دو افراد کی گواہی عمل میں آئی

مثبت فکر اورتوانائی سے ملک کی ترقی ہوتی ہے:ارون جیٹلی 

مودی حکومت کے ناقدین کو بات بات پر احتجاج کرنے والا بتاتے ہوئے وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے جمعرات کو ان پر جھوٹ گھڑنے اور ایک منتخب حکومت کو کمزور کرکے جمہوریت کو برباد کرنے کا الزام لگایا۔ طبی معائنہ کے لیے امریکہ دورہ پر گئے ارون جیٹلی نے ایک فیس بک پوسٹ میں کہا کہ اظہار رائے کی ...

عد لیہ نے مہاراشٹر میں ڈانس بار پر پابندی لگانے والی کئی تجاویزمستردکیں 

سپریم کورٹ نے مہاراشٹر میں ڈانس بار کے لئے لائسنس اور اس کاروبار پر پابندی لگانے والے کچھ تجاویز جمعرات کومنسوخ کردیئے۔ جسٹس اے کے سیکری کی صدارت والے بنچ نے مہاراشٹر کے ہوٹل، ریستوران اور بار ہاؤس میں فحش رقص پر پابندی اورعورتوں کے وقار کی حفاظت سے متعلق قانون 2016 کے کچھ دفعات ...

شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر ہزاروں عوام  شاہراہ روک کیا  احتجاج : مجموعی استعفیٰ کا انتباہ اور الیکشن بائیکاٹ کا اعلان

تعلقہ کے شرالی میں دن بدن قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر معاملہ گرم ہوتا جارہاہے۔ شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع 45میٹر سے کم کرکے 30میٹر کئے جانےکی مخالفت کرتے ہوئے جمعرات کو ہزاروں لوگو ں نے قومی شاہراہ روک کر سخت احتجاج درج کیا۔ اس دوران عوامی مانگوں کو منظوری نہیں دی گئی تو ...

بھٹکل انجمن بی بی اے کی طالبہ مریم حرا کو  کرناٹکا یونیورسٹی سطح پر دوسرا رینک

انجمن انسٹی ٹیوٹ آف مینجمنٹ بھٹکل کی طالبہ مریم حرابنت ارشاد ائیکری ڈاٹا نے کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ کے زیر اہتمام اپریل 2018میں منعقد ہوئی بی بی اے امتحانات میں پوری یونیورسٹی میں دوسرارینک حاصل کرتے ہوئے انجمن اور شہر کا نام روشن کیا ہے۔