بی جے پی کاجھنڈاتھامے بدمعاشوں نے وزیراعلیٰ نوین پٹنایک کے سیکرٹری کے گھر پرکیاحملہ،4 افرادگرفتار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th February 2018, 12:51 PM | ملکی خبریں |

کٹک160،11فروری(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کا پرچم تھامے کچھ بدمعاش اڑیسہ میں وزیر اعلی نوین پٹنائک کے دفتر میں تعینات ایک سینئر آئی اے ایس افسر کے یہاں واقع رہائشی کمپلیکس میں آج گھس گئے اور توڑ پھوڑ کرنے لگے۔ پولیس کمشنر وائی بی کھورانیا نے بتایا کہ واقعے کے بعد چار افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ بدمعاش وی کے پانڈین کے سرکاری کواٹر میں گھس گئے اور پھولدان کو نقصان پہنچایا۔ پانڈین وزیر اعلی نوین پٹنایک کے پرسنل سیکریٹری ہیں۔ رپورٹ کے مطابق پولیس نے کہا کہ بدمعاشوں نے گھر کے مرکزی دروازے میں گائے کاگوبربھی پھینکا اور الزام لگایا کہ افسران حکمراں بی جے ڈی کے لئے کام کر رہے ہیں اور سیاسی معاملات میں مداخلت کررہے ہیں۔گھر کے ایک ملازم نے دعویٰ کیاکہ حملہ آوروں نے خود کو بی جے پی کا کارکن بتایا اور وہ پارٹی کے جھنڈے اور تختے تھامے ہوئے تھے۔ انہوں نے ان پر حملہ کیا اور اس عمارت میں کھڑی کچھ گاڑیوں اورپھولدان کونقصان پہنچایا۔آئی اے آفیسرکا فوری تبصرہ نہیں مل سکا، جبکہ پولیس کمشنر نے سرکاری عہدیدار کے گھر پر حملے کوسنگین مسئلہ بتایااورکہاکہ اس کی مذمت کی جانی چاہئے۔ کھرانیا نے کہا کہ یہ برداشت نہیں کیا جائے گا اور سخت کارروائی کی جائے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

لندن میں سنگاپور کے پاسپورٹ پر رہ رہا نیرو مودی: ای ڈی ذرائع 

ڈائمنڈ کاروباری نیرو مودی اور ان کے خاندان کو کروڑوں روپے کے پنجاب نیشنل بینک فراڈ کیس کی تحقیقات میں شامل ہونے کے لئے نافذ کرنے والے ای ڈی کی طرف سے سمن جاری کئے جانے کے با وجود مافیا مودی نے ہدایات کو نظر انداز کرتے ہوئے بیرون ملک رہنا تو دور وہ تفتیش کاروں کی پہنچ سے بھی دور ...

کرناٹک میں فتح کے بعد راہل کا مودی کو پیغام ، وزیراعظم ملک اور سپریم کورٹ سے بڑا نہیں:راہل گاندھی 

کرناٹک میں یدی یورپا کے وزیر اعلی کے عہدے سے استعفیٰ دینے اور حکومت گرنے کے بعد راہل گاندھی نے بی جے پی اور پی ایم مودی پر جم کر حملہ کیا۔ ساتھ ہی کرناٹک میں بی جے پی کی شکست کو جمہوریت کی جیت بتایا۔

ہمیں اپنی چھٹیوں سے لطف اندوزہونے دیجئے : جسٹس سیکری

کرناٹک میں اقتدار کو لے کر تنازعہ پر سماعت مکمل کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے آج کہا کہ اب ہمیں اپنی چھٹیوں سے لطف اندوز ہونے دیجئے۔ عدالت عظمیٰ میں تین ججوں کے ایک بنچ کی صدارت کر رہے جسٹس اے کے سیکری نے جب عجیب انداز میں یہ تبصرہ کیا اس وقت عدالتی کمرہ قہقہوں سے گونج اٹھا۔