مہادائی مسئلے پر کرناٹک کی قانونی جنگ ، وزیر اعلیٰ سے مشورے کے بعد آگے کی پہل : ڈی کے شیوکمار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 28th August 2018, 11:02 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،28؍اگست(ایس او نیوز) ریاستی وزیر برائے آبی وسائل ڈی کے شیوکمار نے کہا ہے کہ دریائے مہادائی کے پانی کی ریاست میں تقسیم کس طرح ہو اس سلسلے میں پہل کرنے سے پہلے حال ہی میں ٹریبونل کی طرف سے صادر کئے گئے فیصلے میں کرناٹک کے ساتھ جو ناانصافی ہوئی ہے اس پر وزیراعلیٰ سے تبادلۂ خیال کیا جائے گا اور اس سلسلے میں کرناٹک کی قانونی جنگ کو آگے بڑھانے کے لئے رہنما خطوط وضع کئے جائیں گے۔

آج مہادائی طاس کے علاقوں کا محکمۂ آبی وسائل کے اراکین کے ساتھ دورہ کرنے کے بعد اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ عنقریب وہ وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی کے ساتھ مہادائی مسئلے پر خصوصی میٹنگ کا اہتمام کریں گے اور اس میٹنگ میں مہادائی ٹربیونل کے فیصلے سے کرناٹک کے مفادات کو جو نقصان پہنچا ہے اس کے تحفظ کے لئے آگے کی حکمت عملی وضع کرنے کے ساتھ کرناٹک کی قانونی جنگ کو کس طرح سے آگے بڑھایا جائے اس پر بھی بات چیت کی جائے گی۔

ڈی کے شیوکمار نے کہا کہ اس کے لئے ضرورت پڑے تو ایک کل جماعتی اجلاس بھی طلب کیا جائے گا جس میں مہادائی مسئلے پر ریاست کی تمام سیاسی جماعتوں کا موقف واضح ہوسکے اور پارٹی امتیازات سے بالا تر ہوکر اس معاملے میں ریاست کو انصاف دلانے کے لئے جدوجہد کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ مہادائی مسئلے پر کرناٹک کے مفادات کے تحفظ کے لئے حکومت ہر قدم اٹھانے تیار ہے۔ کابینہ میں توسیع کے متعلق اخباری نمائندوں کے کسی بھی سوال کا جواب دینے سے ڈی کے شیوکمار نے انکار کردیا۔
 

ایک نظر اس پر بھی