مڈکیری قدرتی آفت: جوڈوپال راحت کیمپ سے متاثرین منتقل؛ 61خاندانوں کے 220لوگ اب بھی ہیں راحت کیمپوں میں

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 29th August 2018, 8:08 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

مڈکیری 29/ اگست (ایس اؤ نیوز) بادل پھٹنے اور زمین کھسکنےسے جوڈوپال میں پیش آئے حادثے کے  بعدکئی خاندانوں کو رنتوڈو تیکِّل ہال  اور کوڈو سنپاجے سرکاری اسکول میں منتقل کرتے ہوئے  ہال اور اسکول کو راحت کیمپوں میں تبدیل کیاگیا ہے۔

ان دونوں مراکز میں قیام پذیر متاثرین کونئے طورپر کھولے گئے  کوڈگو سنپاجے پرائمری صحت عامہ مرکز راحت کیمپ میں منتقل کیاگیا ہے۔ ارنتوڈو تکل ہال میں 8اور کوڈگو سنپاجے سرکاری اسکول میں 24خاندان سمیت کل 32خاندانوں کے 118لوگ نئے مرکز میں مقیم ہیں۔ سنپاجے کے صحت عامہ مرکز کے لئے نئی عمارت تعمیر ہوچکی ہے صحت عامہ کی پرانی عمارت کو پاک صاف کرکے راحت کیمپ بنایاگیا ہے۔

ارنتوڈو مرکز میں بسیراکئے 6خاندان مڈکیری اور بقیہ لوگ اپنے رشتہ داروں کے گھر چلے گئے ہیں۔ کلّوگونڈی سرکاری اسکول راحت کیمپ میں 29خاندانوں کے 102افراد قیام کئے ہوئے ہیں۔ اب دونوں مرکزوں میں 61خاندانوں کے 220لوگ موجود ہیں۔ حادثے میں جن خاندانوں کے گھر  زمین بوس ہوئے ہیں اور جہاں دوبارہ زمین کھسکنے یا قدرتی آفت کا خطرہ ہے ایسے لوگ ان مراکز میں باقی رہ گئے ہیں۔

جن علاقوں  میں حادثات پیش آئے ہیں وہاں اب بھی عوام اور عوامی سواریوں پر پابندی جاری ہے۔ بعض مقامات پر اندرونی راستے ، برج  اور سڑکیں سیلاب اور زمین کھسکنے کی وجہ سے پوری طرح برباد ہو گئے ہیں اور  ان مقامات پر راستہ نہ  ہونے کی بنا پرلوگوں کو اپنے گھروں کو لوٹنا ممکن نہیں ہوسکاہے۔ سلیا سے سنپاجےکے کوئی ناڈو تک کرناٹکا کی سرکاری بسوں کی نقل وحمل جاری ہے۔

قومی شاہراہ کی مرمت میں تیز رفتاری : سیلاب اور زمین کھسکنے کے واقعات وغیرہ سے پوری طرح برباد ہوئی منگلورو۔ مڈکیری قومی شاہراہ کی درستی تیز رفتاری کے ساتھ جاری ہے۔ قومی شاہراہ 275پر سنپاجے اور مڈکیری کے درمیان جوڈوپال، مدیناڈووغیرہ علاقوں میں مٹی کے تودے کھسکنے سے  سڑک بہہ گئی ہے۔ جے سی بی ، ہٹاچی جیسی مشینوں کا استعمال کرتے ہوئے مٹی نکالی جارہی ہے۔ مڈیناڈو کے قریب پہاڑ کھسکنے سےزیادہ تعداد میں  مٹی ، پتھر اور درخت گرے ہوئے ہیں ۔ مٹی  صاف کرتے ہی سڑک بہہ جانے کی وجہ سے بہت بڑے تالاب کی شکل اختیار کرگیا ہے۔ ان گڑھوں میں مٹی ڈال کر مسطح کرتے ہوئے راستہ بنانے کا کام زوروں پر ہے ۔ اس دوران لگاتار بارش سے کافی تکالیف کابھی سامناہے۔

دکشن کنڑا میں بارش : منگل اور بدھ کو دکشن کنڑا ضلع میں بارش میں تیزی دیکھی گئی ۔ ضلع کے بعض مقامات پر بہتر بارش ہوئی ہے۔ دوپہر تک دھوپ رہنے کے بعد شام میں موسلادھار بارش برس رہی ہے۔ پڑوسی ضلع اُڈپی میں کسی حد تک بارش میں کمی آئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو کے گمشدہ نوجوان کی لاش تملناڈو میں دستیاب۔ قتل کیے جانے کا شبہ

