ٹکٹ سے محروم کانگریسیوں کو احتجاج نہ کرنے ملیکارجن کھرگے کی اپیل

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th April 2018, 12:58 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 16؍اپریل(ایس او نیوز) کانگریس پارٹی اعلیٰ کمان کی طرف سے ٹکٹوں کی تقسیم کے بعد ریاست کے بعض حصوں میں پارٹی کارکنوں کی طرف سے کئے گئے احتجاج پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ریاستی لوک سبھا میں کانگریس پارٹی لیڈر ملیکارجن کھرگے نے پارٹی کارکنوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اس طرح کا کوئی احتجاج نہ کریں۔ کیونکہ اس سے انتخابات میں پارٹی کی ساکھ متاثر ہوگی ۔

کھرگے  نے کہاکہ بی جے پی کو اقتدار سے دور رکھنے کی خاطر پارٹی کے جن لوگوں کو ٹکٹ ملا ہے ان تمام کو کامیاب بنانے کے لئے تمام ارکان اسمبلی اور کارکنوں کو مل جل کر کام کرنا چاہئے، انہوں نے یقین دلایا کہ جن لوگوں کو ٹکٹ نہیں ملا ہے اقتدار ملنے کے بعد پارٹی ان کے لئے مناسب مقام اور مرتبے کا خیال ضرور رکھے گی۔

ملیکارجن کھرگے نے کانگریسیوں سے اپیل کی کہ وہ احتجاج کرکے بلاوجہ پارٹی کی ساکھ کو متاثر نہ کریں۔ اس دوران بتایاجاتاہے کہ ٹکٹوں کی تقسیم کے معاملے میں وزیراعلیٰ سدرامیا کے غلبے کو لے کر ملیکارجن کھرگے سمیت پارٹی کے بعض لیڈر خوش نہیں ہیں، لیکن صدر کانگریس راہول گاندھی نے تاکید کی ہے کہ کسی بھی حال میں پارٹی کو اقتدار پر لانا تمام لیڈروں کی ذمہ داری ہوگی، اس میں اگر کسی سے بھی کوتاہی ہوگی تو انہیں جواب دہ بنایا جائے گا، اس کی وجہ سے کوئی بھی لیڈر اپنی ناراضی کھل ظاہر نہیں کرپارہا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ ملیکارجن کھرگے امیدواروں کے انتخاب کے مرحلے میں اعلیٰ کمان کے پاس اپنی ایک الگ فہرست کے ساتھ پہنچے تھے ، لیکن سدرامیا کی فہرست کے آگے ان کی ایک نہیں چلی ، کانگریس پارٹی نے جن 218امیدواروں کااعلان کیا ہے ان میں سے 150 سے زائد امیدوار ایسے ہیں جن کے ناموں کی سفارش سدرامیا نے کی ہے، جبکہ دیگر لیڈران کے تجویز کردہ بیشتر امیدواروں کے نام فہرست میں شامل نہیں ہیں۔ ٹکٹوں کی تقسیم کے بعد قدیم کانگریسیوں نے یہ تاثر دینے کی کوشش کی ہے کہ سدرامیا جنتادل کے اپنے پرانے ساتھیوں کو کانگریس میں لاکر ان کی باز آباد کاری کی کوشش کررہے ہیں۔ 

ایک نظر اس پر بھی

مخلوط حکومت کوکوئی خطرہ نہیں ۔ صورتحال میڈیا کی پیداوار کوئی پارٹی نہیں چھوڑے گا ۔ جارکی ہولی برادران کے مسائل پر مشورہ کرنے سدارامیا دہلی جائیں گے

ریاستی مخلوط حکومت کی بقا کو لے کر پچھلے ایک ہفتہ سے چل رہا ڈرامہ ہنوز جاری ہے ۔ حالانکہ آج وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی اور ان کے بھائی ریاستی وزیر برائے تعمیرات عامہ ایچ ڈی ریونا نے مخلوط حکومت کے مستقبل کیلئے خطرہ پیدا کرنے والے جارکی ہولی برادران سے یہاں شہر کے ایک ہوٹل میں ...

حجاج کرام کے آٹھویں اور نویں قافلوں کی بنگلورو واپسی؛ حج کمیٹی چیرمین آر روشن بیگ ائرپورٹ پر حاجیوں کے استقبال کے لئے رہےموجود

حجاج کرام کے آٹھویں اور نویں قافلوں کی آج مدینہ منورہ سے بنگلور واپسی ہوئی۔ تقریباً ہر فلائی میں 300حجاج کرام پر مشتمل قافلے 42 دن قبل بنگلور سے سفر مقدسہ پر رخصت ہوئے تھے، فریضۂ حج کی تکمیل ،مکہ مکرمہ میں عبادات اور مدینے میں روضۂ رسول ؐ پر حاضری کی سعادتوں سے سرفراز ہوکر یہ ...

مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی آج بنگلور آمد؛ آپریشن کمل کے جواب میں بی جے پی اراکین کے استعفوں کے خدشے؛ کیا اُلٹی پڑگئیں تدبیریں ؟

مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ منگل کو  بنگلور دورہ پر آرہے ہیں۔ حالانکہ بنگلور میں ان کا کوئی سرکاری پروگرام نہیں ہے، لیکن کہا جارہاہے کہ مخلوط حکومت کو گرانے کے لئے بی جے پی کی کوششوں کی مسلسل ناکامی کے بعد اس سلسلے میں ریاستی قائدین کو چند ہدایات دینے کے لئے وزیر داخلہ کا یہ ...

کرناٹکا کی مخلوط حکومت گرانے کے بی جے پی کے منصوبے پر پھر گیا پانی؛ کرناٹک کے بی جے پی قائدین پر امت شاہ گرم؛ پوچھا ،آپریشن کمل کی صلاحت نہیں تھی تو اس میں الجھے کیوں تھے

ریاستی حکومت کو ایک دن ایک ہفتہ اور ایک ماہ میں گرانے کے لئے بی جے پی قیادت بالخصوص ریاستی بی جے پی صدر بی ایس یڈیورپا کے تمام دعوؤں کی کانگریس اور جے ڈی ایس اتحاد نے ہوا نکال دی ہے۔جن اراکین اسمبلی کو آپریشن کمل کا شکار قرار دیاجارہاتھا انہوں نے عوام کے سامنے آکر واضح کردیا ہے ...