’’یہاں نابالغ بچیاں رہتی ہیں، بی جے پی اراکین ووٹ مانگنے کے لئے گیٹ کے اندر نہ آئیں!‘‘۔کیرالہ میں گھروں کے باہر لگ گئے پوسٹرس

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th April 2018, 9:44 PM | ساحلی خبریں | ملکی خبریں |

کوچی 14؍اپریل (ایس او نیوز) اتر پردیش کے اُناؤ اورجموں کے کٹھوا میں ہوئے عصمت دری معاملات میں بی جے پی لیڈروں کی شمولیت کی خبریں میڈیا میں عام ہونے اور اناؤ عصمت دری کیس کے اصل ملزم بی جے پی رکن اسمبلی کو گرفتار کیے جانے کے بعد کیرالہ کے بعض گھروں کے باہر انوکھے طرز کے پوسٹرز چسپاں کیے گئے ہیں، جس میں بی جے پی پر سیدھا نشانہ سادھا گیا ہے۔

سوشیل میڈیا پر وائرل ہوئی تصاویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ انگریزی اور ملیالم زبان میں گھروں کے داخلی گیٹس کے پاس والی دیواروں میں جو پوسٹرز ہیں اس میں لکھا ہے کہ :’’اس خاندان میں نابالغ بچیاں رہتی ہیں۔ بی جے پی اراکین ووٹ مانگنے کے لئے گیٹ کے اندر داخل نہ ہوں۔#بلاتکاری جنتا پارٹی‘‘ اس طریقے سے بی جے پی کے راج میں نابالغ بچیوں کے محفوظ نہ ہونے کے پیغام کو عام کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔

یاد رہے کہ اناؤ اجتماعی عصمت دری کیس میں بی جے پی کے رکن اسمبلی کو کلیدی ملزم بنایاگیا ہے اور اس کے بھائی و دیگر لوگوں کو بھی اس گھناؤنے جرم میں ملوث بتایا گیا ہے۔متاثرہ لڑکی کی طرف سے یوپی کے وزیراعلیٰ آدتیہ ناتھ کو چٹھی لکھ کر اپنی بپتا سنانے کے باوجود ملزم رکن اسمبلی کے خلاف کوئی اقدام نہیں کیا گیا تھا۔ الٹے متاثرہ لڑکی کے باپ کو گرفتار کرکے پولیس کسٹڈی کے دوران ہلاک کیے جانے کا الزام بھی سامنے آیاہے۔

الہ آباد ہائی کورٹ کی مداخلت کے بعد ملزم رکن اسمبلی کو سی بی آئی نے ایک دن پہلے گرفتارکرلیا ہے۔

جبکہ جموں کے ایک علاقے میں بنجاروں کی بستی سے آٹھ سالہ معصوم بچی آصفہ کو اغواکرکے گینگ ریپ کرنے کے بعدجس حیوانی طریقے سے اس کی لاش کو چیرپھاڑ کر رکھ دیا گیا تھا، اس سے پورے ملک میں غم وغصہ کی لہر دوڑ گئی۔ طرفہ تماشہ تو یہ ہوا کہ مندر کے گربھ گڑھی (حجرہ مقدس ) میں قید رکھ کر مسلم بچی کے ساتھ حیوانیت کا سلوک کرنے والے ملزموں کے حق میں بولنے اور ان کا دفاع کرنے کے لئے بی جے پی کے اراکین اسمبلی اور دیگر لیڈروں نے محاذ بنایا۔پولیس کو ملزموں کے خلاف چارج شیٹ داخل کرنے سے روکنے کے لئے غیرمسلم وکیلوں نے مورچہ کھڑا کیا۔ جب یہ سارے حقائق میڈیا کے ذریعے عام ہوئے تو زندہ ضمیر شہریوں کی جانب سے ہندوستان کے کونے کونے سے اس کے خلاف آوازیں بلند ہوئیں۔

بی جے پی کی اخلاقی پستی اور کردار کے کھوکھلے پن کے خلاف احتجاج اور اپنا ردعمل ظاہر کرنے کا جو سلسلہ چل پڑا ہے ،اسی کی ایک انوکھی مگر بہت ہی معنی خیز کڑی کیرالہ میں گھروں کے باہر لگے یہ پوسٹرزہیں۔اور یہ پیغام سوشیل میڈیا کے ذریعے ملک گیر پیمانے پر پھیل گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی کارکن کے قتل پر چکمگلور میں حالات کشیدہ 

چکمگلور ٹاؤن میں حالات اس وقت کشیدہ ہوگئے جب بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی) کے سٹی یونٹ جنرل سکریٹری محمد انور کو قتل کردیا۔ انور کے بھائی عبدالکبیر کی جنانب سے داخل کردہ ایف آئی آر کے مطابق انور بی جے پی لیڈر رگھوناتھ کے مکان سے واپس لوٹ رہاتھا کہ دو نامعلوم افراد نے ان پر تیز ...