گنجی مٹھ کے رہنے والے سمیر (35سال) کے والد احمد نے پولیس میں گم شدگی کی شکایت درج کی گئی تھی اور بتایا گیا تھا کہ اپنی بیوی ا وربچی کو ساتھ لے کر ہوائی جہاز کے ذریعے بنگلورو جانے کے بعد وہ لاپتہ ہوگیا ہے اور اس کی بیوی ااپنی بچی کے ساتھ کاپ میں واقع اپنے مائیکے واپس پہنچ گئی تھی۔

کرناٹک لجسلیٹیوکونسل کی خالی نشستوں کیلئے دوکانگریس امیدواروں کا اعلان

یاستی کونسل کی خالی نشستوں کے لئے 4 اکتوبر کو ہونے والے انتخابات کے لئے آج کانگریس کورکمیٹی کے اجلاس میں سابق وزیر ریاستی اقلیتی کمیشن کے چیرمین نصیراحمد اور ایم سی وینوگوپال کے نام منتخب کئے گئے ہیں ۔

سرکاری ملازمین مسلمانوں کے مفاد میں بھی کام کریں اسٹیٹ گورنمنٹ مسلم ایمپلائیز اسوسی ایشن کے جلسے سے رکنِ پارلیمان سید ناصرحسین کا خطاب

مسلمان سرکاری ملازمین اپنے اپنے محکموں میں اپنی ذمہ داری نبھاتے ہوئے عام مسلمانوں کے مفاد میں بھی کام کریں۔سرکاری اسکیموں اور پروگراموں کو عام لوگوں تک خصوصا! مسلمانوں تک پہنچانے کی کوشش کریں۔

اراکین اسمبلی کے شکار اور کراس ووٹنگ کا خدشہ سدارامیا نے25؍ ستمبر کو سی ایل پی میٹنگ طلب کی

ن خدشوں کے درمیان کہ لجسلیٹیو کونسل کے ضمنی انتخابات سے قبل کانگریس اراکین اسمبلی کا شکا ر یاان کی جانب سے کراس ووٹنگ ہوگی، مخلوط حکومت کی تال میل کمیٹی کے چیرمن سدا رامیا نے 25؍ستمبر کو کانگریس لجسلیٹر پارٹی(سی ایل پی) کی میٹنگ طلب کی ہے۔

سیلاب زدہ کورگ کیلئے اضافی تعاون کا اعلان فی کنبہ 50ہزار روپئے رقم دینے کا فیصلہ

ورگ ضلع میں حال ہی میں ہوئی موسلا دھار بارش اور سیلاب کی وجہ سے کئی گھر تباہ وبرباد ہوگئے ۔ متاثرہ کنبوں کیلئے کپڑے اور روز مرہ کی ضروریات کی خریداری کے مقصد سے وزیر اعلیٰ ریلیف فنڈ کے تحت فی کنبہ 50ہزار روپئے اضافی رقم جاری کرنے کا ریاستی حکومت نے فیصلہ کیا ہے۔

پٹرول ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ بدستور جاری

پٹرول ڈیزل کی قیمتوں میں آج ایک بار پھر اضافہ ہوا ہے۔پٹرول 17 پیسے اور ڈیزل 10 پیسے مہنگا ہوا ہے۔اضافے کے بعد راجدھانی دہلی میں ایک لیٹر پیٹرول کی قیمت 82.61 روپے فی لیٹر ہو گئی ہے۔وہیں ڈیزل 73.97 روپے فی لیٹر ہو گئی۔ راجدھانی دہلی میں کل پٹرول 82.44 روپے فی لیٹر اور ڈیزل 73.87 روپے فی لیٹر ...

روپے کی قدر میں گراوٹ:سستاحج کرانے کادعویٰ بھی فرضی؟ حجاج کرام پر بوجھ میں اضافہ ،مزید پیسے وصولے جاسکتے ہیں

سرکارایک طرف دعویٰ کررہی ہے کہ اس نے اس بارسستاحج کرایاہے ۔لیکن اب روپیے کی گراوٹ کی وجہ سے پھرحاجیوں سے وصولی کی جائے گی ۔عالمی بازار میں ڈالر کے مقابلے ہندوستانی کرنسی کی قدر میں ہورہی گراوٹ کی وجہ سے اب حجاج کرام پر مزید بوجھ پڑنے والاہے۔