دہشت گردی سے نمٹنے کے لئے میگھالیہ حکومت کر رہی ہے کوشش: وزیر داخلہ کے سنگما

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th March 2018, 11:17 AM | ملکی خبریں |

شیلانگ،13؍ مارچ (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)میگھالیہ کے وزیر داخلہ جیمس کے سنگما نے کہا کہ نئی حکومت دہشت گردی اور جرائم سے نمٹنے کے لئے کوشش کر رہی ہے۔کل جی این ایل اے کے آٹھ کارکنوں نے سنگما کے سامنے پولیس ہیڈکوارٹر میں سرینڈر کیا۔اس کے بعد سنگما نے کہاکہ میگھالیہ حکومت ریاست کو دہشت گردوں اور مجرموں سے نجات کے لیے اپنے مقصد کے تئیں مصروف عمل ہے۔جی این ایل اے کے کمانڈر ان چیف سوہن ڈی شیرا کو 24 فروری کو مار گرایا گیا تھا جس کے بعد ان کارکنوں نے آگے ہتھیار ڈال دئیے۔سنگما نے کہا کہ میگھالیہ میں یہ ’دہشت گردی کے اختتام کا آغاز ہے۔انہوں نے ریاست میں دیگر دہشت گرد تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ تشدد کو چھوڑ کر لوٹ آئیں۔انہوں نے بتایاکہ ہتھیار ڈالنے والے کارکنوں کو بحالی پیکیج ملے گا۔دہشت گردوں نے کل دو اے کے -56، انساس رائفل، 9 ملی میٹر کا ایک پستول، گلاک-19 اور دیگر ہتھیار بھی سونپ دئیے۔ سنگما نے کارکنوں کی تعریف کی اور کہا کہ ہتھیار ڈالنے کے لئے جرات وہمت کی ضرورت ہے۔میں انہیں اور ان کے خاندان کو مبارکباد دیتا ہوں۔محکمہ پولیس نے کارکنوں کو ہتھیار ڈالنے کے لئے سمجھا نے والے چرچ کے مذہبی رہنماؤں ریورنڈ ایس ٹی سنگما اور ریو کڑی سنگما کا احترام بھی کیا۔

ایک نظر اس پر بھی

جموں و کشمیر میں مودی سرکارکی پالیسی ناکام ہوئی : محبوبہ مفتی

پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) صدر اور سابقہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان میں جموں وکشمیر پولیس کے تین ایس پی اووز کو اغوا کے بعد گولی مار کر ہلاک کرنے کے واقعہ پر اپنا ردعمل میں کہا ہے کہ وادی کشمیر میں مرکزی حکومت کی طاقت پر مبنی پالیسی ناکام ثابت ہوئی ...

کشمیرکے بدترحالات کے لیے مودی سرکارذمہ دار:کانگریس

کانگریس نے کہاہے کہ پچھلے 24گھنٹے کے دوران جموں کشمیر میں تین پولیس جوانوں کے اغواکے بعد قتل اور دہشت گردوں کے خوف سے دس پولیس جوانوں کے مبینہ استعفیٰ کے واقعات تشویش ناک ہیں اور ریاست کے ان حالات کے لیے مودی حکومت ذمہ دارہے۔