اُترکنڑا میں زائد پرائمری ٹیچروں کا تبادلہ؛ اردو اسکولوں کے ساتھ ناانصافی۔نارتھ کینرا مسلم یونائیٹد فورم کو تشویش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 18th October 2018, 2:22 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

کمٹہ 17؍اکتوبر (ایس او نیوز) محکمہ تعلیمات کی طرف سے پرائمری اسکولوں میں جہاں طلبہ کی تعداد مقررہ معیارسے کم ہے وہاں سے زائد ٹیچروں کا تبادلہ کرنے کی جو پالیسی اپنائی جارہی ہے اس پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے نارتھ کینرا مسلم یونائٹیڈ فورم کے جنرل سکریٹری جناب محسن قاضی نے کہا ہے کہ  اس سے اردو اسکولوں کے ساتھ بڑی ناانصافی ہورہی ہے۔

محکمہ تعلیمات کی پالیسی کے مطابق جس اسکول میں پہلی جماعت سے پانچویں جماعت تک 31سے کم طلبہ موجود ہیں وہاں پر دیگر زبانوں کے اسکولوں میں دو اساتذہ تعینات رہیں گے ، جبکہ اردو اسکولوں میں صرف ایک استاذ رہے گا۔ یعنی اردو اسکول میں صرف ایک ٹیچر کو اردو کے علاوہ سائنس، حساب، سماجی تعلیم ، ماحولیاتی سائنس وغیرہ سب کچھ اکیلے ہی پڑھانا ہوگا۔ یہ نہ صرف ایک مشکل کام ہے بلکہ ایک ناممکن سی بات ہے۔ اس سے لسانی اقلیت والے اسکولوں کے ساتھ بڑی ناانصافی ہورہی ہے۔ اقلیتی اسکولوں میں کنڑا ٹیچر جو ہوتے ہیں وہ صرف تین پیریڈ لیا کرتے ہیں۔ پہلی جماعت سے پانچویں جماعت تک ایک اردو ٹیچرکے لئے تمام مضامین پڑھانا ممکن ہی نہیں ہوسکتا۔ اس لئے ضروری ہے کہ اول تا سوم اگر ایک اردو ٹیچر بچوں کو پڑھاتا ہے تو چہارم اور پنجم جماعت کے لئے دوسرے اردو ٹیچر کا تقرر بہت ضروری ہے۔ ورنہ بچوں کی تعلیمی زندگی پر اس کا الٹا اثر ہوگا۔ 

محسن قاضی صاحب نے اپنے تحریری بیان میں سرکار سے درخواست کی ہے کہ صرف بچوں کی تعداد کو ہی بنیاد بناکرتبادلے کی جو پالیسی اپنائی گئی ہے اس سے ہٹ کر محکمہ تعلیمات کو چاہیے کہ وہ حقیقی صورتحال کو نظر میں رکھتے ہوئے ہر اردو اسکول میں کم از کم دو اساتذہ کے تقرر کو یقینی بنائے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں موسلادھار بارش؛ بندر روڈ پر کمپاونڈ کی دیوار گر گئی؛ بائک کو نقصان؛ بارش سے دو بجلی کے کھمبوں پر بھی درخت گرگئے

شہر میں گذشتہ کچھ دنوں سے بارش  کا سلسلہ جاری ہے، البتہ  پیر اور منگل کی درمیانی شب سے  آج منگل شام تک کافی اچھی بارش ریکارڈ کی گئی ہے، ایسے میں  شام کو  ایک مکان کے کمپاونڈ کی دیوار گرنے کی واردات بھی پیش آئی ہے۔

کاروار میں کرناٹکا جرنالسٹ یونین اترکنڑا کے زیراہتمام یکم جولانی کو ہوگا یوم صحافت کا ضلعی پروگرام

کرناٹکا جرنالسٹ یونین اترکنڑا ضلعی شاخ کے زیر اہتمام یکم جولائی کو ضلع پتریکابھون میں ’’یوم صحافت ‘‘ کا پروگرام منعقد کیا جائے گا جس میں سورنا نیوز کے کرنٹ آفیرس ایڈیٹر جئے پرکاش شٹی کو ہرسال دئیے جانے والا ’ہرمن موگلنگ ‘ریاستی ایوارڈ سے نوازا جائے گا۔

بھٹکل اور اطراف کے عوام توجہ دیں: دبئی اور امارات میں حادثات کے بڑھتے واقعات؛ ہندوستانی قونصل خانہ نے جاری کی سفری انشورنس کی ایڈوائزری

دبئی سمیت متحدہ عرب امارات کے مختلف شہروں اور قصبوں  میں  مختلف حادثات میں شدید  طور پر زخمی ہوکر اسپتالوں میں ایڈمٹ ہونے کی  تعداد میں  اضافہ کو دیکھتے ہوئے  اور اسپتالوں  میں اُن کا کوئی پرسان حال نہ ہونے  کے واقعات کا مشاہدہ کرنے کے بعد  ہندوستانی سفارت خانہ کی طرف سے  عرب ...

جانوروں پر حکومت کی مہربانی۔اب دوپہر 12تا3بجے کے دوران رہے گی کھیتی باڑی کی مشقت پر پابندی

کھیتی باڑی اور دیگر محنت و مشقت کے کاموں میں استعمال ہونے والے مویشیوں پر ریاستی حکومت نے بڑے مہربانی دکھاتے ہوئے ایک سرکیولر جاری کیا ہے کہ گرمی کے موسم میں تپتی دھوپ کے دوران دوپہر 12سے 3بجے تک کسان اپنے جانوروں کو کھیت جوتنے یا دوسرے مشقت کے کاموں میں استعمال نہیں کرسکیں گے۔

جانوروں پر حکومت کی مہربانی۔اب دوپہر 12تا3بجے کے دوران رہے گی کھیتی باڑی کی مشقت پر پابندی

کھیتی باڑی اور دیگر محنت و مشقت کے کاموں میں استعمال ہونے والے مویشیوں پر ریاستی حکومت نے بڑے مہربانی دکھاتے ہوئے ایک سرکیولر جاری کیا ہے کہ گرمی کے موسم میں تپتی دھوپ کے دوران دوپہر 12سے 3بجے تک کسان اپنے جانوروں کو کھیت جوتنے یا دوسرے مشقت کے کاموں میں استعمال نہیں کرسکیں گے۔

دُبئی میں 18 برس سے کم عمر بچوں کی ویزہ مفت؛ 15 جولائی سے 15 ستمبر تک رہے گی سہولیت

 متحدہ عرب امارات میں سیاحتی سیزن کے دوران غیر مُلکی سیاحوں کے 18 برس سے کم عمر بچوں کے لیے مفت ویزے کی سہولت فراہم کی جا رہی ہے۔ یہ اعلان فیڈرل اتھارٹی فار آئیڈینٹٹی اینڈ سٹیزن شپ کی جانب سے کیا گیا ہے۔ دُبئی میں ہر سال سیاحتی سیزن کا آغاز 15 جولائی سے ہوتا ہے جو 15 ستمبر تک جاری ...