23 لاکھ سے زائد فرزندان توحید کی مکہ مکرمہ میں مناسک حج کی ادائیگی؛ سعودی حکومت کی جانب سے زبردست انتظامات

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 2nd September 2017, 2:01 AM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

مکہ یکم ستمبر (ایس او نیوز/ایجنسی) لاکھوں حاجیوں نے گزشتہ روزحج کا رکن اعظم وقوف عرفہ ادا کیا جس کے بعد انہوں نے مزدلفہ میں مغرب اورعشاء کی نمازیں ایک ساتھ ادا کیں اورجمعہ کو علامتی طور پر شیطان کو  کنکریاں مارنے کے عمل میں شریک ہوئے۔  سعودی ذرائع کے مطابق  جمعہ کو دو ملین عازمین حج نے کنکریاں مارنے  منیٰ میں جمع ہوئے تھے۔ بتایا گیا ہے کہ مزدلفہ میں رات گزارنے کے بعد نماز فجر کے بعد عازمین حج منیٰ میں جمرہ العقبہ پررمی کرنے کے بعد اللہ کی راہ میں قربانی پیش کی۔ عازمین کنکریاں مارنے اور قربانی کے بعد سرمنڈوا یا پھر احرام کو کھولا۔

سعودی عرب کی جانب سے سرکاری سطح پر جاری کردہ اعداد وشمار کے مطابق رواں سال مجموعی طور پر 23 لاکھ 52 ہزار 122 فرزندان توحید نے فریضہ حج ادا کیا ہے۔ ان میں سے 17 لاکھ 52 ہزار 14 حجاج کرام بیرون ملک سے حجاز مقدس  پہنچے جب کہ اندرون ملک سے حج کرنے والوں کی تعداد 6 لاکھ 108 ہے۔

کل جمعرات 9/ ذی الحج کو غروب آفتاب کے بعد حجاج کرام میدان عرفات میں رکن اعظم کی ادائیگی  کے بعد مزدلفہ کی طرف روانہ ہوئے تھے۔ مزدلفہ میں انہوں نے مغرب اور عشاء کی نمازیں ایک ساتھ ادا کیں۔ رات وہیں بسر کی، جس کے بعد آج صبح حجاج کرام عیدالاضحیٰ، جمرہ العقبہ میں رمی کرنے کے بعد اللہ کے حضور جانوروں کی قربانی پیش کی۔

سرکاری بیانات کے مطابق ضیوف الرحمان کی خدمت کے لیے تین لاکھ سول اور سیکیورٹی اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔ عازمین حج کو ایک مقام سے دوسرے مقام تک منتقل کرنے کے لیے اکیس ہزار بسوں کا انتظام بھی کیا گیا ہے۔ گذشتہ روز میدان عرفات میں رکن اعظم کی ادائیگی  کے دوران فضائی نگرانی بھی کی گئی تھی۔سعودی وزیر صحت کے مطابق تمام حجاج کرام ہر قسم کی وبائی اورمتعدد امراض سے مکمل طور پر محفوظ ہیں۔ محکمہ صحت نے کسی بھی ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لیے ہر طرح کے  انتظامات بھی کررکھے ہیں۔

ذرائع کے مطابق سعودی عربیہ کے شاہ سلمان نے آج جمعہ کو عید الاضحیٰ کے پہلے دن منیٰ پہنچ کر انتظامات کا خود جائزہ لیا۔ ان کے ساتھ ان کے فرزند پرنس محمد بن سلمان بھی موجود تھے۔

خیال رہے کہ دو سال قبل رمی جمرات  کے دوران بھگڈر مچنے سے  آٹھ سو کے قریب لوگ شہید ہوگئے تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔

ایجنسیوں سے بہتر رپورٹیں تو میڈیا سے مل جائیں گی: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے فیض آباد دھرنے سے متعلق خفیہ اداروں کی رپورٹوں پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے نئی رپورٹیں جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔عدالتِ عظمیٰ کے جج قاضی فائز عیسٰی نے ریمارکس دیے ہیں کہ جب ریاست ختم ہو جائے گی تو قتل سڑکوں پر ہوں گے۔

نائیجیریا میں نمازیوں پر حملہ انتہائی قابلِ مذمت: ترجمان

امریکی محکمہ خارجہ نے منگل کو نائجیریا میں ریاستِ ادماوا میں موبی کے مقام پر ہونے والے دہشت گرد حملے کی مذمت کی ہے۔ترجمان ہیدر نوئرٹ نے کہا ہے کہ ’’اِس جانی نقصان پر ہم نائجیریا کے عوام اور متاثرہ خاندانوں سے دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہیں‘‘۔

بنگلہ دیش میں جماعتِ اسلامی کے 6 رہنمائوں کو سزائے موت

 بنگلہ دیش میں ایک عدالت نے بدھ کو جماعتِ اسلامی کے 6 ارکان کو 1971 کی پاکستان کے خلاف جنگِ آزادی کے دوران جنگی جرائم کے مبینہ الزامات پر موت کی سزا سنادی۔ان افراد کو انٹرنیشنل کرائم ٹریبونل کے ایک تین رکنی پینل نے سزاسنائی ۔