منگلورو قریشی پر ٹارچر اور پی ایف آئی پر لاٹھی چارج کے معاملے میں اچانک یو ٹرن؛ کانگریس لیڈران نے لگایا وزراء کو بدنام کرنے کا الزام

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 21st April 2017, 12:48 AM | ساحلی خبریں |

منگلورو:20/اپریل(ایس اؤنیوز) قریشی پر مینگلور پولس کے ہاتھوں تھرڈ ڈگری استعمال کرنے اور احتجاج کرنے والے پی ایف آئی کارکنوں پر لاٹھی چارج کرنے کے بعد گذشتہ روزیونائیٹیڈ مسلم فرنٹ نے اعلان کیا تھا کہ 2/ مئی کو مینگلور چلو پروگرام منعقد کیا گیا ہے جس میں 60 اداروں کی جانب سے 25 ہزار سے زائد لوگ شرکت کریں گے اور قریشی پر ہوئے ظلم پر انصاف ملنے تک جدوجہد جاری رکھیں گے۔ لیڈران نے الزام لگایا تھا کہ ضلع میں 4لاکھ مسلم رائے دہندگان کے ووٹوں سے اقتدار حاصل کرنے والے  مسلم لیڈران ملت پر ہونے والے ظلم کے خلاف کوئی آواز نہیں اٹھار ہے ہیں، انہوں نے اس بات کا بھی الزام لگایا تھا کہ ریاست میں کانگریس کی حکومت ہونے کے باوجود مسلمانوں پر ظلم وستم ہورہا ہے اور ضلع جنوبی کینرا کے کانگریسی لیڈران خاموش ہیں۔ مگر اب اس معاملے نے اچانک یو ٹرن لے لیا ہے۔ اور کانگریس نے آج پریس کانفرنس کا انعقاد کرتے ہوئے کچھ مسلم لیڈران پر اپنے ہی وزراء اور لیڈران کی بے عزتی اور توہین کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔

مینگلور پارٹی دفتر میں پریس کانفرنس کے ذریعے بات کرتے ہوئے کانگریس سے تعلق رکھنے والے ضلع پنچایت ممبران ایم ایس محمد اور شاہ الحمید نے کہاکہمختلف موقعوں پر اعلیٰ عہدوں پر فائز رہتے ہوئے سیاسی فائدہ اٹھانے والے ہی آج وزراء اور لیڈران کی ہتک اور توہین کررہے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ سی سی بی پولس کے ذریعے احمد قریشی پر ہونے والے ظلم کے بہانے کانگریس پارٹی کے ہی چند لوگ ریاستی کابینہ کے وزراء رماناتھ رائی اور یوٹی قادر اور پارٹی لیڈران پر الزام تراشی کرتے ہوئے ان کی توہین کرنا قابل مذمت ہے۔ انہوں نے بتایا کہ رماناتھ رائی کی  سیکولر فکر کیاہے  یہ سبھی کوپتہ ہے، اقلیتوں کے متعلق انہیں جو فکر ہے وہ سب جانتے ہیں، اقلیتوں پر جب بھی ظلم ہواہے انہوں نے مضبوطی کے ساتھ آواز اٹھائی ہے ، یو ٹی قادر بھی اپنے وزارت کے عہدے پر فائز رہتے ہوئے بہترین کام انجام دے رہے ہیں، کچھ لوگوں کو ان کی عوام میں مقبولیت  اور ترقی سے حسد ہورہاہے اسی لئے ان کو غلط طورپر پیش کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

کانگریسی لیڈران کے مطابق جہاں تک احمد قریشی کا معاملہ ہے ریاستی حکومت نے معاملے کی جانچ کی ذمہ داری سی آئی ڈی کے سپرد کی ہے، جانچ کے بعد پتہ چلے گا کہ سچائی کیا ہے۔ لیکن کچھ لوگ احمد قریشی کی صحت میں سدھار کے بجائے بگاڑ چاہتے ہیں، اور اسی کے ذریعے اپنی سیاست چمکانے کی کوشش  کررہے ہیں۔ پریس کانفرنس میں نائب میئر رجنیش ، ششی دھر ہیگڈے ، کارپوریٹر نوین ڈیسوزا، پارٹی لیڈران سنتوش کمار برکے وغیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

مینگلور کے قریب اُلال سمندر میں دو نوجوان غرقاب؛ ایک کی لاش برآمد دوسرے کی تلاش جاری

قریبی علاقہ اُلال  میں بحر عرب کی اونچی اُٹھتی موجوں کے ساتھ  کھیلنے کے دوران دو نوجوان غرقاب ہوگئے، جس میں سے ایک کی لاش برآمد کرلی گئی ہے ، البتہ دوسرا سمندر میں غرق ہوکر لاپتہ ہوگیا ہے، جس کی تلاش جاری ہے۔ حادثہ آج بدھ کی صبح پیش آیا۔

کاروار کے بیت کول میں پوسٹ ماسٹرکی دھوکہ دہی سے غریب کھاتے دار کنگال ؛ پچاس لاکھ کا غبن کرنے والا پوسٹ ماسٹر فرار

بیت کول کے سب پوسٹ آفس میں مختلف کھاتوں میں اپنی رقم جمع کرنے والے غریب ماہی گیروں کوجن میں زیادہ تر خواتین شامل ہیں، وہاں کے پوسٹ ماسٹر نے اپنی دھوکہ دہی سے کنگال کردیا ہے۔

تمباکوکنٹرول قانون کی پابندی نہ کرنے والے دکانداروں کے خلا ف اقدامات

کرناٹکا میں تمباکو اور اس سے بننی والی چیزوں پر قابو پانے کے لئے جاری کیے گئے قانونThe Cigarettes and Other Tobacco Products Act (COTPA), 2003, کو نتیجہ خیز بنانے کے لئے ضلع انتظامیہ اور محکمہ پولیس کے اشتراک سے دکانوں کا معائنہ کرنے کی ایک مہم چلائی گئی اورقانون کی خلا ف ورزی کرنے والے دکانداروں کے خلاف ...

بھٹکل کے مسلمانوں کے بارے میں ایک غیر مسلم کے تاثرات؛ متعصب ذہنیت سے آگے بسنے والے اچھے لوگ

وجے وانی (کنڑا روزنامہ ) کے فیس بُک پیچ پر ہریش بنداگدّے نامی ایک شخص نے بھٹکل اور بھٹکل کے نوجوانوں کے تعلق سے اپنے تاثرات کا کس طرح اظہار کیا ہے، اُن ہی کی زبانی یہاں اُس کا اُردو ترجمہ پیش کیا جارہا ہے۔ 

میسورو:سرکاری ہال میں سیمینارکے دوران بیف کھانے پر تنازعہ 

چارواک سوشیل اینڈ کلچرل ٹرسٹ کے زیر اہتمام کلامندر میسورو کے مانیانگلا ہال میں 145Food Habits and Freedom of Expression146 کے عنوان سے جو سیمینار منعقد کیا گیا تھااس کے دوران اسٹیج پر بیف کھانے اور کھلانے کی وجہ سے ہندتووادی تنظیموں کی طرف سے اعتراضات اور مذمت کے ساتھ ایک نیا تنازعہ کھڑا ہوگیا ...