مودی ہندو کی طرح اقتدار پر آئے اوراب مسلمانوں کے وکیل کی طرح کام کررہے ہیں: پروین توگاڑیا

Source: S.O. News Service | Published on 12th September 2018, 12:25 PM | ملکی خبریں |

متھرا12؍ستمبر (ایس او نیوز) وشوا ہندو پریشد کے سابق انٹرنیشنل صدر پروین توگاڑیاں پر تنقیدی نشانہ سادھتے ہوئے کہا کہ مودی نے ایک ہندو کی طرح اقتدار حاصل کیا اور اب وہ مسلمانوں کے وکیل کی طرح کام کررہے ہیں۔خاص کر مسلم خواتین کی وکالت کرنے کا الزام لگاتے ہوئے پروین توگاڑیا نے کہا کہ مودی اب اس لائق نہیں رہے کہ وہ وزیر اعظم بنے رہیں۔

توگاڑیا کا کہنا تھا کہ مودی نے ہندوازم کے نام پر ہندو ووٹ مانگ کر حکومت بنائی تھی۔ لیکن انڈیا کو ایک ہندو راشٹر بنانے اور کشمیر میں ہندوؤں کا تحفظ کرنے کے بجائے وہ مسلمانوں کے ایک وکیل بن گئے ہیں۔ تین طلاق کا مسئلہ مسلمانوں کا پرسنل معاملہ ہے اس میں ہندوحکومت کے ایک لیڈر کی حیثیت میں رہتے ہوئے مودی کو اس کے بارے میں فکر مند نہیں ہونا چاہیے۔

توگاڑیا کے مطابق جو لوگ کانگریس سے جدا ہوکر بی جے پی میں شامل ہوگئے تھے انہوں نے بی جے پی کو دوسری کانگریس پارٹی میں بدل دیا ہے۔ اس لئے جو پارٹی ہندوؤں کے حقوق اور ان کی فلاح و بہبود کے لئے تشکیل دی گئی تھی وہ اب مسلمانوں کے حقوق پر غور وفکر کررہی ہے۔ توگاڑیا نے بڑے ہی برہم انداز میں کہا کہ :’’ اس سرکار میں گؤ رکھشک غنڈے ہوگئے ہیں اور قصائی بھائی ہو گئے ہیں۔‘‘انہوں نے کہا کہ تقریباً پورے ملک میں اب بی جے پی اقتدار حاصل کرچکی ہے۔اس کے باوجود اگر بی جے پی ایودھیا میں مندر تعمیر کرنے میں ناکام ہے تو یہ بات اچھی طرح سمجھی جاسکتی ہے کہ پارٹی اور اس کے لیڈروں کے ذہن میں کیا چل رہا ہے۔ وہ تو بس بھگوان رام کے نام کو وزیراعظم کی کرسی تک پہنچنے کے لئے سیڑھی کے طور پر استعمال کرنا چاہتے تھے۔اور جب یہ کام پورا ہوگیا ہے تو وہ اس مقصد کو ہی بھول گئے ہیں جس کے لئے انہیں حکومت بنانے کا موقع دیا گیا تھا۔

ایک مذہبی اجلاس میں شرکت کے لئے متھرا پہنچے والے پروین توگاڑیانے طنزیہ لہجے میں پوچھا کہ وہ یہ جاننا چاہتے ہیں کہ کیا ایودھیا میں رام مندرتعمیر کرنے کے لئے پاکستان کے وزیراعظم کو یہاں بلاکر لانا پڑے گا؟انہوں نے کہا کہ بی جے پی اور وی ایچ پی میں رہتے ہوئے انہوں نے کئی دہائیوں تک خدمات انجام دی ہیں اور بدلے میں صرف رام مندر کی تعمیر کا مطالبہ کیا ہے۔لیکن مندر کبھی بنا ہی نہیں۔ توگاڑیا نے متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ جن لوگوں نے 2014میں ہندوؤں کے حقوق کی بات کی تھی، ان کی بے عملی کا جواب انہیں 2019میں مل جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو:آر ایس ایس پرچارک تربیتی کیمپ میں امیت شاہ کی شرکت۔ سرخ دہشت گردی ، رام مندر، سبریملا اور انتخابات پر ہوئی خاص بات چیت

