ٹکٹ سے محروم کانگریسیوں کو احتجاج نہ کرنے ملیکارجن کھرگے کی اپیل

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th April 2018, 12:58 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 16؍اپریل(ایس او نیوز) کانگریس پارٹی اعلیٰ کمان کی طرف سے ٹکٹوں کی تقسیم کے بعد ریاست کے بعض حصوں میں پارٹی کارکنوں کی طرف سے کئے گئے احتجاج پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ریاستی لوک سبھا میں کانگریس پارٹی لیڈر ملیکارجن کھرگے نے پارٹی کارکنوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اس طرح کا کوئی احتجاج نہ کریں۔ کیونکہ اس سے انتخابات میں پارٹی کی ساکھ متاثر ہوگی ۔

کھرگے  نے کہاکہ بی جے پی کو اقتدار سے دور رکھنے کی خاطر پارٹی کے جن لوگوں کو ٹکٹ ملا ہے ان تمام کو کامیاب بنانے کے لئے تمام ارکان اسمبلی اور کارکنوں کو مل جل کر کام کرنا چاہئے، انہوں نے یقین دلایا کہ جن لوگوں کو ٹکٹ نہیں ملا ہے اقتدار ملنے کے بعد پارٹی ان کے لئے مناسب مقام اور مرتبے کا خیال ضرور رکھے گی۔

ملیکارجن کھرگے نے کانگریسیوں سے اپیل کی کہ وہ احتجاج کرکے بلاوجہ پارٹی کی ساکھ کو متاثر نہ کریں۔ اس دوران بتایاجاتاہے کہ ٹکٹوں کی تقسیم کے معاملے میں وزیراعلیٰ سدرامیا کے غلبے کو لے کر ملیکارجن کھرگے سمیت پارٹی کے بعض لیڈر خوش نہیں ہیں، لیکن صدر کانگریس راہول گاندھی نے تاکید کی ہے کہ کسی بھی حال میں پارٹی کو اقتدار پر لانا تمام لیڈروں کی ذمہ داری ہوگی، اس میں اگر کسی سے بھی کوتاہی ہوگی تو انہیں جواب دہ بنایا جائے گا، اس کی وجہ سے کوئی بھی لیڈر اپنی ناراضی کھل ظاہر نہیں کرپارہا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ ملیکارجن کھرگے امیدواروں کے انتخاب کے مرحلے میں اعلیٰ کمان کے پاس اپنی ایک الگ فہرست کے ساتھ پہنچے تھے ، لیکن سدرامیا کی فہرست کے آگے ان کی ایک نہیں چلی ، کانگریس پارٹی نے جن 218امیدواروں کااعلان کیا ہے ان میں سے 150 سے زائد امیدوار ایسے ہیں جن کے ناموں کی سفارش سدرامیا نے کی ہے، جبکہ دیگر لیڈران کے تجویز کردہ بیشتر امیدواروں کے نام فہرست میں شامل نہیں ہیں۔ ٹکٹوں کی تقسیم کے بعد قدیم کانگریسیوں نے یہ تاثر دینے کی کوشش کی ہے کہ سدرامیا جنتادل کے اپنے پرانے ساتھیوں کو کانگریس میں لاکر ان کی باز آباد کاری کی کوشش کررہے ہیں۔ 

ایک نظر اس پر بھی

کیا میسورو میں سدارامیا کے خلاف جنتا دل (ایس )نے بی جے پی کے ساتھ ہاتھ ملایا ہے ؟

ایسا لگتا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی اور جنتا دل(ایس)نے میسورو میں صرف چامنڈیشوری سیٹ کے تعلق سے ہی نہیں بلکہ میسورو ضلع کی تمام اسمبلیوں سیٹوں پر وزیراعلیٰ سدارامیا کے خلاف آپس میں گٹھ جوڑ کرلیا ہے۔

کرناٹک انتخابات:بی جے پی نے سات امیدواروں کی چوتھی فہرست جاری کی

کرناٹک انتخابات کے سلسلہ میں بی جے پی کی سنٹرل کمیٹی نے سات امیدواروں کی چوتھی فہرست جاری کی ہے ۔جی آر پراوین پاٹل کو بھدراوتی حلقہ،جگدیش کو یشونت پورحلقہ،للیش ریڈی کو بی ٹی ایم لے آوٹ حلقہ،شریمتی ایچ لیلاوتی کو رامانگرم حلقہ،شریمتی نندنی گوڑا کو کنکاپور حلقہ،ایچ کے سریش کو ...

مواخذہ مسئلہ: کانگریس کو دستورپر سوال اٹھانے کا کوئی اخلاقی حق نہیں :اننت کمار

پارلیمانی امور کے وزیرو بی جے پی کے سینئر لیڈر اننت کمار نے آج کہا ہے کہ کانگریس جس نے ملک میں ایمرجنسی نافذ کی تھی،کو ملک کی دستوری اتھارٹی اورجمہوریت پر سوال اٹھانے کا کوئی اخلاقی حق حاصل نہیں ہے ۔

کرناٹک میں بی جے پی کا الیکشن کمیشن پرجانبداری برتنے کا الزام 

بی جے پی نے انگور کھٹے کی مانند اب یہ الزام لگارہی ہے کہ الیکشن کمیشن ریاست میں کانگریس کی جیت کے لئے کام کررہا ہے۔ کرناٹک میں بی جے پی امور کے انچارج مرلی دھر راؤ نے آج ایک اخباری کانفرنس میں الزام لگایا کہ ریاستی الیکشن کمیشن کانگریس کی ایماء پر متحرک ہے،

امبریش کے معاملے پر تبصرے سے سدرامیا کا انکار

منڈیا اسمبلی حلقے سے کانگریس امیدوار کے طور پر میدان میں اترنے میں سابق وزیر اور اس حلقے کے موجودہ رکن اسمبلی امبریش کے تذبذب پر تبصرہ کرنے سے وزیراعلیٰ سدرامیا نے انکار کردیا ہے۔

کرناٹک لوک آیوکتہ وشواناتھ شٹی خدمات سے رجوع

کرناٹک لوک آیوکتہ وشواناتھ شٹی جن پر 7؍مارچ کو ان کے چیمبر میں حملہ آور کی جانب سے چاقو سے حملہ کرتے ہوئے زخمی کردیا گیا تھا، اسپتال میں علاج کے بعد آج خدمات سے رجوع ہوگئے ۔جستس شٹی کے سینہ ، ہاتھ اور گردن پر چاقو سے حملہ کیا گیا تھا ۔