بھٹکل میں کانگریس کی ہار کاجائزہ؛ کیا تنظیم کے پاس پہنایاگیا پھولوں کاہارمنکال وئیدیا کے لئے کانٹا ثابت ہوا؟

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th May 2018, 8:18 AM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل 17؍مئی (ایس او نیوز) بھٹکل ہوناور اسمبلی حلقے میں سٹنگ ایم ایل اے اور کانگریسی امیدوار منکال وئیدیا کی شکست کا تجزیہ کرنے والے اس بات کی طرف بھی اشارہ کررہے ہیں کہ کانگریس پارٹی سے ٹکٹ ملنے کے بعد منکال وئیدیا کی جب تنظیم میں آمد ہوئی تھی، تو اس موقع پر ان کے چاہنے والوں نے بہت ہی جوش و خروش کا مظاہرہ کیا تھا۔ ان کی حمایت میں نہ صرف نعرے بازی کی تھی بلکہ انہیں پھولوں کا ہار پہنا کراپنے بے پناہ خوشی کا اظہار کیا تھا، اور یہی چیز منکال وئیدیا کی راہ میں کانٹا بن گئی۔

ایک کنڑا اخبار کے مطابق تنظیم میں منکال کی آمد کے موقع پر بعض مسلم نوجوانوں کا جوش وخروش دکھانے والی ویڈیو کلپ وائرل ہوتے ہی غیرمسلم اور خاص کر ہندوتووادی تنظیم سے وابستہ نوجوانوں نے منکال کے خلاف محاذ سنبھال لیا۔ سوشیل میڈیا کے مختلف پلیٹ فارمس پر منصوبہ بند طریقے سے منکال وئیدیا کے خلاف مہم چھیڑی گئی اور انہیں تنظیم او رمسلمانوں کا نمائندہ بناکر پیش کیا اور ان کی جیت کو جہادیوں کی جیت اور ہندوؤں کے لئے انتہائی خطرناک موڑ ہونے کی بات پھیلائی گئی۔ گؤ رکھشا میں اعتماد رکھنے والوں کے ذہنوں میں منکال وئیدیا کی تصویر بگاڑنے کے لئے یہ افواہ بھی اڑادی گئی کہ انہوں نے تنظیم کے ٹیبل پر اس بات کی یقین دہانی کی ہے کہ جیت جانے پر بھٹکل میں ایک جدید قسم کا قصائی خانہ تعمیر کروائیں گے۔

سوشیل میڈیا پر منکال وئیدیاکے خلاف اینٹی پروپگنڈہ اس قدر بڑھ گیا کہ خود منکال کومندر میں جاکراپنے دیوتاؤں کے سامنے قسم کھانی پڑی کہ اگر انہوں نے مسلمانوں کے ساتھ ایسا کوئی سمجھوتہ کیا ہے یا پھر ان کے خلاف پھیلائی جارہی افواہوں میں ذرا سی بھی سچائی ہے تو پھربھگوان ان کو برباد کردے ۔ یا پھر جو لوگ ان کے خلاف جھوٹی باتیں پھیلا رہے ہیں وہ برباد ہوجائیں۔

اسی پس منظر میں سیاسی حالات پر نظر رکھنے والوں کا احساس ہے کہ اتنے سارے ترقیاتی کام کرنے والے اور ایک ہمدرداور انسانیت نواز شخصیت کے مالک منکال وئیدیا کو سیاسی شکست دینے میں زعفرانی بریگیڈ کی جھوٹی اور بے بنیاد مہم نے بڑااہم کردار ادا کیااور مسلمانوں کی طرف سے حد سے زیادہ جوش و خروش کا مظاہرہ ان کے حق میں نقصان دہ ثابت ہوا۔

ایک نظر اس پر بھی

یلاپور میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں اور تھرڈ پارٹی انشورنس پریمئم میں اضافہ کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں کے علاوہ موٹر گاڑیوں کے تھرڈ پارٹی انشورنس پریمئم میں اضافہ کے خلاف ٹرک ڈرائیور اور مالکان کی یونین کی جانب سے یلاپور ماگوڈ کراس پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرین نے نیشنل ہائی وے 63پر ٹائر جلاکر لاریوں کی ہڑتال کی۔

منگلورو:24مقدمات میں مطلوب اور قاتلانہ حملے کے ملزمین گرفتار

الال پولیس نے ایک نوجوان کے قتل کی کوشش کرنے والے محمد مصطفےٰ عرف سونو (21سال) کو گرفتار کرلیا ہے اس کے علاوہ محمد حنیف (30سال)نامی بدنام زمانہ مجرم کوبھی گرفتار کیاگیا ہے جس کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ وہ 24مجرمانہ معاملات میں پولیس کو مطلوب تھا۔

بی جے پی کی شکست کے لیے ہم کسی بھی پارٹی سے اتحاد کے لیے تیارہیں : مایاوتی 

بی جے پی کو شکست دینے کے لئے بی ایس پی کسی بھی پارٹی سے اتحاد کو تیار ہے۔ اس فیصلے کا اعلان خود مایاوتی نے کیا۔ دہلی میں ان کے گھر پر ملک بھر سے آئے بی ایس پی کے کو آرڈنیٹر کی میٹنگ ہوئی۔ مایاوتی نے بی ایس پی لیڈروں کو میڈیا سے دور رہنے کی صلاح دی ہے۔ انہوں نے خبردار کرتے ہوئے کہا ...

الور موب لنچنگ واقعہ: اویسی نے کیا ٹویٹ، مودی حکومت کے چار سال ۔ لنچ راج

آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اور رکن پارلیمنٹ اسدالدین اویسی نے راجستھان کے الور میں پیش آئے موب لنچنگ کے تازہ واقعہ پر اپنے سخت ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے ایک ٹویٹ کے ذریعہ اس واقعہ کو لے کر مرکز کی مودی حکومت پر سخت حملہ بولا ہے۔  

مودی کی مقبولیت کا ردعمل موب لنچنگ ہے : میگھوال 

راجستھان کے الور ضلع میں ایک بار پھر زر خرید ہجو م کے ذریعہ گائے اسمگلنگ کے شبہ میں اکبر نامی ایک مسلم تاجر کو پیٹ پیٹ کر شہید کر دیا گیا۔اس واقعہ پر مرکزی وزیر ارجن رام میگھوال نے کہا ہے کہ وہ اس واقعہ کی مذمت کرتے ہیں لیکن یہ صرف تنہا واقعہ نہیں ہے ہمیں اس کی تاریخ میں جائیں گے. ...

مرکزی حکومت ماب لنچنگ کے واقعات پرفوری قدم اٹھائے، راجستھان کے تازہ واقعہ نے پھرسے ملک کوشرمسارکیا:مولانااسرارالحق قاسمی

ایک طرف ملک کی عدالت عظمیٰ کی جانب سے ماب لنچنگ کے سلسلے میں قانون سازی کی ہدایت جاری کی جاتی ہے جس کی مخالفت کرتے ہوئے حکومت کی جانب سے کہاجاتاہے کہ قانون بنانے کی ضرورت نہیں ہے اوراس معاملے کوجتنا زیادہ پھیلایاجارہاہے اتنی حقیقت نہیں ہے،مگر دوسری جانب ایسے انسانیت سوز اور ...