ترکی: ایرانی اور کویتی تاجر استنبول میں پراسرار طور پر قتل

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 2nd May 2017, 10:54 AM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

انقرہ،یکم مئی(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)ترکی کے شہر استنبول میں ہفتے کی شامل نامعلوم مسلح افراد نے فارسی زبان میں نشریات پیش کرنے والی معروف ’جیم‘ ٹی وی کمپنی کے بانی اور چیئرمین سعید کریمیان کو اس کے کویتی ساتھی تاجر محمد متعب الشلاحی کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا ہے۔ استنبول میں کویتی سفارت خانے کا کہنا ہے کہ وہ اس پراسرار قتل کی تحقیقات میں ترک پولیس کی مدد کررہا ہے۔ ابھی تک یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ دہرے قتل کے واقعے کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے تاہم جو گاڑی بظاہر ان کے قتل کے لیے استعمال کی گئی تھی اسے بعد میں جلی ہوئی صورت میں پایا گیا ہے۔واضح رہے کہ سعید کریمیان پر ان کی غیر موجودگی میں تہران کی ایک عدالت میں مقدمہ چلایا گ?ا تھا اور انھیں ایران کے خلاف پروپگینڈا کرنے کے جرم میں چھ سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ان کے کویتی شریک تاجر متعب الشلاحی بھی ترکی میں ایک مشہور شخصیت تھے۔ دونوں کو ہوٹل میں جاتے ہوئے گولیاں ماری گئیں۔ کویت کے ایک رکن پارلیمان ولید طبطائی کا کہنا ہے کہ متعب الشلاحی کی موت کھلم کھلا سیاسی قتل ہے۔

خیال رہے کہ جیم ٹی وی پر غیر ملکی اور مغربی شوز کو فارسی زبان میں ڈب کرنے کے بعد ایران کے لیے نشر کیا جاتا ہے۔جیم گروپ کو شروع میں لندن میں قائم کیا گیا تھا لیکن بعد میں اس میں وسعت آئی اور اسے دبئی منتقل کر دیا گیا۔گروپ کے ویب سائٹ کے اعتبار سے اس کے تحت فارسی زبان کے 17 چینل چلتے ہیں اس کے علاوہ ایک ایک چینل کردش، آزری اور عربی زبان میں اپنی نشریات پیش کرتے ہیں۔کریمیان کے ایک دوست امیر عباس فخر آور نے کریمیان کی موت کا قصور وار ایران کو ٹھہرایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایرانی رجیم بیرون ملک موجود اپوزیشن رہ نماؤں کو چن چن کر قتل کرنے پالیسی پرعمل پیرا ہے۔ سعید کریمیان کے بہیمانہ قتل میں تہران سرکار کا ہاتھ ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔

سعودیہ میں مقیم غیر قانونی تارکین وطن میں سب سے زیادہ تعداد پاکستانیوں کی نکلی

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے واضح کیا ہے کہ اقامہ و محنت قوانین اور سرحدی سلامتی کے ضوابط کی خلاف ورزی کرنے والے 140 مما لک کے 758570 غیر ملکیوں نے شاہی مہلت سے فائدہ اٹھایا۔