کشتی سمیت مچھیروں کی گمشدگی کے خلاف تین اضلاع کے ہزاروں ماہی گیروں نے ملپے بندر سے نکالی احتجاجی ریالی۔ بھٹکل سے 7ہزار ماہی گیروں کی شرکت

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 6th January 2019, 1:34 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

ملپے 6؍جنوری (ایس او نیوز) ملپے ماہی گیر بندرسے 13دسمبر کو گہرے سمندر میں مچھلی کے شکار پر نکلی ہوئی ’سوورناتریبھوج ‘ نامی کشتی ۷ مچھیروں سمیت پراسرار طور پر سمندر ی حدود میں ہی لاپتہ ہوجانے اور اس کا سراغ لگانے میں ناکامی پر ریاستی اور مرکزی حکومت کے خلاف شمالی کینرا ، اڈپی اور جنوبی کینرا کے اضلاع سے ہزاروں ماہی گیروں نے ملپے پہنچ کر ایک زبردست احتجاجی ریالی نکالی۔ اطلاعات کے مطابق بھٹکل سے 7ہزارسے زائد ماہی گیروں نے اس مظاہرے میں حصہ لیا۔

ماہی گیرتنظیموں کی طرف سے احتجاج اور نیشنل ہائی وے جام کرنے کے منصوبے کو دیکھتے ہوئے ملپے سے منگلورو تک پولیس نے ایک دن پہلے ہی حفاظتی بندوبست سخت کردیاتھااور خاص کر کے مضافاتی علاقوں میں چوکسی بڑھا دی تھی۔

ضلع ایس پی کی بھٹکل آمد: دوسری طرف ضلع شمالی کینرا کے ایس پی ونائیک پاٹل نے5جنوری کی شام کو بھٹکل پہنچ کر یہاں کے ماہی گیروں سے ملاقات کی اور انہیں سمجھانے اور مظاہرے سے باز رکھنے کی کوشش کرتے ہوئے کہا گم شدہ کشتی اور ماہی گیروں کو تلاش کرنے کا کام مسلسل کیا جارہا ہے۔ تینوں اضلاع کے ایس پی اور دیگر اعلیٰ پولیس افسران آپس میں تال میل کے ساتھ گم شدہ افراد کا پتہ لگانے میں مصروف ہیں ، ایسی صورت میں احتجاج کرنے اور ہائی وے جام کرنے سے مزید مسائل پید اہوسکتے ہیں اس لئے وہ لوگ احتجاج میں شامل ہونے کے لئے ملپے کی طرف نہ جائیں۔ لیکن ماہی گیروں نے ایس پی کی بات ماننے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ اگر ملپے میں احتجاجی مظاہرے کا اہتمام کرنے والے ماہی گیروں کے لیڈر انہیں منع کریں گے تو ہی وہ رک جائیں گے ورنہ وہ ہر حال میں مظاہرے میں شرکت کرنے جائیں گے۔خیال رہے کہ گزشتہ دو دنوں سے بھٹکل بندر پر تمام ماہی گیر کشتیاں لنگر انداز کردی گئی ہیں  اور ماہی گیری مکمل طور پر بندرکھی گئی ہیں۔

بھٹکل کے دو ماہی گیر لاپتہ: بھٹکل ماہی گیروں کے ایک لیڈر نے بتایا کہ پراسرار طور پر لاپتہ ہونے والی کشتی میں موجود ۷ ماہی گیروں میں بھٹکل کے دو ماہی گیر بھی شامل ہیں۔ اس لئے ان کے لئے پریشان ہونا فطری بات ہے۔ اسی جذبے کے تحت سرکار پر دباؤ بنانے کے لئے کیے جارہے مظاہرے میں بھٹکل سے سات ہزار سے زائد ماہی گیر احتجاج میں شریک ہونے ملپے پہنچ گئے ہیں، بتایا گیا ہے کہ  آمد ورفت کے لئے گاڑیاں مناسب مقدار میں دستیاب نہ ہونے سے مزید ماہی گیر ملپے جانے سے رہ گئے ہیں۔

اہل خانہ کی فکر مندی اور دکھڑا: بھٹکل سے تعلق رکھنے والے لاپتہ ماہی گیروں کے اہلِ خانہ بہت زیادہ فکرمند اور سکتے کی حالت میں ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ پیٹ پالنے کے لئے ہم لوگوں کو سمندر سے مچھلیوں کا شکار ہی ایک ذریعہ ہوتا ہے ۔ اب سمندر میں بھی اس طرح کے حادثات پیش آئیں تو پھر ہمیں زندگی بسر کرنے کے لئے دوسرا کونسا راستہ باقی رہے گا۔گم شدہ رمیش کے والد شنیار موگیر نے دکھ ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ماہی گیری کے لئے جانے والے آخر کہاں چلے گئے اور اب کہاں اور کس حال میں ہیں ، ہمیں یہ بتانے والا کوئی بھی نہیں ہے۔کسی عوامی منتخب نمائندے یا افسر نے ابھی تک ہمارے گھر پہنچ کرہماری کوئی خبر گیری نہیں کی ہے۔

