لو جہاد کے نام پر راجستھان میں مسلم نوجوان کا بے رحمانہ قتل؛ لاش کو بعد میں جلادیا گیا؛ وڈیو وائرل

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 8th December 2017, 2:06 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

جئے پور 7/ڈسمبر (ایس او نیوز/ایجنسی ) لو جہاد اور گئو ہتھیا جیسے مسئلے سیاستدانوں کے لئے ووٹ جمع کرنے سے زیادہ کچھ بھی نہیں ہے، لیکن  عام آدمی اب   ان موضوعات کو لے کر سخت پریشان ہے. بدھ کو راجستھان کے راج سمند میں ایک واقعے کے بعد کشیدگی  پھیل گئی بعد میں   سڑکوں پر پولس کی بھاری فورس جمع ہوگئی۔اب تازہ واقعے کو لے کر سبھوں کی زباں پر یہی واقعہ سناجارہاہے۔

دراصل، راجسامند شہر میں بدھ کے روز   پولیس کو خبر موصول ہوئی  کہ ایک شخص کی آدھ جلی  لاش پائی گئی ہے. بتایا گیا ہے کہ اُسی وقت سوشیل  میڈیا پر ایک ویڈیو بھی وائرل ہو گیا. جس میں دیکھا گیا ہے کہ  شمبو لعل   ریگر نامی ایک  شخص کسی شخص کو بے رحمی کے ساتھ دھاردار  ہتھیار سے مار رہا ہے.

یہی نہیں اُسے مارنے کے بعد اُس کی لاش پر پٹرول چھڑک کر اُسے آگ لگادیتا ہے۔ اس پورے واقعے کی وڈیو کلپ ایک دوسرا شخص بناتا ہے، پھر ملزم شمبھولال لو جہاد کرنے والوں کے خلاف  زہر اُگلتے ہوئے  ایک بھاشن دیتا ہے۔ وڈیو میں ملزم اپنی بہن  کی بے عزتی کا بدلہ  لینے کی بات بھی کررہا ہے۔


 

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی کوپاکستان جیسے بیانات دینے پربہارمیں نقصان ہوچکاہے:اسدالدین اویسی

حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ و صدر کل ہند مجلس اتحاد المسلمین بیرسڑاسد الدین اویسی نے کہا ہے کہ گجرات کے انتخابی جلسوں میں جس طرح کی زبان وزیراعظم نریندر مودی استعمال کر رہے ہیں، اس پر ان کو کوئی تعجب نہیں ہوا ہے۔

’’بھگوا غنڈہ گردی ملک کی سلامتی کے لیے سب سے بڑا خطرہ ‘‘: آل انڈیا امامس کونسل

ہندوتواوادی اور فسطائی غنڈے نے پھر سے ملک کو شرمسار کر دیا۔ ایک نہتے اور بے قصور مزدور افراز الاسلام کو مزدوری دینے کے بہانے بلاکر پھاوڑے سے قتل کر دینا اور پھر پٹرول چھڑک کر آگ لگا کر جلا دینا ملک کے لیے ایک انتہائی شرمناک معاملہ ہے۔

’’بھگوا غنڈہ گردی ملک کی سلامتی کے لیے سب سے بڑا خطرہ ‘‘: آل انڈیا امامس کونسل

ہندوتواوادی اور فسطائی غنڈے نے پھر سے ملک کو شرمسار کر دیا۔ ایک نہتے اور بے قصور مزدور افراز الاسلام کو مزدوری دینے کے بہانے بلاکر پھاوڑے سے قتل کر دینا اور پھر پٹرول چھڑک کر آگ لگا کر جلا دینا ملک کے لیے ایک انتہائی شرمناک معاملہ ہے۔

ہوناور تشدد: میرا بیٹا کسی بھی تنظیم کا ممبر نہیں تھا: مہلوک کے خاندان والوں نے کیا انصاف کا مطالبہ

ساحل آن لائن کے نمائندوں نے جب ہوناور میں پریش میستا کے گھر جاکر والدین کے ساتھ تعزیت کی تو انہوں نے بتایا کہ ابھی تک کسی بھی میڈیا والوں نے اُن سے ملاقات نہٰیں کی تھی، ہم پہلے اخباری لوگ ہیں جنہوں نے گھر پہنچ کر حالات جاننے کی کوشش کی ہے۔ انہوں نے بیٹے کے قتل پر انصاف کا مطالبہ ...