دبنگ ممبر اسمبلی مختار انصاری کو جیل میں پڑا دل کا دورہ، دیکھنے پہنچیں بیوی کو بھی آیا اٹیک

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th January 2018, 1:09 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

لکھنؤ،9؍جنوری(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) مؤ سے دبنگ ممبر اسمبلی مختار انصاری اور ان کی بیوی کو دل کا دورہ پڑا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ جب ان کی بیوی ان سے جیل میں ملنے پہنچیں اسی وقت انہیں بھی اٹیک آ گیا۔ یہ دیکھ کر بیوی کو بھی اٹیک آ گیا۔ جیل میں تعینات ڈاکٹر آنا فانا انہیں ضلع اسپتال لے گئے۔ مختار انصاری کو تقریبا 8 ماہ پہلے ہی باندہ جیل شفٹ کیا گیاہے ۔ ڈاکٹروں نے کہا کہ مختار انصاری کی حالت نازک ہے اور ان کا علاج باندہ میں ممکن نہیں، اس لئے دونوں کو یہاں سے ریفرکیا جائے گا۔ ایڈیشنل پولیس ڈائریکٹر جنرل لاء اینڈ آرڈر آنند کمار نے کہا کہ اطلاع ملی ہے کہ ممبر اسمبلی مختار انصاری کو باندہ جیل سے طبی امدادکے لئے لکھنؤ یا کسی دوسرے شہر میں ریفر کیا گیا ہے۔ ان کی حفاظت کی پوری ذمہ داری ہماری ہے۔ ہم ان کو ہر طرح کی حفاظت مہیا کرائیں گے۔غور طلب ہے کہ مختار انصاری نے جیل میں رہتے ہوئے ہی اسمبلی انتخاب لڑا تھا۔ لکھنؤ جیل سے مختار انصاری کو باندہ جیل بھیجا گیا تھا۔ بندہ ضلع جیل بھیجے جانے کی وجہ بھی مختار انصاری چرچا میں رہے تھے ۔ لکھنؤ جیل سے باندہ جیل منتقل کئے جانے پر مختار انصاری نے مبینہ سازش کی طرف اشارہ کیا تھا۔ مختار انصاری نے کہا تھا کہ ایک مرکزی وزیر انہیں جان سے مارنے کی سازش کر رہے ہیں۔ مختار انصاری نے للت پور جانے میں اپنی جان کو خطرہ بتایا تھا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

سرسی میں پرکاش رائے کے خطاب کردہ اسٹیج کوبی جے پی نے گائے کے پیشاب سے کیاپاک !

’ہمارا دستور ہمارا فخر‘کے موضوع پر اداکار دانشور پرکاش رائے نے سرسی میں جس اسٹیج سے خطاب کیا تھااس مقام کو اور راگھویندرامٹھ کلیان منٹپ کے احاطے کو بی جے پی کارکنان نے گائے کے پیشاب سے پاک کرنے کی کارروائی انجام دی۔

بھٹکل سرکاری اسپتال میں ایک بھی ڈاکٹر ڈیوٹی پر موجود نہ ہونے پر عوام اور مریض سخت برہم؛ احتجاج کی دھمکی کے بعددوسرے اسپتال کا ڈاکٹر پہنچا اسپتال

آج صبح سے بھٹکل سرکاری اسپتال میں ایک بھی ڈاکٹر موجود نہ ہونے کو لے کر مقامی عوام جو مریضوں کو لے کر اسپتال پہنچے تھے، سخت برہم ہوگئے اور اسپتال پر موجود نرس سمیت دیگر اسٹاف پر اپنا غصہ اُتارنے کی کوشش کی۔ اس موقع پر ڈیوٹی پر موجود نرس کو عوام نے آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے  دس منٹ ...