میکے داٹو سمیت تمام آبپاشی منصوبوں کی تکمیل حکومت کا مقصد ہے۔ڈی کے شیو کمار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 3rd December 2018, 12:30 PM | ملکی خبریں | ریاستی خبریں |

بنگلورو۔3؍ دسمبر (ایس او نیوز) ریاستی وزیر برائے آبی وسائل ڈی کے شیو کمار نے بتایا کہ ریاستی مخلوط حکومت کا مقصد ایک ایک قطرہ پانی کو بچانا ہے تاکہ اس سے ریاستی عوام اور کسانوں کو فائدہ پہنچے۔

یہاں اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے ڈی کے شیوکمار نے اس خیال کا اظہار کیا اور بتایا کہ مخلوط حکومت کے روبرو بے شمار چیلنجرس ہیں اس کے باوجود آبپاشی منصوبوں کو جاری کرنے کی حکومت پابند ہے۔انہو ں نے بتایا کہ اپر کرشنا پراجیکٹ۔3(یو کے پی ۔3) کے تحت جاری منصوبوں کے لئے درکار زمینوں کی حصولیابی حکومت کے لئے ایک بڑا مسئلہ ہے۔کیونکہ زمینات کے مالکوں اور کسانوں کو نئے لینڈ اکویزیشن ایکٹ کے تحت معاوضہ ادا کیا جانا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ تنگبھدرا ڈیم کا 31؍ ٹی ایم سی پانی ڈیم میں کچرا بھر جانے کی وجہ سے نا قابل استعمال ہوجائے گا اس لئے متبادل ڈیم تعمیر کرنے کے لئے ضروری قدم اٹھایا جائے گا۔انہو ں نے بتایا کہ مہادائی ٹرائی بیونل کا فیصلہ کی روشنی میں مہادائی اسکیم کو مکمل کرنا ہے۔اسی طرح ایتنا ہولے پراجیکٹ کو بھی مکمل کیا جانا ہے، جبکہ میکے داٹو اسکیم کو مخلوط حکومت سے ہر طرح کی اجازت حاصل کی جائے گی اور اس اسکیم کی ریاست کو ضرورت کے تعلق سے تملناڈو حکومت کو تفصیل پیش کرکے اعتماد میں لیا جائے گا۔

انہو ں نے بتایا کہ شہر بنگلور تیزی سے پھیلتا جارہا ہے اور مستقبل میں پانی کی مانگ میں اضافہ ہوگا اور میکے داٹو اسکیم کی تکمیل سے شہر بنگلور کی آبی ضرورت پوری ہوگی۔

شیوکمار نے بتایا کہ کاویری، کرشنا سمیت ریاست کے تمام علاقوں کے آبی وسائل ورابطہ کو ترقی دی جائے گی۔اس کے علاوہ مختلف آبپاشی اسکیموں کو وقت مقررہ پر پورا کیا جائے گا۔انہوں نے بتایا کہ تقریباً ایک لاکھ کروڑ لاگت کے مختلف پراجیکٹس جاری کئے جائیں گے جن میں اکثر کاموں کے لئے ٹنڈر کی کارروائی مکمل ہوچکی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

این پی ایف منی پور میں بی جے پی زیر قیادت حکومت سے حمایت واپس لے گی: نیومئی

منی پور میں ناگا پیپلز فرنٹ (این پی ایف) نے ریاست میں بی جے پی زیر قیادت حکومت سے حمایت واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔این پی ایف کی منی پور صوبہ یونٹ کے صدر اوانگبو نیومئی نے کہا کہ ان کی حمایت واپس لینے کے لئے مجبور ہونا پڑا کیونکہ بڑی پارٹیاں چھوٹی پارٹیوں کوکمترسمجھ رہی تھیں۔

لوک سبھا انتخابات2019:تنازعات میں پی ایم مودی کی کیدارناتھ یاترا، ٹی ایم سی نے ای سی سے کی شکایت، کہا، ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی

وزیر اعظم مودی کی کیدارناتھ یاترا پر تنازعہ ہو گیا ہے۔ترنمول کانگریس نے پی ایم مودی کے دورے کے لیے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی قرار دیا ہے اور اس کی شکایت الیکشن کمیشن سے کی ہے۔وہیں مودی آج بدری ناتھ دھام کے دورے پر ہیں۔

لوک سبھا انتخابات 2019: غیر بھاجپائی حکومت بنانے کی کوششیں تیز، چندرا بابو نائیڈو نے کی راہل گاندھی اور شرد پوار سے بات چیت

آندھرا پردیش کے وزیر اعلی اور ٹی ڈی پی سربراہ این چندرابابو نائیڈو نے کانگریس صدر راہل گاندھی اور این سی پی سربراہ شرد پوار سمیت اپوزیشن کے کئی سرکردہ لیڈروں کے ساتھ اتوار کو دوسرے دور کی بات چیت کی۔

بنگلور میں 23/ مئی کو ووٹوں کی گنتی کے دوران امتناعی احکامات نافذ

23 مئی کو لوک سبھاانتخابات کے نتائج کا اعلان ہورہا ہے۔ انتخابات کے نتائج ظاہر ہونے کے مرحلے میں کوئی ناخوشگوار صورتحال پیدا نہ ہونے پائے اس کے لئے شہر کے پولیس کمشنر سنیل کمار نے 23مئی کی صبح چھ بجے سے شہر بھر میں امتناعی احکامات نافذ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

کرناٹک کے کندگول اور چنچولی حلقوں میں آج ہوگی پولنگ؛ 85 پولنگ بوتھوں کو قرار دیا گیا ہے حساس

ریاست کرناٹک  کے دو اسمبلی حلقوں کندگول اور چنچولی کے لئے آج اتوار کو  ووٹ ڈالے جائیں گے۔ دونوں حلقوں پر کامیابی درج  کرنے کے لئے کانگریس جے ڈی ایس اتحاد اور بی جے پی نے ایڑی چوٹی کا زور لگایا ہے۔

محمد محسن کی فرض شناسی کو پھر نشانہ بنانے کی کوشش، الیکشن کمیشن تادیبی کارروائی کے لئے ہائی کورٹ سے رجوع

اڈیشہ میں انتخابی مشاہد کے طور پر متعین کرناٹک کیڈر کے آئی اے ایس افسر محمد محسن نے وزیراعظم مودی کے ہیلی کاپٹر کی تلاشی لے کر جس فرض شناسی کا ثبوت پیش کیا اسے فرض شکنی قرار دیتے ہوئے الیکشن کمیشن نے نہ صرف انہیں معطل کردیا بلکہ اب ایسا لگتا ہے کہ الیکشن کمیشن نے انہیں نشانہ ...