منگلورو کمشنریٹ کے حدود میں15دنوں کے لئے پولیس ایکٹ کی دفعہ 35نافذ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th July 2017, 3:00 PM | ساحلی خبریں |

منگلورو ،16؍جولائی (ایس او نیوز)جنوبی کینرا میں گزشتہ ڈیڑھ دومہینوں سے بڑھتی ہوئی فرقہ وارانہ کشیدگی اور بد امنی کے پس منظر میں منگلورو کمشنریٹ کے حدود میں15دنوں کے لئے پولیس ایکٹ کی دفعہ 35نافذکردی گئی ہے۔

16جولائی کی نصف شب سے لاگو کی گئی پولیس ایکٹ1963 کی اس دفعہ کے تحت عوامی سطح پر وہ تمام سرگرمیاں قابل گرفت جرم ہونگی جس سے نقض امن کا خدشہ ہوتاہے۔ اس کے تحت تقریریں کرنا، ہنگامے کھڑا کرنا،عوام کو مشتعل کرنے کے لئے گانااورموسیقی بجانا،اشارے کنایوں سے طنز کرنا، مذاق اڑانا، ممکری کرنا، تصاویر، علامات، پلے کارڈ یا دوسری چیزوں کی نمائش کرنا جو پولیس افسران کی نظر میں عوامی مزاج اور اخلاقیات کے منافی ہوں،جس سے عوام کا تحفظ میں خطرے پڑ سکتا ہو یا پھر کسی جرم کے لئے اکسانے کا کام کیا جاتا ہو، ایسی تمام سرگرمیوں کا ارتکاب جرم تصور کیاجائے گا اور اس کے خلاف قانونی کارروائی ہوگی۔

اس دفعہ کے تحت پتھروں کو جمع کرنے، لاشوں اورکسی کے پتلوںeffigyکی عوامی میں نمائش کرنے،یا کوئی بھی ایسا عمل کرنے پر پابندی رہے گی جو شائستگی اور شرافت کے خلاف ہو۔ اور امن عامہ کے حق میں نقصان دہ ہو۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل:راگھویندرا بھٹ اور وٹھل داس کو بھٹا کلنکا ایوارڈ : یوم صحافت کی مناسبت سے جرنالسٹ اسوسی ایشن کا خصوصی پروگرام

بھٹکل جرنالسٹ اسوسی ایشن کی طرف سے ہرسال یوم صحافت کے موقع پر دئیے جانےو الے ’’بھٹاکلنکا ‘‘ ضلعی ایوارڈ کے لئے ریاست کے مشہور کنڑا روزنامہ ’’پرجا وانی ‘‘ کے بھٹکل رپورٹر راگھویندر بھٹ جالی اور ہبلی زون ہوسدگنت کے وٹھل داس کامت کو منتخب کیا گیا ہے۔

منگلورو:ریاست کے تمام غیر پکوان گیس باشندوں کو مفت میں پکوان گیس کا کنکشن :انیل بھاگیہ اسکیم کا بہت جلد اجراء : وزیر یوٹی قادر

ریاست میں کئے گئے سروے کےمطابق قریب 35.50لاکھ شہریوں کے پاس پکوان گیس کی سہولت نہیں ہے، وزیرا علیٰ انیل بھاگیہ (وزیر اعلیٰ گیس اسکیم )کے تحت ان تمام مستحقین کو مفت میں پکوان گیس کا کنکشن دیاجائے گا،اس طرح پورے ملک میں ریاست کرناٹکا وہ پہلی ریاست ہوگی جس کے تمام باشندے پکوان گیس کی ...

کیا آنند اسٹونیکر کاروار سے جے ڈی ایس کے امیدوار ہونگے؟

حالانکہ اگلے اسمبلی انتخابات کے لئے ا بھی کافی عرصہ باقی ہے ، مگر امیدواری کی آس لگانا اور ٹکٹ پانے کے لئے جد وجہد کرناابھی سے سیاسی لیڈروں کے معمولات میں شامل ہوگیا ہے۔کاروار سے ملنے والی خبروں پر اگر بھروسہ کریں تو آنند اسنوٹیکر بی جے پی سے پالا بد ل کر جنتا دل میں داخل ہونے ...