مہاراشٹرا میں مچھلی کے باکس برآمد: تازہ اطلاعات کے مطابق مہاراشٹر کے سرحدی علاقے میں مچھلیوں سے بھرے ہوئے تین باکس سمندر میں تیرتے ہوئے پائے گئے ہیں، جس سے شبہ کیا جارہا ہے کہ شاید لاپتہ سمجھی جانے والی ماہی گیر کشتی گہرے سمندر میں کہیں غرقاب ہوگئی ہے۔مچھلیوں کے یہ باکس سمندر سے کنارے پر لائے گئے ہیں اور کوسٹ گارڈز کے افسران معائنہ کرنے کے لئے اس مقام پر پہنچ گئے ہیں۔اگر کشتی غرقاب ہوئی ہے تو کہاں ہوئی اورباقی مچھلی باکس یا دیگر سامان کہاں چلا گیا ان سوالات کے جوابات ملنے چاہئیں۔ دوسری طرف اس بات کا بھی شبہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ یہ کشتی ڈوبی نہ ہو، بلکہ کسی نے اسے اغوا کرلیا ہواور تحقیقاتی ٹیم کو غلط راستے پر ڈالنے کے لئے اب مچھلی کے کچھ باکس سمندر میں چھوڑ دئے گئے  ہوں۔اس ضمن میں تحقیقاتی افسران کسی قسم کا تبصرہ کرنے سے گریز کررہے ہیں اور تحقیقات تیزی سے آگے بڑھانے کی بات کہہ رہے ہیں۔

ملپے بندر سے ریالی کا آغاز: ملپے سے شروع ہونے والی ریالی کو جی شنکر نے ہری جھنڈی دکھائی جس میں 25ہزار سے زیادہ مظاہرین موجود تھے ۔ جو امبلپاڈی میں نیشنل ہائی وے پر’ راستہ روکو‘مظاہرہ کرنے کے لئے آگے بڑھی ۔اس کے بعد بیرونی اضلاع سے مزیدماہی گیر شامل ہوگئے ۔اس مظاہرے میں آٹورکشہ، ٹیمپو اور ٹیکسی یونین کے علاوہ تاجروں نے بھی تعاون کرتے ہوئے شمولیت کی۔اڈپی چکمگلورو کی ایم پی شوبھا کرندلاجے بھی ابتدا میں شریک رہیں۔

خیال رہے کہ وزیر داخلہ ایم بی پاٹل نے کل 5جنوری کو اڈپی پہنچ کرمتعلقہ افسران کے ساتھ میٹنگ کی تھی اور تلاشی مہم کی تفصیلات کا جائزہ لیا تھا۔ معلوم ہو اہے کہ وزیر ماہی گیری وینکٹ راؤ ناڈا گوڈا بھی8جنوری کو اسی مسئلے پر مزید گفتگو اور جائزے کے لئے اڈپی پہنچنے والے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل: عوامی مطالبات پر شرالی میں30 میٹر کے بجائے 45 میٹرپر ہائی وے تعمیر ہوگی، مرکزی وزیر ہیگڈے کی یقین دہانی

شرالی میں عوامی مطالبات کے مطابق ہی 45میٹر کی توسیع کے ساتھ قومی شاہراہ ،فلائی اوور کی تعمیر کے لئے ضروری اقدامات اٹھائے جانے کی مرکزی وزیر اننت کمارہیگڈے نے جانکاری دی۔

بھٹکل میں 24جنوری کو اتی کرم داروں کی اہم میٹنگ

فاریسٹ اتی کرم داروں کے مسائل ابھی جوں کے توں باقی رکھتے ہوئے کوئی حل نکل نہیں آنے پر 24جنوری کی صبح 30-10 بجے بھٹکل تعلقہ اتی کرم داروں کی میٹنگ انعقاد کئے جانے کی بھٹکل تعلقہ فاریسٹ اتی کرم ہوراٹ سمیتی کے صدر راما موگیر نے پریس ریلیز کے ذریعے جانکاری دی ہے۔

بھٹکل تعلقہ کے استاد ریاستی سطح کے برجستہ تقریری مقابلے میں اول

کرناٹکا حکومت تعلیمات عامہ کے زیرا ہتمام بنگلورو میں اساتذہ کے لئے منعقدہ ریاستی سطح کے برجستہ تقریری مقابلے میں تعلقہ کے سرکاری ہائر پرائمری اسکول کوڈسولو کے استاد پرمیشور نائک مرڈیشور اسٹیٹ لیول پر اول انعام کے حق دار بنے ہیں۔