ملک کی مختلف ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کی مصروفیت کے باوجود بی جے پی کے صدر امیت شاہ نے منگلورو میں آر ایس ایس ’ پرچارکوں‘ کے لئے منعقدہ 6 روزہ تربیتی کیمپ کے اختتام سے ایک دن پہلے ’سنگھ نکیتن‘ میں پہنچ نے کے لئے وقت نکالااور تربیتی کیمپ کے شرکاء سے خطاب کیا۔

جعلی ڈگری کے ذریعہ دہلی یونیورسٹی میں داخلے کا معاملہ ڈوسو صدر انکت اے بی وی پی سے برطرف

اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد (اے بی وی پی) نے جعلی ڈگری تنازعہ کی وجہ سے دہلی یونیورسٹی اسٹوڈنٹس یونین (ڈوسو) کے صدر انکت بسویا کو عہدہ سے استعفیٰ دینے کے ساتھ ہی انکوائری مکمل ہونے تک تنظیم سے برطرف کردیا ہے۔

مختارعباس نقوی نے کیا ہندوستان کے بین الاقوامی تجارتی میلے میں ہنر ہاٹ کا افتتاح

اقلیتی امورکے مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے آج نئی دہلی کے پرگتی میدان میں ہندوستان کے بین الاقوامی تجارتی میلے میں ہنرہاٹ کا افتتاح کیاہے۔جوکاریگروں اور دستکاروں کوبااختیار بنانے کے لیے ایک معتبربرانڈبن گیاہے۔ ہنرہاٹ کااہتمام14 نومبر سے 27 نومبر 2018 کے دوران کیا جارہا ...

بھارت۔ تائیوان ایس ایم ای ترقیاتی فورم تائیپی میں شروع 

vایم ایس ایم ای کے سکریٹری ڈاکٹر ارون کمار پانڈا 13 سے 17 نومبر 2018 تک چلنے والے بھارت 150 تائیوان ایس ایم ای ترقیاتی فورم کے اجلاس میں بھارتی وفد کی قیادت کررہے ہیں۔ فورم میں کل اپنے افتتاحی کلمات میں ڈاکٹر پانڈا نے کہا کہ بھارت میں ایم ایس ایم ای کی پوزیشن کلیدی اہمیت کی حامل ہے

گری راج سنگھ کے ہاتھوں ایم ایس ایم ای کے پویلین کاافتتاح

ایم ایس ایم ای کے وزیر مملکت گری راج سنگھ نے آج نئی دہلی میں 38 ویں بھارت۔بین الاقوامی تجارتی میلے (آئی آئی ٹی ایف) میں ایم ایس ایم ای کے پویلین کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر تقریر کرتے ہوئے وزیر موصوف نے کہا کہ معیاری سازوسامان کی تیاری اور گاوؤں کی صنعتوں کی جامع ترقی ملک کی ترقی میں ...

ریرا صنعت میں مثبت تبدیلی پیدا کررہا ہے:ہردیپ سنگھ پوری 

ہاؤسنگ اور شہری امور کے مرکزی وزیر مملکت (آزادانہ چارج) ہردیپ سنگھ پوری نے کہا ہے کہ ریرا (آر ای آر اے) کے اس نئے دور میں ہم صنعت میں مثبت تبدیلی کا مشاہدہ کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ریرا کے نفاذ کے دوسرے سال میں مجھے خوشی ہے کہ 6 شمال مشرقی ریاستوں اور مغربی بنگال کو چھوڑ کر تمام ...