بی جے پی نے ممتا حکومت کو کیا چیلنج ، کہا ہمت ہے تو رتھ یاترا روک کر دکھائیں

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 6th December 2018, 8:47 PM | ملکی خبریں |

کوچ بہار(مغربی بنگال)،06؍ دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) بھارتیہ جنتا پارٹی کی مغربی بنگال یونٹ کے صدر دلیپ گھوش نے جمعرات کو الزام لگایا کہ ترنمول کانگریس حکومت اپوزیشن کی آواز کو دبانے کی کوشش کر رہی ہے۔انہوں نے ترنمول کانگریس کو ریاست میں ان کی پارٹی کے رتھ یاترا پروگرام کو روکنے کا چیلنج دیا۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی کا عدلیہ پر پورا بھروسہ ہے اور یہاں جمعہ سے شروع ہونے والے رتھ یاترا کے پروگرام کے لئے اجازت لینے کے واسطے پارٹی نے عدالت کا رخ کیا ہے۔ گھوش نے کہاکہ ہم جانتے تھے کہ ہمیں پروگرام کے لئے اجازت نہیں دیں گے۔اس لئے ہم نے پولیس کی اجازت کے لئے تقریبا ایک ماہ قبل ریاستی حکومت کا رخ کیا تھا۔لیکن وہ اس معاملے میں تاخیر کرتے رہے اور اب آخری لمحے میں وہ ہمیں اجازت دینے سے انکار کر رہے ہیں۔

بی جے پی نے بدھ کو کلکتہ ہائی کورٹ کا رخ کیا تھا۔پارٹی نے دعوی کیا تھا کہ مغربی بنگال انتظامیہ اور پولیس سات دسمبر سے ریاست میں نکالی جانی والی تین ریلیوں کے لئے ان کی درخواست پر کوئی جواب نہیں دے رہی تھی۔ بی جے پی صدر امت شاہ کو سات دسمبر کو ریاست میں تین رتھ یاترا پر مبنی پارٹی کی جمہوریت بچاؤ ریلی کی شروعات کرنی ہے۔گھوش نے کہا کہ ٹی ایم سی حکومت کے پاس سیاسی پروگرام منعقد کرنے کی اجازت دینے سے انکار کرنے کا آئینی حق نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہر سیاسی پارٹی کے پاس اپنا پروگرام منعقد کرنے کا حق ہے۔گھوش نے کہا ٹی ایم سی ہمیں روکنے والے کون ہوتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ٹی ایم سی کا ارادہ ایک تنازعہ اور ناخوشگوار صورت حال پیدا کرنے کا ہے تاکہ وہ ہم پر الزام لگا سکیں۔لیکن ہم ان کی زد میں نہیں آئیں گے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ ریاست کے مختلف حصوں میں ٹی ایم سی سے جڑے غنڈوں کے ذریعہ بی جے پی کارکنوں کو دھمکی دی جا رہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

وزیراعظم مودی نے کابینہ سمیت سونپا صدرجمہوریہ کو استعفیٰ، 30 مئی کو دوبارہ حلف لینےکا امکان

لوک سبھا الیکشن کے نتائج کے بعد جمعہ کی شام نریندرمودی نے وزیراعظم عہدہ سے استعفیٰ دے دیا۔ ان کے ساتھ  ہی سبھی وزرا نے بھی صدرجمہوریہ کواپنا استعفیٰ سونپا۔ صدر جمہوریہ نےاستعفیٰ منظورکرتےہوئےسبھی سے نئی حکومت کی تشکیل تک کام کاج سنبھالنےکی اپیل کی، جسے وزیراعظم نےقبول ...

نوجوت سنگھ سدھوکی مشکلوں میں اضافہ، امریندر سنگھ نے کابینہ سے باہرکرنے کے لئے راہل گاندھی سے کیا مطالبہ

لوک سبھا الیکشن میں زبردست شکست کا سامنا کرنے والی کانگریس میں اب اندرونی انتشار کھل کرباہرآنے لگی ہے۔ پہلےسے الزام جھیل رہے نوجوت سنگھ سدھو کی مشکلوں میں اضافہ ہونےلگا ہے۔ اب نوجوت سنگھ کوکابینہ سےہٹانےکی قواعد نے زورپکڑلیا ہے۔

اعظم گڑھ میں ہارنے کے بعد نروہوا نے اکھلیش یادو پر کسا طنز، لکھا، آئے تو مودی ہی

بھوجپوری سپر اسٹار نروہوا (دنیش لال یادو) نے لوک سبھا انتخابات کے دوران سیاست میں ڈبیو کیا تھا،وہ بی جے پی کے ٹکٹ پر یوپی کی ہائی پروفائل سیٹ اعظم گڑھ سے انتخابی میدان میں اترے تھے لیکن اترپردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو کے سامنے نروہا ٹک نہیں پائے۔