ہم بے قصور تھے، مگر وہ ہماری زبان سمجھنے سے قاصر تھے، ایرانی حراست سے رہا ہونے کے بعد ماہی گیروں کا بھٹکل میں والہانہ استقبال

دبئی سمندر میں ماہی گیر ی کے دوران ایرانی پولیس کی تحویل میں رہنے کے بعد واپس لوٹنے والے کمٹہ اور بھٹکل کے ماہی گیروں کا کہنا ہے کہ ان کے لئے سب سے بڑا مسئلہ زبان کا تھا۔ ایرانی افسران ان کی زبان سمجھ نہیں رہے تھے ۔ اور ایرانی سمندری سرحد پار نہ کرنے کا یقین دلانے کے باوجود وہ لوگ ...

منڈگوڈ کی تبّتی کالونی میں فلمی انداز کا ڈاکہ۔ لاکھوں روپے نقد اورزیورات اڑا لے گئے لٹیرے

منڈگوڈ تعلقہ کی تبّتی کالونی میں سنیچر کے دن رات کے وقت فلمی انداز میں ڈاکہ ڈالا گیا جس میں گھر کے مالکان کو رسی سے باندھنے کے بعدلٹیروں نے گھر میں موجود 7لاکھ روپے نقد اور 4لاکھ روپے مالیت کے سونے کے زیورات پر ہاتھ صاف کردیا گیا۔

کرناٹک سدھ گنگا مٹھ کے سوامی شیو کمارکا 111 سال کی عمر میں انتقال؛ ریاست بھر میں ماتم؛ کل منگل کو اسکولوں میں چھٹی

ریاست کرناٹک کے معروف سوامی اور سدھ گنگا پیٹھ کے سربراہ 111سالہ شیو کمار سوامی جی آج پیر کو  انتقال کرگئے۔ ان کے انتقال پر پوری ریاست میں ماتم چھا گیا اور  وزیر اعلی ایچ ڈی کمارسوامی نے کل منگل کو  سبھی اسکولوں اور کالجوں میں چھٹی  کا اعلان کیا۔

ہم بے قصور تھے، مگر وہ ہماری زبان سمجھنے سے قاصر تھے، ایرانی حراست سے رہا ہونے کے بعد ماہی گیروں کا بھٹکل میں والہانہ استقبال

دبئی سمندر میں ماہی گیر ی کے دوران ایرانی پولیس کی تحویل میں رہنے کے بعد واپس لوٹنے والے کمٹہ اور بھٹکل کے ماہی گیروں کا کہنا ہے کہ ان کے لئے سب سے بڑا مسئلہ زبان کا تھا۔ ایرانی افسران ان کی زبان سمجھ نہیں رہے تھے ۔ اور ایرانی سمندری سرحد پار نہ کرنے کا یقین دلانے کے باوجود وہ لوگ ...

کاروار: بیچ سمندر میں کشتی اُلٹ گئی؛ دس سے زائد ہلاک ؛ راحت اور بچاو کا کام جاری، 25 سے زائد لوگ تھے کشتی پر سوار

کاروار میں کورم گڑھ جاترا کے لئے نکلی ایک کشتی بیچ سمندر میں ڈوب جانے سے کشتی پر سوار چھ لوگوں کی موت واقع ہونے کی اطلاع موصول ہوئی ہے، بتایا گیا ہے کہ مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہونے کا خدشہ ہے کیونکہ کشتی پر موجود 25 سے زائد لوگوں میں دو چار لوگوں کو ہی بچانے کی خبر ملی  ہے، ...

ناگور جمعہ مسجد میں خنزیر کے اجزاء پھینکے جانے کا معاملہ؛ بیندور پولس نے کیا 5 ملزمین کو گرفتار

ایک ہفتے قبل رات کے اندھیرے میں ناگور کی نور جمعہ مسجد کے کمپاؤنڈ میں شرپسندوں نے خنزیر کے کٹے ہوئے اجزاء پھینک کر فرقہ وارانہ کشیدگی پیدا کرنے کی کوشش کی تھی ، اس سلسلے میں بیندور پولیس نے 5ملزمین کو گرفتار کرلیا ہے۔

ہائی کمان کہے تو وزارت چھوڑ نے کیلئے بھی تیار : ڈی کے شیو کمار

ریاست میں سیاسی گہما گہمی کا فی تیز ہونے لگی ہے ۔ ایک طرف جہاں کانگریس اور جنتادل( سکیولر) اپنی مخلوط حکومت کو بچانے میں لگے ہیں وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) نے آپریشن کنول کے ذریعہ دیگر پارٹیوں کے اراکین اسمبلی کو خریدکر برسر اقتدار آنے کے حربے جاری رکھے ہیں۔