میکسیکو زلزلہ: حکومت کے مطابق ہلاک ہونے والوں کی تعداد 200 سے تجاوز کر گئی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th September 2017, 8:26 PM | عالمی خبریں |

میکسکوسٹی،20ستمبر(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)میکسیکو میں منگل کی صبح شدید زلزلے کے باعث دارالحکومت میکسیکو سٹی اور تین دیگر ریاستوں میں کئی عمارتیں منہدم ہو گئی ہیں اور وزیر داخلہ کے مطابق ہلاک ہونے والوں کی تعداد 224 ہو گئی ہے۔حکام کے مطابق ملبے تلے دبے لوگوں کو نکالنے اور امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔کئی سکولوں میں بچوں کے ملبے تلے پھنسے ہونے کا بھی خدشہ کیا جا رہا ہے۔

سات اعشاریہ ایک کی شدت کے زلزلے کے بعد میکسیکو سٹی کا ہوائی اڈا بند کر دیا گیا ہے۔ شہر میں عمارتوں کو خالی کرا لیا گیا ہے۔تاہم یہ زلزلہ ایک ایسے وقت پر آیا ہے جب ملک میں 32 سال قبل آئے ایک شدید زلزلے کی یاد میں ڈرلز کی جا رہی تھیں۔ اطلاعات کے مطابق منگل کو آنے والے زلزلے کی وجہ سے کئی شہروں میں الارم بجے تاہم بہت سے شہریوں نے یہ خیال کیا کہ یہ اس تاریخی زلزلے کی یاد میں بجائے جا رہے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ مورلس ریاست میں 54، میکسیکو سٹی میں 30، پوبلا ریاست میں 26 اور میکسیکو سٹیٹ میں 9 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔میکسیکو کے صدر نے عوام سے درخواست کی ہے کہ وہ سڑکوں پر نہ نکلیں تاکہ امدادی کارروائیوں میں خلل پیدا نہ ہو۔میکسیکو میں حکام نے لوگوں سے کہا ہے کہ وہ سڑکوں پر سگریٹ نوشی نہ کریں کیونکہ زلزلے کے باعث گیس لائنیں تباہ ہوئی ہیں اور ممکن ہے کہ گیس لیک ہو رہی ہو۔زلزلے سے متاثرہ علاقوں میں فون کام نہیں کر رہے اور 38 لاکھ افراد بغیر بجلی کے ہیں۔میکسیکو سٹی کے میئر نے مقامی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے کہا کہ 44 جگہوں پر عمارتیں منہدم ہوئی ہیں اور امدادی کام جاری ہے۔یاد رہے کہ دو ہفتے قبل میکسیکو میں آٹھ اعشاریہ ایک شدت کا زلزلہ آیا تھا جس میں 90 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق زلزلے کا مرکز میکسیکو سٹی کے قریب پوبلا تھا اور اس کی گہرائی صرف 51 کلومیٹر تھی۔اطلاعات کے مطابق میکسیکو سٹی کے کئی علاقوں میں آگ بھڑک اٹھی ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

امریکی ڈرون حملے میں عمر خراسانی کی 9 ساتھیوں سمیت ہلاکت کی تصدیق

کالعدم تحریکِ طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) میں شامل ایک دہشت گرد گروپ جماعت الاحرار کا سربراہ عمر خالد خراسانی اپنے نو ساتھیوں سمیت افغانستان کے جنوب مشرقی صوبے پکتیا میں امریکا کے ایک ڈرون حملے میں ہلاک ہوگیا ہے۔

جبری نظر بندی کے سات سال بعد مہدی کروبی سے ملاقات کی اجازت

ایران میں سات سال سے گھر پر نظر بند اصلاح پسند رہ نما مہدی کروبی سے ملاقات پر پابندیوں میں نرمی کی گئی ہے۔ نظر بند رہ نما مہدی کروبی کے صاحبزادے حسین کروبی کا کہنا ہے کہ ایرانی قومی سلامتی کونسل نے سات سال کے بعد بعض سیاسی اور سماجی رہ نماؤں کو ان کے والد سے ملاقات کی اجازت دی ہے۔