کاسرگوڈ: ٹرین کی زد میں آکر 3سالہ معصوم ہلاک۔ 5سالہ بھائی کی حالت سنگین

کُمبلے میں پیش آنے والے ایک المناک حادثے میں ریلوے ٹریک کے قریب واقع اپنے گھر سے باہر نکلے ہوئے دو معصوم بچے میں ٹرین کی زد میں آگئے جس کی وجہ سے بلال(3سال) کی موت واقع ہوگئی ، جبکہ اس کے دوسرے بھائی اسماعیل(5سال) کوسنگین زخمی حالت میں منگلورو کے ایک اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

بھٹکل انجمن انجینرنگ کالج کی طالبہ کا میتھس سبجیکٹ میں لگاتار تین سمیسٹرس میں سو فیصد مارکس

بھٹکل انجمن انجینرنگ کالج کی چوتھے سمیسٹر میں زیرتعلیم  طالبہ سنیہا پی نائک  نے لگاتار تین سمیسٹرس میں میتھس سبجیکٹ میں سو نمبرات میں پورے سو نمبرات حاصل کرتے ہوئے نہ صرف کالج میں اول نمبر سے کامیاب ہوئی ہیں بلکہ یونیورسٹی لیول پر بھی اول مقام حاصل کیا ہے

کمٹہ میں تیز رفتار کار کی پولس کرین سے ٹکر؛ ایک خاتون جاں بحق، کئی زخمی

ضلع اُترکنڑا کے  کمٹہ میں ایک تیز رفتار کار ۔ پولس کرین سےٹکراگئی جس کے نتیجے میں کار پر سوار ایک خاتون موقع پر ہی جاں بحق ہوگئی، جبکہ کار پرسوارتین لوگوں کو شدید چوٹیں آئی ہیں۔ حادثہ آج اتوار صبح کمٹہ تعلقہ کے  دیوگی پنچایت حدود کے  تندراکولی نیشنل ہائی وے 66 پر پیش آیا۔

کنداپور میں بے قابو پٹرول ٹینکر سڑک کنارے واقع گھر کے آنگن میں گھس پڑا

ککنجے کراس پر ایک پٹرول ٹینکر بے قابو ہونے اور سڑک کنارے واقع گھر کے آنگن میں گھس پڑنے کا واقعہ پیش آیا ہے۔اطلاع کے مطابق پٹرول سے بھرا ہوا ٹینکر منگلورو سے شیموگہ کی طرف جارہاتھاکہ ہالاڈی کے پاس اچانک ڈرائیور اس پر قابو کھو بیٹھا اور سڑک کنارے پرموجودسبریا اچار نامی شخص کے ...

کشمیر 2002 کا گجرات بن سکتا ہے

آخر کشمیر میں گونر راج نافذ ہو ہی گیا۔ کشمیر کے لئے یہ کوئی نئی بات نہیں ہے۔ وہاں اب ساتویں بار گونر راج نافذ ہوا ہے ، ویسے بھی کشمیر کے حالات نا گفتہ بہہ ہیں۔ وادی کشمیر پر جب سے بی جے پی کا سایہ پڑا ہے تب ہی سے وہاں قتل و غارت کا سلسلہ جاری ہے ۔ پہلے تو مفتی سعید اور محبوبہ مفتی نے ...

راجستھان میں ’لو جہاد‘ کے نام پر ماحول خراب کرنے کی کوشش 

راجستھان کے ہنڈون میں لو جہاد کے نام پر بجرنگ دل پر ماحول بگاڑنے کا الزام لگا یا ہے، ہنڈون کے جس کانگریس کونسلر نفیس احمد پر بجرنگ دل نے لو جہاد کا الزام لگایا ہے، ان کا دعویٰ ہے کہ یہ مکمل طور پر ایک من گھڑت کہانی ہے۔

چھتیس گڑھ میں مضبوط طاقت ہے کانگریس، اتحاد کی ضرورت نہیں :پی ایل پنیا

آل انڈیا کانگریس کمیٹی جنرل سیکریٹری اور چھتیس گڑھ کے پارٹی معاملات کے انچارج پی ایل پنیا کا کہنا ہے کہ کانگریس ریاست میں مضبوط قوت ہے اور اس کے اندر کسی اتحاد کے بغیر اسمبلی انتخابات جیتنے کی طاقت ہے۔

ایمرجنسی نے جمہوریت کوقانونی تاناشاہی میں بدل دیا: ارون جیٹلی

مرکزی وزیر اور سینئر بی جے پی لیڈر ارون جیٹلی نے آج یاد کیا کہ کس طرح تقریبا چار دہائی قبل وزیر اعظم اندرا گاندھی کی زیر قیادت حکومت کی طرف سے ایمرجنسی لگائی گئی تھی اور جمہوریت کو آئینی آمریت میں تبدیل کر دیا گیا۔

گنگامیں جمع گندگی کولے کرنتیش کمارکا مرکزی حکومت پرسخت حملہ

بہار کے وزیر اعلی نتیش کماران دنوں ہر روز اپنی بات کوبے باکی سے رکھ رہے ہیں۔ گزشتہ اتوار کو ہوئی نیتی آیوگ کی میٹنگ میں انہوں نے پی ایم نریندر مودی کے سامنے ریاست کے مسائل رکھنے کے بعد انہوں نے مرکزی وزیر ماحولیات ہرش وردھن کو مشورہ دیا کہ دہلی واپس جاکر مرکزی سطح وزیر ...